تازہ ترین

اُبھرتے چیلنجوں سے نمٹنے کیلئے اجتماعی کوششوںکی ضرورت :پروفیسر طلعت ؔ کشمیر یونیورسٹی میںذہنی صحت سے متعلق آگاہی پروگرام

تاریخ    3 نومبر 2020 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر//کشمیر یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر طلعت احمد نے کل کہا کہ ذہنی صحت کے بارے میں بات کرنا ضروری ہے تاکہ اس سے متعلقہ امور اور خدشات کو موثر طریقے سے نمٹا جاسکے۔ "ابھرتی نسلوں کی ذہنی صحت" کے عنوان سے ذہنی صحت سے متعلق آگاہی پروگرام کے افتتاحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر طلعت نے کہا "ذہنی صحت کچھ ایسی اہم بات ہے جس کے ارد گرد کی تشویشناک صورتحال کو دیکھتے ہوئے ہم سب کو باقاعدگی سے بات کرنے کی ضرورت ہے۔ جہاں ہمارے پاس بہت سارے لوگوں کو ذہنی صحت کے متنوع مسائل کا سامنا ہے۔ اگر ہم ان امور کے بارے میں بات نہیں کرتے ہیں تو ، ان کا حل ممکن نہیں ہوگا‘‘۔ وائس چانسلر نے تعلیمی اداروں ، غیر سرکاری اور سماجی تنظیموں کی شمولیت پر زور دیا کہ وہ مربوط طریقے سے ذہنی صحت کے چیلنجوں سے نمٹنے میں مدد کریں۔اس طرح کے اہم پروگراموں کے انعقاد پرشعبہ سٹوڈنٹس ویلفیر(DSW) کی تعریف کرتے ہوئے رجسٹرار ڈاکٹر نثار اے میر نے دماغی صحت کے چیلنجوں سے نمٹنے کے لئے کشمیریونیورسٹی کے نفسیات اور سماجی خدمات جیسے دیگر شعبوںکی شمولیت پر زور دیا۔انہوں نے کہا  " شرکاء  کے لئے یہ ضروری ہے کہ وہ بیداری پروگرام کے دوران ماہرین کی گفتگو سے جو باتیں سمجھیں ،وہ اپنے اہل خانہ اور دوستوں تک پھیلائیں ۔اپنے کلیدی خطبے میں سکمز میڈیکل کالج کے شعبہ نفسیات کے ایسوسی ایٹ پروفیسر،پروفیسر عبدالمجیدنے کشمیر میں ذہنی صحت کے امور پربات کی اوران نکات کو ابھارا کہ لوگ انفرادی اور معاشرتی سطح پر کس طرح مقابلہ کرسکتے ہیں۔انہوں نے کہا ’’ذہنی صحت کے مختلف اثرات(جسمانی ، جذباتی ، روحانی ، معاشرتی اور دانشور) ایک شخص سے دوسرے شخص میں مختلف ہوتے ہیں۔ یہ چھتری اور توازن ہی ہے جو انسان کو ذہنی طور پر صحت مند بناتا ہے ۔انہوں نے کہا’’ہمیں یہ بھی سمجھنے کی ضرورت ہے کہ ہمارے معاشرے میں ہمدردی کی کمی اور بیداری کی کمی کی وجہ سے ذہنی صحت کے معاملات کس طرح بڑھ جاتے ہیں۔استقبالیہ خطاب میں ڈین سٹوڈنٹس ویلفیئر پروفیسر رئیس قادری نے کہا ’’ہم اکثر جسمانی صحت کی بات کرتے ہیں لیکن شاذ و نادر ہی ذہنی صحت سے متعلق خدشات پر بات کرتے ہیںاور اسی تناظر میں ہم نے ماہرین اور طلباء کو اس اہم موضوع پر اپنے خدشات اور خیالات بانٹنے کے لئے اس پروگرام کا انعقاد کیا ‘‘۔ ڈائریکٹرسنٹر فار شیخ العالم سٹڈیز پروفیسر جی این خاکی نے پروگرام کے افتتاح کے بعد اجلاس کی صدارت کی۔پروگرام میں چیف پروکٹر پروفیسر شوکت اے شاہ ، یونیورسٹی کے مختلف شعبوںکے عہدیداران ،سکالروں اور طلباء نے شرکت کی۔