مزید خبرں

تاریخ    22 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


پنجابی ز بان کوفہرست میںشامل کرنا لازمی : کویندر گپتا

جموں //سابق نائب وزیر اعلیٰ اور بی جے پی کے سینئر رہنما کویندر گپتا نے زور دے کر کہا کہ جموں و کشمیر میں پنجابی زبان کو خاص اہمیت حاصل ہے کیوں کہ اس خطے میں لوگوں کی ایک بڑی اکثریت اس زبان کو بولتی ہے اور اسی وجہ سے یہ زبان سرکاری زبانوں کی فہرست میں شامل ہونے کے مستحق ہے۔پارلیمنٹ کے موجودہ اجلاس میں جموں و کشمیر کی سرکاری زبانوں کے مجوزہ بل میں پنجابی زبان کو شامل کرنے کے لئے پیر کو یہاں جاری ایک بیان میں بی جے پی کے سینئر عہدیدار کویندر گپتا نے یقین دلایا کہ وہ ہر ممکن کوشش کریں گے، تاکہ پنجابی زبان کو کسی بھی طرح کے تعصب کا سامنا نہیں کرنا پڑے۔ انہوں نے کہاکہ وہ اس معاملے کو سرکاری سطح پر اور پارٹی سطح پر بھی ذاتی طور پر اٹھائیں گے اور اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ پنجابی کو اس کا مناسب حصہ دیا جائے۔
 

جل شکتی ملازمین کا 72 گھنٹے کام چھوڑ ہڑتال کا انتباہ  

جموں //پی یچ ای ایمپلائز یونائیٹڈ فرنٹ نے اپنے مطالبات منوانے کیلئے 25ستمبر سے 28ستمبر تک 72 گھنٹوں کے کام چھوڑ ہڑتال پر جانے کا اعلان کیا ۔ پیر کے روز یہاں منعقدہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے فرنٹ کے لیڈران نے کہا کہ انتظامیہ انکے مسائل حل کرنے میں ناکام رہی ہے۔ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے فرنٹ کے لیڈروں نے کہا کہ پی ایچ ای/ آبپاشی اور فلڈ کنٹرول محکمہ کے یومییہ اجرتوں پر کام کرنے والوں نے 24-02-2020کو منعقدہ کام چھوڑ ہڑتال کے دوران انکے عرصہ دراز سے التوا میں پڑے مطالبات خصوصاً انہیں باقاعدہ بنانے، 12مہینوں کی تنخواہ حاصل کرنے کی غیر قانونی شرط کو ختم کرنے اور جے اینڈ کے یو ٹی میں مرکزی کم سے کم اجرت ایکٹ لاگو کرنے کا مطالبہ کیا تھا ،جنھوں نے محکمہ میں اپنی زندگی کے26سال خدمات انجام دیں ہیں لیکن تا دم ایک بھی مطالبہ حل نہیں کیا گیا ہے۔پریس کانفرنس میں انتباہ کیا گیا کہ اگر سرکا رنے انکے مطالبات 22-ستمبر 2020 تک حل نہیں کئے گئے تو وہ 25ستمبر سے 28ستمبر تک 72 گھنٹوں کے کام چھوڑ ہڑتال پر جائیں گے۔ 
 

