۔3 دہائیوں میں پولیس ہلاکتیں

ڈی آئی جی اور اعلیٰ افسران سمیت1500 اہلکار ہلاک

تاریخ    23 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


 جموں// یو این آئی// جموں و کشمیر میں گذشتہ تین دہائیوں کے دوران زائد از00 15 پولیس اہلکار، جن میں متعدد افسران بھی شامل ہیں، ملی ٹنسی و متعلقہ واقعات کے دوران مارے گئے ہیں۔سرکاری ذرائع نے اس ضمن میں تفصیلات فراہم کرتے ہوئے یو این آئی کو بتایا: 'جموں و کشمیر کے مختلف علاقوں میں گذشتہ 31 برسوں کے دوران مختلف جنگجو مخالف آپریشنز و دیگر کارروائیوں میں 1568 پولیس اہلکاروں نے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا ہے۔ ان میں ایک ڈی آئی جی، ایک ایس پی، 22 ڈی ایس پیز، 26 انسپکٹرس، 37 سب انسپکٹرس، 65 اسسٹنٹ سب انسپکٹرس، 148 ہیڈ کانسٹبلز، 193 سیلکشن گریڈ کانسٹیبلز، 537 کانسٹیبلز،508 ایس پی اوز، 1 این او اور24  فالوورس شامل ہیں'۔انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ ولیج ڈیفینس کمیٹیوں کے 131 ممبران بھی مارے گئے ہیں۔بتادیں کہ 21 اکتوبر کو ملک بھر میں پولیس یادگاری دن منایا جاتا ہے۔ 1959 میں اسی روز لداخ میں چینی فوج کے ساتھ لڑائی کے دوران دس سی آر پی ایف اہکار ہلاک ہوئے تھے جن کی یادگار کے بطور یہ دن منایا جاتا ہے۔

تازہ ترین