ڈاکٹر فاروق کی ای ڈی میں طلبی| راہل گانڈھی اور یچوری کی مرکز پر شدید تنقید

تاریخ    21 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


مانٹیر نگ ڈیسک
 سرینگر// کانگریس لیڈر راہل گاندھی اور کیمونسٹ پارٹی آف انڈیا(مارکسسٹ) کے جنرل سیکریٹری سیتا رام یچوری نے نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ کو انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کی طرف سے طلبی اور پوچھ تاچھ پر مرکز کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت تحقیقاتی ایجنسیوں کو سیاسی ہتھیار کے طور پر استعمال کر رہی ہے۔ راہل گاندھی نے کہا ’’ موجودہ سرکار کا یہ رجحان رہا ہے کہ وہ ایجنسیوں کو سیاسی ہتھیار کے طور پر استعمال کر رہی ہے،اور  وہ سیاسی طور پر چاہتی ہے،اگر انکی  راہ پر نہ چلے تو وہ سی بی آئی اور انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کو انہیں دبائو میںڈالنے اور ہراساں کرنے کیلئے استعمال کریں گے‘‘۔ کیرالہ کے تین روزہ دورے کے دوران راہل گاندھی نے کہا’’ یہ صرف ڈاکٹر فاروق عبداللہ ہی نہیں ،کئی لوگ اس حملے کا سامنا کر رہے ہیں،میں ذاتی طور پر بھی اس حملے کا سامنا کر رہا ہوں،میرے خلاف کئی کیس ہیں ۔‘‘کیمونسٹ پارٹی آف انڈیا(مارکسسٹ) کے جنرل سیکریٹری سیتا رام یچوری نے بھی انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ معاملے پر مرکز کو تنقید کا نشانہ بناتے ڈاکٹر فاروق عبداللہ کو قطار میں کھڑا کرنے کیلئے’’ ہراساں کرنے کے برہنہ طریقہ‘‘ کااستعمال کیا گیا۔ یچوری نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا’’ ڈاکٹرفاروق  ملک کے سنیئر ترین سیاسی لیڈر ہیں،اور سابق وزیر اعلیٰ و موجودہ پارلیمنٹ ممبر اس طرح  ہراساں کرکے کے برہنہ طریقہ کار سے سرنگوں نہیں ہونگے‘‘۔ان کا کہنا تھا کہ مودی سرکار ڈاکٹر عبداللہ کو قطار میں کھڑا کرنے کی کوششوں میں ناکام ہوگی۔
 

تازہ ترین