فوجیوں کی واپسی انتہائی مشکل عمل

دونوں ممالک کو متفقہ طور پر کارروائی کرنا ہوگی: بھارت

تاریخ    25 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


نیوز ڈیسک
نئی دلی //چین کے ساتھ متوقع بات چیت کے درمیان جمعرات کو بھارت نے کہا ہے کہ زمینی سطح پر استحکام ضروری ہے، جب دونوں فریقین شمالی لداخ کے تمام اہم مقامات سے فوجیوں کی واپسی کا عمل یقینی بنانے کیلئے بات چیت کریںگے۔ وزارت خارجہ ترجمان انوراگ شری واستوا نے کہا ’’فوجیوں کی واپسی انتہائی مشکل عمل ہے جس کیلئے دونوں ملکوں کی رضا مندی ضروری ہے‘‘۔انہوں نے کہا کہ چین اور بھارتی حکام کے درمیان بات چیت کا ایک اور دور جلد متوقع ہے۔ انہوں نے کہا ’’جب دونوں ممالک تمام جگہوں سے فوج کی واپسی پر کام کررہے ہیں تو دوسری جانب یہ بھی ضروری ہے کہ بنیادی سطح پر استحکام بنا رہے۔ انہوں نے کہا کہ فوجی افسران کی تازہ میٹنگ اسی سلسلے میں ہونے والی ہے۔ انہوں نے کہا ’’جیسا کہ ہم نے پہلے بھی کہا ہے کہ فوج کی منتقلی ایک مشکل عمل ہے، دونوں ممالک کو اپنی پرانی چوکیوں پر  لیجانا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس کیلئے دوممالک کو متفقہ طور پر واپسی کی کارروائی کرنی ہوگی۔انہوں نے کہا کہ پرانی میٹنگوں نے سینئر فوجی کمانڈروں کو موقع فراہم کیا ہے کہ سرحد پر صورتحال کو استحکام بخشنے کیلئے متفقہ طور پر کام کریں۔ انہوں نے کہا کہ آگے کی ملاقاتوں سے یکطرفہ طور ہر صورتحال کو تبدیل کرنے کی کوششوں پر لگام لگانے میں مدد ملے گی جب دونوں ممالک تمام اہم مقامات سے فوج کی متفقہ طور پر واپسی پر رضامند ہونگے تاکہ خطے میں امن و استحکام قائم ہوسکے۔ شرواستو نے کہا کہ دونوں ممالک نے بنیادی سطح پر رابطوں کو برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ کسی بھی غلط فہمی سے بچاجاسکے۔

تازہ ترین