سندربنی اور پونچھ میں گولہ باری 2 اہلکارزخمی

تاریخ    12 اکتوبر 2020 (30 : 12 AM)   


حسین محتشم+رمیش کیسر
پونچھ+نوشہرہ //راجوری کے سندر بنی اور پونچھ کے پونچھ سیکٹر وںمیں بھارت اور پاکستان کے مابین حد متارکہ پر شدید فائرنگ اور گولہ باری ہوئی جس کے نتیجہ میں دو اہلکارز خمی ہوئے۔اس دوران پہلی مرتبہ پونچھ قصبہ کے نزدیک واقع فوجی کیمپ کو نشانہ بنایاگیا۔عہدیداروں نے بتایا کہ اتوارکی صبح ساڑھے گیارہ بجے کے قریب پاکستانی فوج نے سندر بنی میں شدید گولہ باری کی۔پاکستانی فوج کی طرف سے فائرنگ اور گولہ باری دو گھنٹے تک جاری رہی جس کے رد عمل میں بھارتی فوج نے بھی کارروائی کی ۔پاکستانی شلنگ کے نتیجہ میں دو فوجی اہلکارزخمی ہوئے جن کی شناخت فوج کے لانس نائیک اور ایک بی ایس ایف اہلکار کے طور پر ہوئی ہے۔عہدیداروں نے بتایا کہ دونوں زخمی فوج کے مقامی ہسپتال میں زیر علاج ہیں۔ شام کے قریب 6 بجکر 15 منٹ پر پاکستانی فوج نے پونچھ سیکٹر کے کھڑی، کرماڑا، قصبہ، ڈھوکڑی اور دیگر ملحقہ علاقوں میں شدید فائرنگ اور گولہ باری کی۔حکام کے مطابق ’’پاکستانی فوج نے طویل فاصلے تک مار کرنے والے ہتھیاروں کا استعمال بھی کیا جس سے بڑے پیمانے پر نقصان ہونے کا امکان ہے‘‘۔انہوں نے بتایا کہ پونچھ سیکٹر کے علاقوں میں توپوں کے گولوں کے علاوہ چھوٹے ہتھیاروں اور مارٹروں سے بھی فائر کئے گئے ۔پونچھ قصبہ کے لوگوں نے بتایاکہ انہوں نے شام کے وقت متعدد مارٹر گولے فوجی کیمپ کے نزدیک گرتے دیکھے جس سے پورے قصبہ میں خوف مچ گیا۔ان دھماکوں کی آواز سے پورا قصبہ دہل اٹھا۔وہیں سندر بنی سیکٹر میں شام 7 بجکر 10 منٹ پرپھر سے فائرنگ اور گولہ باری کا سلسلہ شروع ہوگیا۔حکام نے بتایا’’پونچھ اور راجوری اضلاع کے پونچھ اور سندر بنی سیکٹر وں میں پاکستان کی طرف سے آرٹلری گولہ باری سمیت بھاری فائرنگ اور گولہ باری کا سلسلہ جاری ہے‘‘۔جموں میں مقیم دفاعی ترجمان لیفٹنٹ کرنل دیونندر آنند نے کہا کہ پاکستانی فوج چھوٹے ہتھیاروں، مارٹر کے ساتھ فائرنگ کررہی ہے ۔
 

تازہ ترین