تازہ ترین

۔30فیصد اضافہ کا فیصلہ ،مسافرسے دوگنا کرایہ وصول

نصف سواریاں بٹھانے اور بغیر ماسک سفر کرنے کے قواعد و ضوابط بالائے طاق

تاریخ    19 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


اشفاق سعید

 ٹیمیں ہر ضلع میں مقرر ، ڈرائیور باز آجائیں ورنہ لائسنس منسوخ ہونگے :آر ٹی او 

 
سرینگر //کورونا کے پیش نظر حکام کی طرف سے ٹرانسپورٹ کرایہ میں30فیصد اضافہ کو بالاطاق رکھ کر ٹرانسپورٹروں نے کرایہ میں دگنا اضافہ کردیا ہے۔کشمیر عظمیٰ نے چند ہفتے قبل اس پر مفصل سٹوری کی تھی لیکن متعلقہ حکام کی جانب سے کو اقدام نہیںاٹھایا گیا۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ شہر سرینگر میں آٹو رکشھا والوں کو بھی کرایہ میں 30فیصد کا اضافہ کم لگا اور انہوں نے بھی من مانے طور پر اپنی ہی ریٹ مقرر کر دی ہے ۔جبکہ ٹاٹا سومو سروس جس علاقے میں ہے وہاں کرایہ دگنا کردیا گیا ہے۔ محکمہ ٹرانسپورٹ اپنی ذمہ داریوں سے پلو جھاڑ تے ہوئے یہ دلیل دے رہا ہے کہ اگر کسی مسافر سے اضافی کرایہ وصول ہوتو وہ گاڑی کا نمبر محکمہ ٹرانسپورٹ اور پولیس کو بھیج دیں، لیکن ایسا ہر کسی کے لئے مممکن ہی نہیں ہے کہ محکمہ ٹرانسپورٹ کے چکر لگائے۔حال ہی میںامور صارفین و عوامی تقسیم کاری کے ڈائریکٹر نے کرایہ میں 30فیصد کا اضافہ کرنے کے دوران یہ دعویٰ کیا تھا کہ کورونا کی روتھام کے بعد کرایہ میں کمی کی جائے گی اور ٹرانسپورٹروں سے بھی کہا گیا تھا کہ وہ اس صورت میں 30فیصد کرایہ میں اضافہ کریں گے جب وہ گاڑیوں میں50فیصد سواریوں کو بٹھائیں گے اور اس کیلئے تمام قوائد ضوابط کو عملایا جائے گا لیکن ایس او پیز تو درکنار ٹرانسپورٹروں نے من مرضی سے کرایہ وصول کرنا شروع کر دیا ہے۔وادی بھر سے لوگ شکایت کر رہے ہیں کہ کرایہ میں بے تحاشہ اضافہ ہوا ہے اور مسافر گاڑیوں میںسواریاں آدھی نہیں بھری جاتی بلکہ جنتی سٹیں ہیں انتی ہی سواریاں ہوتی ہیں۔المیہ تو یہ ہے کہ وادی کے کسی بھی روٹ پر پولیس کی کوئی چیکنگ نہیں ہوتی کیونکہ مسافر گاڑیوں کے ذریعہ ہی کورونا وائرس متاثرین میں اضافہ ہورہا ہے۔مسافر گاڑیوں میں مختلف دفاتر جانے والے افراد یا خواتین ہی مسک پہنتے ہیں دیگر سبھی سواریاں ماسک کا استعمال سرے سے ہی نہیں کررہے ہیں حتیٰ کہ گاڑیوں کے ڈرائیور بھی بغیر ماسک ہوتے ہیں۔یاد رہے جب جموں کشمیر حکام نے کرائیوں میں30فیصداضافہ کرنیکا فیصلہ کیا تھا تب ٹرانسپورٹ یونینوں کو اس بات کا پابند بنایا گیا تھا کہ وہ حکومت کی جانب سے جاری ایس او پیز پر عمل پیرا ہونگے وگرنہ انکی لائسنس منسوخ کی جائینگی اور گاڑیاں ضبط ہونگی۔ ایس او پیز میں بتایا گیا تھا کہ گاڑیوں میں نصف سواریاں بٹھائی جائیں گی اور ڈرائیور ایسے کسی بھی مسافر کو نہیں اٹھائیں گے جس نے ماسک نہ پہنی ہو۔لیکن پوری وادی میں مسافر گاڑیوں کے مالکان  اور ڈرائیور ایس او پیز پر عمل نہیں کررہے ہیں اور گذشتہ ایک مہینے کے دوران وادی کے ضلع اسپتالوں میں جتنے بھی کورونا متاثرین افراد لائے گئے ان میں سے قریب 70فیصد کو سفر کرنے کے دوران وائرس ہوا ہے۔یہاں صرف کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی ہی نہیں کی جارہی ہے بلکہ کرایہ میں دگنااضافہ کر کے عام لوگوں کے لئے مشکلات پیدا کی گئی ہیں۔چاہیے سومو سروس ہو یا شہر کے مختلف روٹوں پر چل رہے آٹو رکھشا ہوں، ہر جگہ عام لوگوں کو لوٹا جارہا ہے۔ جہاں پہلے 50روپے راج باغ سے لال چوک تک لئے جاتے تھے اب 100روپے لئے جارہے ہیں ۔حیدپورہ سے لالچوک تک پہلے 60سے70روپے کرایہ وصول کیا جاتا تھا اب 200کی مانگ کی جاتی ہے ،اسی طرح ریذڈنسی روڑ سرینگر سے لیکر جہانگیر چوک تک پہلے 30روپے کرایہ تھا اب 50روپے حاصل کیا جا رہا ہے۔ مسافروں کو متعدد روٹوں پر 30فیصد کے بجائے 50فیصد کرایہ ادا کرنے پر مجبور کیاجارہا ہے ۔وادی بھر میں ڈرائیوروں کی لوٹ جاری ہے اور قانون نافذ کرنے والی ایجنسیاں ہاتھ پر ہاتھ دھرے بیٹھی ہیں۔۔ ریجنل ٹرانسپورٹ افسر کشمیر اکرم ٹاک نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ شکایت ملنے کے بعد سینکڑوں ڈرائیوروں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی  گئی ہے جبکہ اس سلسلے میں ٹرانسپورٹ انجمنوں سے بھی کئی ایک میٹنگیںہوئی ہیں۔ تاہم انہوں نے کہا کہ کچھ ایک آوارہ گاڑیاں ہیں جنہوں نے کرایہ میں اضافہ کیا ہے جن کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جاتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ سرینگر میں کرایہ کو اعتدال پر رکھنے کیلئے 2ٹیموں کو مقرر کر رکھا ہے جبکہ باقی اضلاع میں بھی اس سلسلے میں ٹیمیں مقرر ہیںجو ایسی گاڑیوں کے خلاف کارروائی عمل میں لاتی ہیں جنہوں نے از خود کرایہ میں اضافہ کیا ہو ۔انہوں نے کہا کہ محکمہ نے اس سلسلے میں اپنے نمبرات بھی ویب سائٹ پر دستیاب رکھے ہیں اور لوگوں سے کہا گیا ہے کہ وہ ایسی گاڑیوں کے نمبرات ٹول فری نمبرات پر رجسٹر کریں تاکہ گاڑی کے کاغذات کو رد کیا جائے ۔انہوں نے مزید کہا کہ ایسی گاڑیوں کے مالکان کو بھی نہیں بخشا جائے گا ۔انہوں نے آٹو رکھشا مالکان کو وارننگ جاری کی ہے کہ وہ مناسب کرایہ مسافروں سے وصول کریں اگر کوئی بھی آٹو ڈرائیور اضافی کرایہ لیتا ہوا پکڑا گیا تو اس کا لائسنس رد کر دیا جائے گا ۔
 

تازہ ترین