وادی کے شمال و جنوب نے برف کی چادر اوڑھ لی

آج دوپہر سے موسم پھر تبدیل ہوگا، 31جنوی تک خشک رہنے کا امکان: محکمہ موسمیات

تاریخ    24 جنوری 2021 (00 : 01 AM)   


اشفاق سعید
 سرینگر //محکمہ موسمیات کی پیشگوئی کے عین مطابق وادی کشمیر میں ہفتہ کی صبح سے تازہ برفباری کا سلسلہ شروع ہو گیا ۔ تازہ برفباری سے سردی میں اضافہ ہوا اور روز مرہ کی زندگی درہم برہم ہوئی۔ محکمہ موسمیات نے آج سے موسم میں بہتری آنے کا امکان ظاہر کیا ہے ۔ کشمیر وادی میں قاضی گنڈ سے لیکر کرناہ تک برف کی نئی چادر بچھ گئی ہے جس کے نتیجے میں جہاں رابطہ سڑکیں گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے بند ہوئیں، کئی ایک دورافتادہ علاقوں کی رابطہ سڑکوں پر 2سے3فٹ برف جمع ہو گئی ہے۔ محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ اس باربرف باری کا سب سے زیادہ اثر شمالی کشمیر میںرہا ۔محکمہ کے ڈپٹی ڈائریکٹر مختار احمد کے مطابق کرناہ کی نستہ چھن گلی پر 36تازہ برف ریکارڈ کی گئی ہے جبکہ زیڈ گلی پر 12انچ ،کپوارہ اور بارہمولہ کے میدانی علاقوں میں 6سے8انچ ، سرینگر ، گاندربل اور بڈگام میں 4سے8انچ ، جنوبی کشمیر کے میدانی علاقوں میں 3سے6انچ ، اہربل کولگام 12انچ تازہ برف ریکارڈ کی گئی۔انہوں نے مزید بتایا کہ آج دوپہر سے وادی میں موسم میں تبدیلی آئے گی اور 31جنوری تک موسم خشک رہے گا ۔ 

سرینگر 

سرینگر کے قریب زبرون پہاڑیوں نے ایک بار پھر برف کی سفید چادر اوڑھ لی اور دور دور تک برف ہی برف ہے۔ صبح سے برف باری شروع ہوئی جو شام دیر گئے تک وقفے وقفے سے جاری تھی ۔شہر میں شام دیر گئے تک برف باری کا سلسلہ جاری تھا یہاں5انچ تاز ہ برف جمع ہو چکی تھی ۔

وسطی کشمیر 

گاندربل سے نمائندے ارشاد احمد کے مطابق وسطی ضلع گاندربل اور بڈگام میں سنیچر کی صبح تازہ برفباری کا سلسلہ شروع ہوا جس کے نتیجے میں دونوں اضلاع کی چھوٹی بڑی رابطہ سڑکیں پھسلن کی وجہ سے گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے بند ہوگئیں۔ گاندربل قصبہ اور اس سے ملحقہ علاقوں میں2 انچ برفباری جمع ہوئی ہے جبکہ تولہ مولہ ،شالہ بگ ،ڑھندنہ ،صفاپورہ ،لار ،واکورہ ،بٹہ وینہ میں چار انچ سے زیادہ برفباری ریکارڈ کی گئی ۔ بڈگام میں بھی تین انچ سے زائد برفباری ریکارڈ کی گئی، جبکہ یوسمرگ،چرار شریف، بیروہ، آری زال میں پانچ انچ سے زیادہ تازہ برفباری ہوئی ۔تازہ برفباری کی وجہ سے بڈگام ماگام رابطہ سڑک ،بیروہ اری زال، یوسمرگ اور چرار شریف سڑکوں پر پھسلن کی وجہ سے ٹریفک متاثر رہا ۔کنگن سے نمائندے غلام بنی رینہ کے مطابق دراس، منی مرگ، زوجیلا، سونہ مرگ، گگن گیر، کلن، گنڈ، گنی ون، کنگن، وسن میں برفباری کا سلسلہ دن بھر جاری رہا ۔ دراس میں 5انچ، منی مرگ6، زوجیلا 1 فٹ، سونہ مرگ 1 فٹ، گگن گیر 5 انچ،کلن 5، گنڈ 4، گنہ ون 4اور کنگن میں 4 انچ برف ریکارڈ کی گئی ۔

