جموں سرینگرشاہراہ بند،سینکڑوں مال بردار اور مسافر گاڑیاں درماندہ

درماندہ مسافروں کیلئے راحت مراکز کھول کر ضروری انتظامات کرنے کی متعلقہ محکموں کو ہدایت

تاریخ    24 جنوری 2021 (00 : 01 AM)   


محمد تسکین
بانہال // جواہر ٹنل کے آر پار شدید برفباری کے بعد جموں سرینگر شاہراہ بند کردی گئی ہے۔آر پار سنیچر کی صبح 3بجے سے برفباری شروع ہوئی جس سیسڑک پر پھسلن پیدا ہوئی اورصبح گیارہ بجے سے ٹریفک کی آمد و رفت روک دی گئی ۔ ہفتے کے روز معمول کے ٹریفک میں مال اور مسافر گاریوں کو جموں سے وادی کشمیر کی طرف آنے کی اجازت تھی لیکن شاہراہ کے بند ہونے کی وجہ سے چار سو کے قریب مال اور مسافر گاڑیاں جواہر ٹنل اور بانہال کے درمیان جبکہ سینکڑوں کی تعداد میں مال اور مسافر گاڑیاں بانہال ، رامبن ، چینینی ، ادہمپور اور نگروٹہ میں درماندہ ہوگئی ہیں۔ جواہر ٹنل پر تعینات بیکن کے اسسٹنٹ انجینئر ریشی پال نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ  بیکن کی مشینری نے جواہر ٹنل کے آر پار شاہراہ سے برف کو کئی بار صاف کیا لیکن مسلسل برفباری کی وجہ سے گاڑیوں کی آمد و رفت ممکن نہیں ہو پائی۔
شام تک جواہر ٹنل کے دونوں طرف ایک فٹ کے لگ بھگ برف ریکارڈ کی گئی تھی جبکہ بانہال اور اس کے پہاڑی علاقوں میں شام تک تین انچ سے ایک فٹ تک تازہ برف رکارڈ کی گئی ۔ ڈپٹی کمشنر رام بن مسرت الالسلام نے ضلع رام بن کے گول ، رامسو اور بانہال کے ایس ڈی ایم اور تمام تحصیلداروں کو ہدایت جاری کی ہے کہ وہ درماندہ مسافروں کیلئے راحت مراکز یا مسافر خانوں کو کھول کر ضروری انتظامات کریں اور برفباری اور بارشوں سے پیدا ہونے والی کسی بھی ہنگامی صورتحال کا مقابلہ کرنے کیلئے محکمہ تعمیرات عامہ ، واٹر ورکس ، صحت ، پی ایم جی ایس وائی اور خواراک و رسدات کے تمام ضروری محکموں کو تیار رہنے کا حکم دیا ہے۔ شاہراہ کے حوالے سے  انہوںنے کشمیر عظمیٰ کو  بتایا کہ جواہر ٹنل اور بانہال کے درمیان درماندہ ٹریفک کو وادی کشمیر کی طرف بحال کرنے کی ہر ممکن کوشش سنیچر کی شام تک جاری تھی تاکہ جواہر ٹنل اور بانہال کے درمیانی سیکٹر میں  درماندہ پڑے مسافروں اور جموں وکشمیر بنک امتحانات میں شامل ہونے کیلئے وادی کشمیر کی طرف جانے والے امیدواروں کو اپنی منزلوں تک پہنچنے کیلئے شاہراہ کو بحال کیا جاسکے۔
 

تازہ ترین