تازہ ترین

زرعی قوانین کیخلاف ملک گیر چکہ جام آج

تاریخ    6 فروری 2021 (00 : 01 AM)   


یو این آئی
نئی دہلی//یو این آئی//زرعی قوانین کی مخالفت میں جاری کسان تحریک کے تحت چھ فروری کے ملک گیر چکا جام پروگرام میں معمولی تبدیلی کی گئی ہے ۔سراپا احتجاج کسان اترپردیش اور اتراکھنڈ میں ضلع ہیڈکوارٹر پر میمورنڈم دیں گے اس بات کا اعلان بھارتیہ کسان یونین کے لیڈر راکیش ٹکیٹ نے ایک میٹنگ کے بعد کیا ہے ۔مسٹر راکیش ٹکیٹ اور کسان تحریک جدوجہد مورچہ کے لیڈر بلویر سنگھ کے درمیان جمعہ کی دوپہر غازی پور سرحد پر ایک میٹنگ ہوئی جس میں چھ تاریخ کے اعلان کے سلسلے میں تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا اور آگے کی حکمت عملی پر غوروخوض کیا گیا ۔تقریبا دو گھنٹے چلی اس میٹنگ کے بعد کسان مورچہ نے اعلان کرتے ہوئے بتایا کہ ملک کے مختلف علاقوں میں چھ تاریخ کو امتحان و دیگر پروگرام ہیں۔ ایسے میں بند کی اپیل کرنے سے طلبہ اور عوام الناس کو کافی پریشانی کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے ۔ اب ساری باتوں پر غوروخوض کرنے کے لئے کسان لیڈروں نے غازی آباد سرحد پر میٹنگ کی۔میٹنگ کے بعد جمعہ کو راکیش ٹکیٹ نے اس ضمن میں بتایا کہ ہریانہ اور پنجاب میں گیہوں کی کٹائی تقریبا آخری مرحلے میں ہے وہاں بند کی اپیل سابق کی طرح جاری رہے گی۔
 
 

کانگریس کی حمایت

نئی دہلی//یو این آئی//کانگریس نے کسان تنظیموں کے ہفتہ کے روز منعقدہ چکاجام کی حمایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پارٹی کارکنان چکاجام کے دوران کسانوں کے ساتھ کندھا سے کندھا ملاکر کام کریں گے اور حکومت سے زراعت سے متعلق تینوں قانون واپس لینے کا مطالبہ کریں گے ۔کانگریس سکریٹری کے سی وینوگوپال نے جمعہ کو یہاں جاری ایک بیان میں کہا کہ پارٹی کسان تنظیموں کے کل چھ فروری کو قومی اور ریاستی شاہراہ پر دوپہر 12سے تین بجے تک تین گھنٹے کے اعلان کردہ ملک گیر چکاجام کی حمایت کرے گی۔ 
 

 خندق کھودنے والے اپنے لئے خود خندق کھود رہے ہیں:بی ایس پی

نئی دہلی//یو این آئی// بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کے ستیش چندر مشرا نے جمعہ کو زرعی قوانین کے خلاف احتجاج میں دہلی کی سرحدوں پر کسانوں کو روکنے کے لئے خاردار تاروں اور باڑ لگانے اور خندقیں کھودنے پر سخت اعتراضات کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اپنے لئے خود خندق کھود رہے ہیں۔
 
 

طویل غور و خوض کے بعد زرعی قوانین لائے گئے:بی جے پی

نئی دہلی//یو این آئی// بھارتیہ جنتاپارٹی نے جمعہ کو راجیہ سبھا میں کہا کہ زرعی قوانین کو طویل غور و خوض کے بعد لایا گیا ہے اور ان کا مطالبہ طویل عرصے سے کیا جارہا تھا۔بھارتیہ جنتاپارٹی کے ونجے سہسر بدھے نے راجیہ سبھا میں صدر کے خطاب کی شکریہ کی تحریک پر بحث میں حصہ لیتے ہوئے کہا کہ ملک کے مختلف حصوں میں ہوئے انتخابات سے ثابت ہوتا ہے کہ مودی حکومت کو مسلسل عوامی تائید حاسل ہورہی ہے ۔ لوگ حکومت کے کاموں اور منصوبوں کو پسند کررہے ہیں۔
 

سچ بولنے والے کو غدار قرار دینے کی کوشش کی جارہی ہے :شیو سینا

نئی دہلی//یو این آئی// شیوسینا کے سنجے راوت نے جمعہ کو کسان تحریک کو بدنام کرنے کی کوششوں کی مذمت کی اور کہا کہ ان دنوں جو سچ بولتا ہے اور سچ لکھتا ہے اسے غدار قرار دینے کی کوشش کی جارہی ہے ۔مسٹر راوت نے صدر کے خطاب پر شکریہ کی تحریک پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ "سچائی سن کر ہی نجات ملتی ہے ۔" انہوں نے کہا کہ کسانوں کے ساتھ جو کچھ ہورہا ہے ، یہ جو چل رہا ہے وہ شرمناک ہے ۔