انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کا پھر بلاوا

۔3روز میں دو سری مرتبہ ڈاکٹر فاروق سے پوچھ تاچھ

تاریخ    22 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر// نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ کو دوسری مرتبہ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے طلب کیا اور 5 گھنٹوں تک ان سے پوچھ تاچھ کی گئی۔ ایک روز قبل انفورسمٹ ڈائریکٹوریٹ نے پیر کو ڈاکٹر فاروق کو راج باغ دفتر طلب کیا تھا،جس کے دوران 7گھنٹے تک ان سے سوال و جوابات کئے گئے۔ بدھ کو ایک مرتبہ پھر ان سے پوچھ تاچھ ہوئی۔ ڈاکٹر فاروق بدھ کی صبح قریب 11 بجے راجباغ میں واقع انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کے دفتر میں حاضر ہوئے جہاںمبینہ جموں کشمیر کرکٹ ایسو سی ایشن کے رقومات میں خرد برد کے سلسلے میں ان سے پوچھ تاچھ کی گئی اورموصوف کابیان ریکارڈ کیاگیا۔ فاروق عبداللہ نے تاہم پیر کی طرح نامہ نگاروں سے کوئی بھی بات نہیں کی جو باہر انکا انتظار کر رہے تھے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر عبداللہ کو کئی چیزوں میں وضاحت کیلئے ’’ای ڈی‘‘ دفتر طلب کیا گیا تھا،خاص کر ان سے اس بات کی جانکاری حاصل کی گئی کہ جب وہ ایسو سی ایشن کے صدر تھے، تو فیصلے عملائے جانے والا طریقہ کار کیا تھا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ایجنسی امکانی طور پر عنقریب ہی تازہ فرد جرم پیش کرنے والی ہے۔دوسری مرتبہ ڈاکٹر فاروق کو طلب کرنے پر انکے فرزند عمر عبداللہ نے برہمی کا اظہار کیا ۔انہوں نے سماجی رابطہ گاہ ٹیوٹر پر پارٹی  بیان  پر اپنے تاثرات ظاہر کرتے ہوئے کہا’’ یہ اس دن ہوا جب میرے والد84برس کے ہوگئے‘‘۔جموں و کشمیر ہائی کورٹ نے جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن کے حوالے سے سامنے آنے والے اسکینڈل کو 3 ستمبر 2015 کو سی بی آئی کے حوالے کر دیا تھا۔ اس سے قبل اس اسکینڈل کی تحقیقات جموں وکشمیر پولیس کی خصوصی تحقیقات ٹیم (ایس آئی ٹی) کررہی تھی۔اس نے 16 جولائی 2018کو کیس میں چارج شیٹ چیف جوڈیشل مجسٹریٹ (سی جے ایم) سری نگر کی عدالت میں داخل کیا تھا۔ سی بی آئی نے کیس کے سلسلے میں ڈاکٹر فاروق کا بیان جنوری 2018 میں ریکارڈ کیا تھا۔ یہ اسکینڈل 2002 سے 2011 تک بورڈ آف کنٹرول فار کرکٹ ان انڈیا (بی سی سی آئی) کی طرف سے جموں و کشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن کو جموں کشمیر میں کرکٹ کی سرگرمیوں کے فروغ کے لئے فراہم کئے گئے113 کروڑ 67 لاکھ روپے سے متعلق ہے۔ اس رقم میں سے مبینہ طور پر40 کروڑ روپے کا خرد برد کیا گیا تھا۔ یہ خرد برد اس وقت کیا گیا جب فاروق عبداللہ جموں کشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن کے صدر تھے۔ایس آئی ٹی ( خصوصی تحقیقاتی ٹیم)نے اپنی تحقیقات میں انکشاف کیا تھا کہ کروڑوں روپے مختلف جعلی بینک کھاتوں میں منتقل کئے گئے تھے۔ 
 
 

 

 

تازہ ترین