دیوانگی

افسانچہ

تاریخ    18 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


غازی عرفان خان
ظہر کی نماز ادا کرنے کے بعدجب رفیق گھر پہنچا تو ماں نے دستر خوان پرکھانا لگایا۔۔۔
رفیق نے بسم اللہ کہتے ہوئے کھانا شروع کیا..... ابھی دو یا تین نوالے ہی حلق کے نیچے اتارے تھے کہ فون کی رِنگ بج اٹھی.....
السلام علیکم واجد بھائی ٹھیک ہو...... رفیق نے اپنے دوست واجد کی کال ریسیو کرتے ہوئے کہا۔
جی رفیق بھائی شکر اللہ کا......
حال چال پوچھنے کے بعد واجد نے ایک بُری خبر رفیق کو سنائی.....
رفیق نے کھانا دستر خوان پر ہی چھوڑا اور واجد کے ساتھ ہسپتال کی اور روانہ ہوا....... جہاں ان کا ایک دوست سجاد ایمرجنسی وارڑ میں زیر علاج تھا.....
دو گھنٹے پہلے ہی سجاد کی موٹر بائیک ایک آلٹو گاڑی سے ٹکرا گئی تھی اور وہ بُری طرح سے زخمی ہوا تھا......
تحقیق کے بعد معلوم ہوا کہ سجاد80کلومیٹر کی رفتار میں بائیک چلا رہا تھا جو اس کے ایکسیڈنٹ کی  اہم وجہ  تھی....
عیادت  کے بعد دونوں اسپتال سے رخصت ہوگئے۔۔
بائیک پر دونوں سوار یہی گفتگو کر رہے تھے کہ آج سے ہم بھی آہستہ سے بائیک چلائیں گے....ابھی وہ ہسپتال سے ایک آدھ کلومیٹر ہی دور ہوئے تھے کہ عماد نے واجد کو کال کی اور بتایا کہ کہاں ہو جلدی آجاؤ میچ شروع ہونے والا ہے... فون کاٹ کر موبائل جیب میں رکھنے کے بعد واجد نے بائیک کا گئیر تبدیل کیا اور 70کلویٹر کی رفتار سے میچ کھیلنے کے لئے روانہ ہوا۔۔
���
منیگام گاندربل،موبائل نمبر؛6006240089
 

تازہ ترین