24 گھنٹوں میں 12 کورونا مریض رخصت

جموں میڈیکل کالج میں 150 آکسیجن بیڈ خالی 

جموں //پرنسپل گورنمنٹ میڈیکل کالج اینڈ ہسپتال جموں، ڈاکٹر این سی ڈیگرا نے آج کہاکہ کوو ڈ وبائی مرض کے دوران ااولین طبی ادارہ   تمام بیمار مریضوں کی دیکھ بھال کر رہی ہے۔پرنسپل نے کہا کہ ہسپتال افرادی قوت کے مسائل کے باوجود صورتحال سے نپٹ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہسپتال میں بھرتی ہونے والے زیادہ سے زیادہ مثبت معاملات روبہ صحت ہوگئے ہیں۔ ہسپتال کی بحالی کی شرح قومی اوسط سے کم نہیں ہے۔ ‘‘، انہوں نے مزید کہا کہ 12 صحت مند مریضوں کو مکمل صحت یابی کے بعد گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران رخصت کردیا گیا ہے۔افرادی قوت کی قلت سے متعلق اطلاعات سے انکار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس معاملے کو اچھی طرح سے نمٹا گیا ہے کیونکہ طبی عملہ چوبیس گھنٹے مریضوں کی دیکھ بھال کے لئے کوشاں ہے۔ انہوں نے مزید کہا ، "اس وقت ٹائٹیڈ آکسیجن پر 46 مریض ہیں اور ہمارے پاس 150 آکسیجن بیڈ خالی ہیں اور پچھلے چوبیس گھنٹوں میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔کوویڈ وبائی امراض کے درمیان مریضوں کی دیکھ بھال میں اضافے کے لئے خصوصی اقدامات کی فہرست دیتے ہوئے ، انہوں نے کہا کہ جی ایم سی اینڈ ایچ جموں کووڈ مریضوں سمیت تمام بیمار مریضوں کی دیکھ بھال کر رہے ہیں۔کووڈ کنٹرول اقدامات کو مزید تقویت دینے کے لئے ، انہوں نے بتایا کہ اضافی تقاضوں پر قریبی نگاہ  رکھنے کے لئے ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے اور کسی بھی صورتحال سے نمٹنے کے لئے مزید اقدامات تجویز کئے جائیں گے۔میڈیکل سپرنٹنڈنگ گورنمنٹ میڈیکل کالج جموں ڈاکٹر کیرتی بھوشن شرما ، انچارج کوویڈ کنٹرول روم ڈاکٹر اے ڈی ایس منہاس ، ڈاکٹر جتندر مہتہ اور ڈاکٹر بھارت بھوشن بھی اس موقعہ پر موجود تھے۔
 

محکمہ ٹرانسپورٹ یونین کی ایل جی سے مطالبات حل کرنے کی اپیل 

جموں // وی آر ایس یونین جموں نے جے اینڈ کے انتظامیہ اور محکمہ ٹرانسپورٹ کی جانب سے انکے معاملہ کو صیح طریقہ سے پیش نہ کرنے پر   مذمت کی ہے،جس کی وجہ سے انہیں یو ٹی سرکار کی جانب اعلان کردہ حالیہ پیکئیج سے محروم رکھا گیا ہے۔ پیر کے روز یہاں منعقدہ ایک پریس کانفرنس میں یہ الزامات لگاتے ہوئے یونین کے لیڈروں نے کہا کہ ہمیں اس پیکئیج میں شامل نہیں کیا گیا ہے اور نہ ہی انہیں جے اینڈ کے ایس آر ٹی سی سے ریٹائر ہونے یا وی آر ایس کے بعد پنشن کے فوائد دئے گئے ہیں۔انہوں نے مبینہ الزام لگایا کہ 1350کروڑ روپے کے حالیہ پیکئیج میں اعلیٰ لوگوں کو فائدہ دیا گیا ہے جبکہ نچلے طبقہ کو اس میں نظر انداز کیا گیا ہے۔انہوں نے مبینہ الزام لگایا کہ انہیں انتظامیہ نے یقین دہانی کی تھی کہ انہیں بھی اس پیکئیج میں شامل کیا جا ئے گا لیکن اب کی بار بھی انہیں اپنے جائز حقوق سے محروم کیا گیا ہے۔یونین نے ایل جی سے اپیل کی ہے کہ انکے حق میں (742ایس آر ٹی ملازمین کے حق میں کولا کے بقیا جات واگُذار کئے جائیں ،تاکہ وہ بھی اپنے اخراجات پورا کر سکیں ۔
 

