تازہ ترین

زرعی زمین کسانوں کے پاس ہی رہے گی

۔24ہزار اسامیاں عنقریب پرُ کی جائیں گی: منوج سنہا

تاریخ    28 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر// لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے کہا ہے کہ جموں کشمیر میں 24 ہزار نوکریاں دینے کا عمل جاری ہے ، جن میں سے12 ہزار سے زائد خالی اسامیاں سروس سلیکشن بورڈ اور پبلک سروس کمیشن کو ریفرکی گئیں ہیں، جنہیں بہت جلد مشتہر کیا جارہا ہے۔ منوج سنہا نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں ملک کے دوسرے حصوں کی طرح جموں و کشمیر میں بھی صنعتیں قائم ہوں تاکہ یہاں ترقی اور بے روزگار نوجوانوں کو روزگار ملنا یقینی بن جائے۔ لیفٹیننٹ گورنر نے مرکزی وزارت داخلہ کے  تازہ احکامات سے متعلق کہا’’زرعی زمین کسانوں کے پاس ہی رہے گی اور اسی مقصد کے لئے استعمال ہوگی، ہم انڈسٹریل علاقوں کی شناخت کر رہے ہیں،ہم چاہتے ہیں کہ یہاں بھی ملک کے باقی حصوں کی طرح اچھی انڈسٹریز قائم ہوں تاکہ یہاں ترقی ہو اور نوجوانوں کو روزگار ملے‘‘۔ سنہا نے سرینگر جموں شاہراہ سے متعلق کہا پروجیکٹ مقررہ ڈیڈ لائنز پر ہی مکمل ہوں اس بات کو یقینی بنانے کے لئے ہر ممکن کوشش کی جا رہی ہے۔ لیفٹیننٹ گورنر نے کہا ہے کہ 'بیک ٹو ولیج' مرحلہ سوم کے تحت معاشی پیکیج اور سلیف روزگار پروگرام کے زائد از10 ہزار کیسوں کو منظور کیا گیا ہے اور اس کیلئے100 کروڑ روپے کی خطیر رقم بھی تقسیم کی گئی ۔لیفٹیننٹ گورنر نے 250 کروڑ روپے کا چیک مذکورہ بینک کو پیش کیا اور مزید فنڈس آگے واگزار کرنے کا وعدہ کیا۔ سنہا نے راج بھون میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا’’میری انتظامیہ کی توجہ خاص طور پر چار چیزوں امن، خوشحالی، ترقی اور عوام پر مرکوز ہے، مجھے خوشی ہے کہ جموں و کشمیر میں ترقی و خوشحالی کی رفتار کافی تیز ہے'۔موصوف نے کہا کہ انتظامیہ جموں و کشمیر میں پنچایتوں کو مستحکم بنانے کے لئے پر عزم ہے۔انہوں نے کہا کہ ہر پنچایت میں دو نوجوانوں کو اپنے تجارتی یونٹ قائم کرنے کے لئے مالی امداد دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ پنچایتوں کی طرف سے اس سلسلے میں گیارہ ہزار کیسز وصول ہوئے ہیں۔موصوف  نے کہا کہ حکومت خواہش مند نوجوانوں کی مدد کے لئے پرعزم ہے۔ان کا کہنا تھا: 'حکومت خواہش مند نوجوانوں کو اپنے تجارتی یونٹ قائم کرنے کے لئے مالی مدد کرے گی۔ سنہا نے کہا کہ پہلے نوجوانوں کو قرضے لینے کے لئے بینکوں کے چکر لگانا پڑتے تھے لیکن آج بینک کے لوگ ہی ان کی دہلیز پر آکر انہیں قرضہ فراہم کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ یونین ٹریٹری کے اداروں جیسے کالجوں، یونیورسٹیوں سے نوجوانوں کو آئیڈنٹیفائے کیا جائے گا اور ان کے ساتھ راؤنڈ ٹیبل پروگرام کیا جائے گا۔

تازہ ترین