تازہ ترین

کرشناگھاٹی میں ہندپاک کے درمیان پھر گولہ باری

اسلام آباد میں بھارتی سفارتکار طلب ، احتجاجی مراسلہ تھمایاگیا

تاریخ    23 فروری 2021 (00 : 01 AM)   


سرینگر//ہندوستان اور پاکستان کی فوجوں کے درمیان حد متارکہ پر ایک بار پھر شدید گولہ باری کا تبادلہ ہوا ہے۔ ادھر پاکستان نے بھارتی سفارتکار کو دفتر خارجہ طلب کرکے حدمتارکہ پر بھارتی جارحیت کے خلاف شدید احتجاج کیا ۔سی این آئی کے مطابق ہندوستان اور پاکستان کے مابین حد متارکہ پر آج بھی شدیدگولہ باری ہوئی ۔ ہندوستان اور پاکستان کی افواج نے سوموار کو ضلع پونچھ میں حدمتارکہ پر ایک دوسرے پر بھاری فائرنگ کی۔آر پار گولہ باری میں جدید ترین ہتھیاروں کا استعمال کیا جارہا ہے ۔دفاعی ذرائع کے مطابق یہ واقعہ کرشنا گھاٹی علاقے میں پیش آیا جہاں پاکستان نے صبح چھ بجے بلا اشتعال فائرنگ کرکے جنگ بندی کی خلاف ورزی کی۔انہوں نے مزید کہا کہ بھارت اور پاکستان کی افواج کے درمیان گولیوں کا تبادلہ سات بجے تک جاری رہا۔دفاعی ذرائع کے مطابق پاکستان کی جانب جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کے بعد بھارتی فوج نے بھی پاک فوج کو کرارا جواب دیتے ہوئے پاکستانی فوجی چوکیوں کو نشانہ بناتے ہوئے گولہ باری شروع کی تاہم دونوں جانب ہوئی گولہ باری کے نتیجے میں کسی جانی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے ۔  ادھرپاکستان نے بھارتی سفارتکار کو دفتر خارجہ طلب کرکے کنٹرول لائن پر بھارتی جارحیت کے خلاف شدید احتجاج کیا۔ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق بھارتی فورسز کی جانب سے کنٹرول لائن پرجنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کرنے پر بھارتی سفارتکار کو دفتر خارجہ طلب کیا گیا اور اس حوالے سے نہ صرف احتجاج کیا گیا بلکہ انہیں احتجاجی مراسلہ بھی تھمایا گیا۔ترجمان دفترخارجہ کے مطابق مراسلہ میں کہا گیا کہ بھارت کی جانب سے سیز فائر کی خلاف ورزی بین الاقوامی قوانین، اور انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