ملک کے مستقبل کو خطرہ میں نہیں ڈالا جاسکتا ہے : شیوسینا

 جموں// شیوسینا بالا صاحب ٹھاکرے ، جے اینڈ کے یونٹ کے رہنماؤں نے اسکولوں کو دوبارہ کھولنے کے فیصلے کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ایسا کرنے سے کووڈ۔19 کے پھیلاؤ کے درمیان طلبا کی زندگیاں خطرے میںہے۔ ایک بیان کے مطابق پارٹی کے ریاستی صدر منیش ساہنی اور صدر خواتین ونگ میناکشی چھبر اور جنرل سکریٹری وکاس بخشی کے ہمراہ آج جموں کے مختلف اسکولوں کے باہر طلبا اور ان کے والدین سے بات چیت کرتے تھے۔شیو سینا رہنماؤں نے کہا کہ تقریبا تمام طلباء اور ان کے والدین اس فیصلے کے خلاف ہیں۔ انہوں نے کہا کہ "اسکولوں کو دوبارہ کھولنے کا یہ صحیح وقت نہیں ہے اور ایسا کرنے سے سرکارطلبا کو کوڈ کی وبائی بیماری میں دھکیل رہے ہیں۔
 

جن ابھیان

ناظم باغبانی کا بلاک نُڈ میںعوامی دربار 

جموں //ناظم باغبانی جموں رام ساوک نے پیر کے روز یہاں بلاک نُڈ کے پنچایت گھر منانو میں منعقدہ جن ابھیان کیمپ میں شرکت کی اور پھلوں کے کاشتکاروں سمیت مقامی لوگوں کے مسائل سنے۔اس علاقے کے پی آر آئی ممبروں ، پھلوں کے کاشتکاروں اور کسانوں سے بات چیت کرتے ہوئے ان کی شکایات سنیں اور متعلقہ محکموںسے  انکے مسائل جلد از جلدحل کرنے کا مطالبہ کیا۔انہوں نے بیک یارڈ باغبانی اسکیم کے تحت پنچایتوں کے گھرانوں میں کینو ، آم وغیرہ کے معیاری پھلوں کے پودے تقسیم کئے۔ڈسٹرکٹ شیپ ہسبنڈری افسر سانبہ ستیش گنگوال ، (نوڈل آفیسر جن ابھیان ، نُڈ بلاک اور چیف ہارٹیکلچر آفیسرسانبہ انیل کمار گورکھانے اجتماع سے خطاب کیا اور محکمہ کی جاری ترقیاتی اور فلاحی اسکیموں سے آگاہ کیا۔
 

ناظم تعلیم جموں کا سکول دوبارہ کھولنے پر ویبنار کا اہتمام

 جموں/ / ہیڈ ماسٹروںاور عملہ کے ممبروں کو اسکولوں کے دوبارہ کھولنے سے متعلق مختلف رہنما خطوط اور عمل کے بارے میںجانکاری پیدا کرنے کے لئے ڈائریکٹوریٹ آف اسکول ایجوکیشن جموں نے بھارتی فاؤنڈیشن کے تعاون سے ایک ویبنار کا اہتمام کیا۔ڈائرکٹر اسکول ایجوکیشن جموں ، انورادھا گپتا آن لائن پروگرام میں مہمان خصوصی تھیں جس میں 25 ہزار سے زائد افراد نے براہ راست شرکت کی۔ اس کے بعد سوشل میڈیا کے مختلف پلیٹ فارمز پر ہزاروں اور افراد شریک ہوئے۔شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے انورادھا گپتا نے بتایا کہ اس وقت ویبنار کے انعقاد کی اپنی ایک اہمیت ہے جب 21 ستمبر 2020 کو اسکول جزوی طور پر دوبارہ کھول رہے ہیں اور وہ بھی ان علاقوں میں جو کنٹینمنٹ زون میں نہیں آتے ہیں۔ انہوں نے شرکا کو بتایا کہ یہ دوبارہ کھولنا صرف نویں سے بارہویں جماعت کے طلباء کے لئے ہے اور وہ بھی رضاکارانہ بنیادوں پر۔ انہوں نے سکولوں کے سربراہان سے کہا کہ وہ طلباء کی کامیابی کیلئے ایک نجی منصوبہ بنائیں۔ انہوں نے ان سے یہ بھی کہا کہ وہ طلبا کی آن لائن اور آف لائن تعلیم کے امتزاج سے متعلق عملی اقدامات کا لائحہ عمل تیار کریں تاکہ ان کے مطالعے کے نقصان کو کم کرنے اور ان کی تعلیم کو زیادہ سے زیادہ کرنے کے لئے باہمی تعاون کی کوشش کی جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ سکولوں میں جاری کردہ تمام ایس او پیئز پر عمل کرنے کی ضرورت ہے۔انہوں نے بھارتی فاؤنڈیشن کے تعاون اور کوششوں کی سراہنا کی ۔
 

