خانیارقتل کیس کا معمہ12گھنٹوں میں حل | دوبھائیوں سمیت تین ملزم گرفتار،7000روپے کالین دین وجہ قتل

تاریخ    14 جنوری 2021 (00 : 01 AM)   


ارشاداحمد
سرینگر//خانیار پولیس نے قتل کی ایک واردات کا معمہ بارہ گھنٹے میں ہی حل کرکے ملزموں کو گرفتار کیا ہے۔ 11 جنوری کورات 9 بجکر 50 منٹ کو پولیس کو قابل اعتماد ذرائع سے اطلا ع ملی کہ دستگیرصاحب ؒ کی زیارت گاہ کے قریب کچھ نامعلوم افراد نے ایک نوجوان کو چاقو مارکر شدیدزخمی کردیا۔مذکورہ نوجوان جس کی شناخت زیان چستی ولدسیدمحمداشرف چستی ساکن رعناواری کے طور ہوئی ،کو تشویشناک حالت میں صدراسپتال سرینگر پہنچایا گیاجہاں ڈاکٹروں نے اُسے مردہ قراردیا۔پولیس تھانہ خانیار نے اس سلسلے میں کیس  زیر نمبر 03/2021 درج کرکے تحقیقات شروع کردی۔ دوران تحقیقات پولیس نے تیکنیکی اور جائے واردات سے دیگر شواہد اکٹھا کئے اور عینی شاہدین کی جانچ پڑتال شروع کی گئی۔ جس کے نتیجے میں تفتیشی افسر کواس گھنائونے جرم میں ملوث تین ملزموں کے بارے میں پختہ ثبوت ملے۔ ملزموں میں دوبھائی اور ایک اورنوجوان شامل ہے۔ پولیس نے ان کی شناخت محمدزاہد بٹ ولد فداحمد ساکن الہی باغ صورہ اوراس کابھائی فیضان فدابٹ ولد فدااحمدساکن الہی باغ صورہ اور جنگری پورہ نوہٹہ کے واجدالطاف کلہ ولدمحمدالطاف کلہ کے طور کی،جن کو پوچھ تاچھ کیلئے پولیس تھانہ لایا گیا اور انہوں نے دوران تحقیقات اعتراف کیا کہ ان کا مقتول کے ساتھ7000روپے کا لین دین تھا جس کی وجہ سے یہ قتل ہوا۔پولیس ذرائع نے بتایا کہ صرف بارہ گھنٹوں میں پولیس نے اس قتل کا معمہ حل کرکے اس میں ملوث ملزموں کو گرفتار کیا۔مزیدتحقیقات جاری ہے۔
 

تازہ ترین