ٹکر کپوارہ فلٹریشن پلانٹ ناقابل استعمال | محکمہ کی عدم توجہی سے لوگ مشکلات سے دوچار

تاریخ    19 اکتوبر 2020 (30 : 12 AM)   


اشرف چراغ
کپوارہ//کپوارہ قصبہ سے محض ایک کلو میٹر دور ٹکر میں جل شکتی محکمہ کی جانب سے تعمیرکیا گیافلٹریشن پلانٹ عوام کے لئے درد سر بنا ہوا ہے ۔مقامی لوگو ں کے مطابق فلٹریشن پلانٹ گزشتہ20سالو ں سے بغیر چھت ہے جس کے نتیجے میں اس میں گندگی جمع ہو تی ہے جبکہ جنگلی جانور اور دیگر جانور اس میں گر کر مر جاتے ہیں اور بعد میں اس فلٹریشن پلانٹ کا پانی آبادی کو فراہم کیا جاتا ہے ۔مقامی لوگو ں کے مطابق 20سال قبل کھیر بوانی استھاپن مندر کے متصل جل شکتی محکمہ نے صارفین کو پینے کا صاف پانی فراہم کرنے کے لئے ایک فلٹریشن پلانٹ تعمیر کیا ہے تاہم 20سال گزر نے کے با وجود بھی اس پر چھت نہیں لگائی گئی اور نتیجے کے طور درختو ں کے پتوں کے ساتھ ساتھ جانور اس میں گر کر مر جاتے ہیں اور بعد میں فلٹریشن پلانٹ میں جمع شدہ یہی ناصاف پانی صارفین کو فراہم کیا جاتا ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ چھت کے ساتھ ساتھ اس فلٹریشن پلانٹ کی دیوار بندی بھی نہیں کی گئی ۔مقامی لوگو ں کا مزید کہنا ہے کہ لوگ اس فلٹریشن پلانٹ کا ناصاف پانی پینے کی وجہ سے بیماریوں کا خطرہ بڑ سکتا ہے۔مقامی لوگو ں نے جل شکتی محکمہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ فوری طور مذکورہ فلٹریشن پلانٹ کی دیوار بندی کے ساتھ ساتھ اس کی چھت لگائی جائے تاکہ لوگوں کو پینے کا صاف پانی فراہم کیا جائے گا ۔