۔20 دسمبر کو پنتھرس پارٹی کا اجلاس

جموں//جموں وکشمیر نیشنل پینتھرس پارٹی کے سرپرست اعلیٰ پروفیسر بھیم سنگھ نے سابق یونٹوں اور پینتھرس اسٹوڈنٹس یونین (این پی ایس یو) کی تنظیم نو کے مشن کے ساتھپیر کے روز جموں میں ینگ پینتھرس، پینتھرس ٹریڈ یونین، پینتھرس کسان پریشد، پینتھرس سابق فوجی، پینتھر مہلا ونگ، دیگر ونگس سمیت تمام یونٹوں کی میٹنگ منعقد کی۔ میٹنگ میں فیصلہ کیا گیا کہ 5 اکتوبر 2020 سے پہلے تمام یونٹوں کے سلسلے میں ایک آرگنائزنگ کمیٹی کا اعلان کیا جائے گا۔ مذکورہ بالا تمام اکائیوں کے سابق لیڈروں کو اجلاس میں شرکت کی دعوت دی گئی۔انہوں نے اعلان کیا کہ 26 اکتوبر تک یونٹوں اور پینتھرس اسٹوڈنٹس یونین کے ہر شعبے کی آرگنائزنگ کمیٹی کا اعلان کردیا جائے گا، جس دن مہاراجہ ہری سنگھ نے 1947 میں یونین آف انڈیا کے ساتھ انضمام پر دستخط کئے تھے۔ انہوں نے میٹنگ میں بتایا کہ متعلقہ یونٹوں کا ہر ایک ایکٹیو ممبر ہر ایک سے مشاورت سے متعلقہ ونگز کی آئینی کمیٹی کا ممبر ہوگا۔
 
 
 

کھربو کرگل سڑک حادثہ میںڈرائیور ہلاک 

کنگن//غلام بنی رینہ//کھربو میں سڑک کے ایک دلدوذحادثہ میں ڈرائیور ہلاک ہوگیا جبکہ ایک زخمی ہوا۔ ضلع کرگل کے کھربو کے نزدیک میں لداخ سے سرینگر آرہی ایک ٹرک زیر نمبر JK02AF,, 4397اور ایک 207 گاڈی زیر نمبر JK1AB, 4570کے درمیان شدید ٹکر ہوگئی اور دونوں گاڈیاں دو سو فٹ گہری کھائی میں جاگری جس کے نتیجے میں ٹرک کا ڈرائیور جس کی شناخت عبدالقیوم ولد محمد شفیع ساکن کھری کھٹہ ریاسی موقع پر ہلاک ہوگیا جبکہ دوسرا ڈرائیور جس کی شناخت مدثر احمد ڈار ولد ولی محمد ڈار ساکن ناگہ بل گاندربل زخمی ہوگیا جس کو علاج و معالجہ کے لئے ہسپتال منقتل کیا گیا ہے۔  ایس ایچ او پولیس سٹیشن دراس منظور حسین میر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ پولیس نے ہلاک ہوئے ڈرائیور کی لاش کو مردہ گھر میں رکھا ہے اورلواحقین کو اطلاع دی گئی ھے اور قانونی لوازمات پورہ کرکے لاش کو ان کے سپرد کیا جائیگا۔ پولیس نے اس سلسلے میں کیس درج کیاہے۔ 
 