جنوبی کشمیر 

جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیاں سے نمائندے شاہد ٹاک کے مطابق وہاں ہفتے کی صبح سے تازہ برف باری شروع ہوئی جو شام دیر گئے تک جاری تھی۔ ہیرپورہ، چھوٹی پورہ، دبجن میں ڈیڑھ فٹ تازہ برف جمع ہوگئی جبکہ ضلع کے دیگر میدانی علاقوں میں 1 فٹ تازہ برف جمع ہوگئی ہے۔ ۔ادھر مغل روڈ جو وادی کشمیر کو صوبہ جموں کے ساتھ ملانے والا واحد متبادل راستہ ہے کو دسمبر کے مہینے سے ہی ٹریفک کی نقل وحمل کیلئے بند کر دیا گیا ہے جبکہ مغل روڈ پر پیر کی گلی پر2 فٹ تازہ برف ریکارڈ کی گئی ہے ۔خالد جاوید نے کولگام سے اطلاع دی ہے سنیچر صبح سے ہلکی برف باری شروع ہوئی جو بعد میں شدت اختیار کر گئی۔ ضلع کے میدانی علاقوں میں 8انچ جبکہ نور آباد ، دھمال ہانجی پورہ ، ڈنیو کنڈی مرگ ، اہر بل ، نندی مرگ میں ایک سے ڈیڑھ فٹ برف جمع ہونے کی اطلاعات ہیں ۔ اننت ناگ سے نمائندے عارف بلوچ کے مطابق ضلع کے پہلگام میں 4 انچ، کوکرناگ میں 3 انچ، بجبہاڑہ میں 1 انچ، کپرن ڈورو میں 4 انچ تازہ برف ریکارڈ کی گئی ہے۔برف باری کے باعث سڑکوں پر پھسلن پیدا ہونے سے ضلع کے اکثر علاقوں میں دوپہر بعد ٹریفک کی نقل وحرکت میں خلل پڑ گیا۔

شمالی کشمیر

بارہمولہ سے نمائندے فیاض بخاری کے مطابق سیاحتی مقام گلمرگ میں 14انچ ،ٹنگمرگ میں 8انچ ، باباریشی 10انچ ، رفیع آباد 1 فٹ ، رفیع آباد کے میدانی علاقوں میں 6انچ ، بارہمولہ قصبہ میں 5انچ اورحاجی بل میں 8انچ برف جمع ہوئی  ۔بانڈی پورہ سے نمائندے عازم جان کے مطابق ضلع میں شدید برف باری کا سلسلہ شام دیر گئے تک جاری رہا ۔اگرچہ بانڈی پورہ سمبل ودیگر بازاروں میں برف ہٹانے کی مشینیں کام پر لگی ہیں تاہم مسلسل برف باری سے ٹریفک کی آواجاوہی میں خلل پڑاہے۔ بانڈی قصبہ میں چاربجے تک چھ انچ ،ویون آتھوتو میں ایک فٹ، شمتھن سریندر میں دس انچ، سملر ارن میں اٹھ انچ اور گریز میں ڈیڑھ فٹ، تلیل میں دو فٹ جبکہ رازدان ٹاپ پرپانچ فٹ برف گرنے کی اطلاع ملی ہے۔ ڈپٹی کمشنر بانڈی پورہ ڈاکٹر اویس احمد کی ہدایت پر اے ڈی سی بانڈی پورہ ظہور احمد میر نے بانڈی پورہ قصبہ اور متعدد بستیوں کا دورہ کرتے ہوئے پیدا شدہ صورت حال کا جائزہ لیا ہے۔کپوارہ سے نمائندے اشرف چراغ نے اطلاع دی کہ ضلع میں جمعہ کی شب سے ہی ہلکی برف باری کا سلسلہ شروع ہوا جو رات بھر جاری رہی تاہم ہفتہ کی صبح سے پورے ضلع میں بھاری برف باری کا سلسلہ شروع ہوا جو دوپہر تک جاری رہا۔ضلع کے میدانی علاقوں میں 3سے 4انچ برف جمع ہوئی جبکہ ضلع کے بالائی علاقوں میں ایک فٹ کے برف ریکارڈ کی گئی ۔ضلع کے سادھنا ٹاپ پر 2فٹ،زیڈ گلی مژھل میں 2فٹ اور فرکیاں گلی پر ڈیڑھ فٹ برف ریکارٖڈ کی گئی اور ان علاقوں کو جانے والی سڑکو ں کو گا ڑیو ں کی آمد و رفت کے لئے بند کر دیا گیا ۔آخری اطلاع ملنے تک ضلع کے اہم سڑکو ں سے برف ہٹا گا ڑیو ں کی آمد و رفت کے لئے بحال کر دیا گیا ۔برف باری کی وجہ سے پورے ضلع میں زندگی کی رفتار تھم گئی تاہم سہ پہر کو ہلکی دھوپ نکلی جس کے بعد لوگو ں نے را حت کی سانس لی ۔
 

فضائی پروزایں متاثر 

اشفاق سعید 
 
سرینگر // سرینگر بین الاقوامی ہوائی اڈہ پر تازہ برف باری کے سبب سنیچر کوآنے اور جانے والی تمام پروازوں کو منسوخ کردیا گیا۔اتھارٹی کے مطابق جمعہ اور سنیچر کی درمیانی رات تک ہوائی اڈہ کا رن وے صاف تھا اور حدنگاہ بھی مکمل طور پر صاف تھی لیکن صبح کے وقت تازہ برف باری کے نتیجے میں حدنگاہ متاثر ہوئی جس کے سبب تمام پروازیں منسوخ ہو گئیں۔حکام کے مطابق نہ سنیچر کو سرینگر سے کوئی پرواز اڑان بھر سکی او ر نہ ہی کوئی وہاں سے آسکی۔ 
 

تازہ ترین