تازہ ترین

۔22اکتوبر1947کاقبائلی حملہ

ایس کے آئی سی سی میں 2روزہ سپوزیم آج سے

تاریخ    22 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر//پاکستان کے حمایت یافتہ قبائلی حملے کی یاد میں جموں و کشمیر میں پہلی مرتبہ ’’22اکتوبر1947کی یادیں ‘‘کے عنوان سے 2روزہ قومی سمپوزیم منعقد ہورہا ہے ۔ایس کے آئی سی سی سرینگر میںآج  منعقد ہونے والے اس سمپوزیم میں مرکزی وزیر ثقافت پی ایس  پٹیل ، لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا ، ماہرین تعلیم ، فوج اور فضائیہ کے سابق افسران اور دفاعی ماہرین سمیت دیگر معزز مہمان اس تاریخی واقعے پر اپنے خیالات کا اظہار کریںگے۔ جموں وکشمیر یونین ٹیریٹریری حکومت کے اشتراک سے نیشنل میوزیم انسٹی ٹیوٹ آف ہسٹری آف ہسٹری آف آرٹ ، کنزرویشن اینڈ میوزولوجی کے زیر اہتمام یہ سمپوزیم منعقد ہورہا ہے ۔ایک عہدیدار نے بتایا کہ سمپوزیم اس دن کی تاریخی داستان سامنے لے آئے گا۔انہوں نے بتایا کہ اس طرح کے اقدام کا مقصد لوگوں میں تاریخ کے اس مرحلے کے بارے میں شعور اجاگر کرنا ہے۔اس پروگرام سے یہ یاد آنے میں مدد ملے گی کہ ملک نے آزادی حاصل کرنے کے فورا بعدکس طرح پہلی لڑائی کا مقابلہ کیا۔انہوں نے بتایا کہ حملہ آوروں کے ظلم و ستم اور ان کا مقابلہ کرنے والوں کی بہادری کو یاد کرنا ان لوگوں کے لئے خراج تحسین ہوگا جنہوں نے آزاد ہندوستان کی پہلی جنگ میں اپنی جانیں نچھاور کیں۔22 اکتوبر  1947 کو پاکستان نے کشمیر پر حملہ کیا اور حملہ آوروں نے بڑے پیمانے پر لوٹ مار اور توڑ پھوڑ کی داستانوں کو جنم دیا۔26 اکتوبر 1947 کو  اس وقت کے ڈوگرہ حکمران مہاراجہ ہری سنگھ نے ہندوستان کے ساتھ الحاق پر دستخط کیے جس کے بعد قبائلیوں کے حملے کو پسپا کرنے کے لئے بھارتی فوج کو ریاستی دارالحکومت سرینگر پہنچایا گیاتھا۔