عبوری مالی پیکیج

فیڈریشن آف انڈین چیمبرآف کامرس کی سراہنا

سرینگر//فیڈریشن آف انڈین چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹرئز ( ایف آئی سی سی آئی)کے چیئرمین عرفان احمد گجو نے جموں کشمیر کے لیفٹنٹ گورنر منوج سنہا کی طرف سے1350کروڑ روپے کے عبوری پیکیج اور6ماہ تک سودکی ادائیگی میں5فیصد کے مالی امداد کے اعلان کی سراہنا کی۔ انہوں نے ایف آئی سی سی آئی اور دیگر مقامی انجمنوں کی تجاویز کے بعد جموں کشمیر میں تجارتی طبقے کو معاشی پیکیج موجودہ بحرانی صورتحال میں ایک خوش آئندہ قدم قرار دیتے ہوئے کہا کہ حقیقت میں اس وقت یہ خستہ شدہ تجارت میں نئی روح پھونک دے گا۔ عرفان گجو نے کہا کہ پورے ملک میں کرونا لاک ڈائون کے نتیجے میں تجارت اور کاروبار کو کافی نقصان پہنچا۔انہوں نے کہا کہ مرکزی اورمقامی حکومت مسلسل طور پر تاجروں کو تعاون دینے میں مصروف ہیں۔ عرفان احمد گجو نے کہا کہ جموں کشمیر میں تجارتی برادری اس بات کو محسوس کر رہی ہے کہ خطے میں بنکاری کے نیٹ ورک کو مزید وسعت دینے کی ضرورت ہے کیونکہ جموں کشمیر میں دیگر ریاستوں کے برعکس کم ہے۔انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر کے کارباریوں کو بنکنگ شعبے کی طرف سے مکمل تعاون اور معاونت کی ضرورت ہے۔
 

سیلوسوپور میں محکمہ بجلی کاملازم کرنٹ لگنے سے جھلس گیا

سوپور//غلام محمد//سیلوسوپور میں محکمہ بجلی کا ایک عارضی ملازم کرنٹ لگنے سے جھلس گیا۔اطلاعات کے مطابق 50برس کاغلام حسن شیخ ولدولی محمد ساکن سیلوکواُس وقت بجلی کرنٹ کا شدید جھٹکا لگا جب وہ ٹرانسفارمراور ترسیلی لاینوںکی مرمت کررہا تھا۔مذکورہ کے بازواورٹانگیں جھلس گئیں اور اُسے فوری طورسب ضلع اسپتال سوپور پہنچایا گیا۔ادھر محکمہ بجلی کے حکام نے اس حادثہ کو بدقسمتی سے تعبیر کرتے ہوئے کہاکہ غلام حسن ٹرانسفارمر کی مرمت کرتے ہوئے جھلس گیا اور اُسے بھرپور معاوضہ دیا جائے گا۔اس دوران زخمی ملازم کے اہلخانہ نے کہا کہ وہ1997سے محکمہ بجلی میں عارضی ملازم کے طور کام کررہا ہے اور اُسے فوری طور مستقل کیا جائے ۔انہوں نے کہا کہ وہ اس سے قبل بھی ڈیوٹی کے دوران بجلی کی کرنٹ لگنے سے زخمی ہواہے۔
 

سندربنی اور پونچھ میں آر پار گولہ باری

پونچھ//نیوز ڈیسک//ہندوپاک افواج کے درمیان پیر کے روز راجوری اور پونچھ میں فائرنگ اور گولہ باری کا تبادلہ ہوا۔یہ گولہ باری راجوری کے سندربنی اور ضلع پونچھ کے شاہپور، کیرنی اور قصبہ علاقوں میں ہوئی۔واضح رہے کہ پچھلے کئی روز سے فائرنگ اورگولہ باری کا تبادلہ جاری ہے۔جموں میں مقیم دفاعی ترجمان لیفٹنٹ کرنل دیونندر آنند نے بتایا کہ پیر کی سہ پہر پاکستانی فوج نے پونچھ ضلع کے شاہ پور ،کیرنی اور قصبہ میں جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کی۔انہوں نے کہا’’پاکستانی فوج نے کنٹرول لائن پر چھوٹے ہتھیاروں اور مارٹر گولوں کا استعمال کیا‘‘۔اسی طرح راجوری کے سندر بنی سیکٹر میں جنگ بندی کی خلاف ورزی کی گئی اورچھوٹے ہتھیاروں و مارٹروں سے نشانہ بنایاگیا۔دفاعی ترجمان کے مطابق بھارتی فوج اس فائرنگ اور گولہ باری کا موثر جواب دے رہی ہے۔
 
 
 
 

تازہ ترین