گول میں سڑکوں کی تعمیر | کئی اراضی مالکان برسوں سے معاوضے سے محروم

تاریخ    21 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


زاہد بشیر
گول//سب ڈویژن گول میں ایسی درجنوں سڑکیں ہیں جن کے مالکان اراضی کو ابھی تک معاوضہ نہیں ملا ہے ۔ ان کی فائلیں بیس بیس برسوں سے ایسے ہی پڑی ہیں تاہم پی ایم جی ایس وائی کی سڑکوں کی زد میں آنیوالی اراضی کا معاضہ دیاگیاہے ۔البتہ تعمیرات عامہ کے تحت بننے والی سڑکوں کا معاوضہ التواکاشکار ہے۔ان سڑکوں میں گول تتا پانی روڈ، سنگلدان اشمار بڑا کنڈ روڈ وغیرہ شامل ہیں ۔ گزشتہ ماہ ضلع ترقیاتی کمشنر رام بن نے اس بات کا اظہار کیا تھا کہ پورے ضلع میں بہت ساری ایسی سڑکیں ہیں جن کا معاوضہ اراضی مالکان کو نہیں ملا ہے جس کے لئے کروڑوں روپے بنتے ہیں اور اس سلسلے میں مرکزی سرکار کو بھی مطلع کیا گیاہے ۔ اگر گول تتا پانی روڈ کی بات کریں تو جو گول کا سب سے پرانی لنک روڈ ہے اور اس کی تعمیر 1999ء میںشروع ہوئی لیکن بیس سال گزرنے کے با وجود لوگوں کو ابھی تک کوئی معاوضہ نہیں ملا ۔ ہر سال مارچ مہینے میں لوگ انتظار کرتے ہیں اور لوگوں کو انتظامیہ یہی جواب دیتی ہے کہ اوپر چھٹی لکھی ہے لیکن کوئی جواب نہیں آ رہا ۔لوگوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ جلد از جلد سڑکوں کی زد میں آئی اراضی اور درختان و دیگر نقصان کا معاوضہ دیا جائے ۔
 

تازہ ترین