تازہ ترین

میڈیکل کالج اننت ناگ میں شہری کی موت پر ہنگامہ

اسپتال انتظامیہ پر لاپرواہی برتنے کالواحقین کاالزام

تاریخ    20 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


عارف بلوچ
اننت ناگ //لارکی پورہ اننت ناگ کے ایک شخص کی موت کے بعد میڈیکل کالج اننت ناگ میں ہنگامہ ہوااور متوفی کے لواحقین نے اسپتال انتظامیہ پر لاپرواہی برتنے کاالزام عائد کرتے ہوئے احتجاج کیا۔مظاہرین لاش کو ٹرالی پر لے کر اسپتال کے مرکزی دروازے کے باہر لے گئے اور انتظامیہ کے خلاف جم کر نعرے بازی کی، جس کی وجہ سے جنگلات منڈی ،اچھہ بل روڈ پر ٹریفک جام ہو گیا۔ تاہم پولیس کی مداخلت کے بعد لاش کو ایمبولینس کے ذریعہ آبائی علاقہ روانہ کیا گیا۔انتظامیہ کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے مظاہرین نے الزام لگایا کہ پینسٹھ سالہ غلام محمد ڈار کو کچھ روز قبل اسپتال میں داخل کرایا گیا اور اُسے کورونا پازیٹیو قرار دیکر کووِڈ- 19 وارڈ میں داخل کیا گیا۔ تاہم چند روز بعد دوبارہ جانچ کرنے کے بعد مریض کی کووڈ منفی ہونے کی تصدیق کی گئی لیکن اس دوران مریض کی حالت خراب ہوئی اور ڈاکٹروں کی مبینہ لاپرواہی سے اسکی موت واقع ہوگئی۔ تاہم مریض کی موت کے بعد ڈاکٹرز نے اُسے کووِڈ پازیٹو قرار دے دیا۔ادھر ہسپتال کے  پرنسپل ڈاکٹر شوکت جیلانی کا کہنا ہے کہ مذکورہ مریض کووِڈ- 19 میں مبتلا تھا اور تیمارداروں کی جانب سے پیش کیا گیا منفی ٹیسٹ فرضی ہو سکتا ہے۔ اس سلسلے میں انتظامیہ نے معاملے کی تحقیقات کے احکامات بھی صادر کئے ہیں۔واضح رہے کہ اس سے قبل بھی میڈیکل کالج اور زچہ بچہ ہسپتال اننت ناگ میں ایسے کئی واقعات پیش آئے جن کی تحقیقاتی رپورٹ ہنوزآنا باقی ہے۔