تازہ ترین

چین کا دعوی،کورونا ویکسین بنانے میں سب سے آگے

تاریخ    19 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


بیجنگ//چین نے دعویٰ کیا ہے کہ کورونا وائرس’کووڈ-19‘کے خلاف کارگر جنگ کے لئے ٹیکہ بنانے میں وہ سب سے آگے ہے اور اسے دیگر ممالک سے ویکسین کے تعلق سے ڈاٹا چرانے کی ضرورت نہیں ہے۔چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان وانگ وینون نے کورونا ویکسین کے ڈاٹا چوری سے متعلق الزمات کی میڈیا میں آئی رپورٹوں پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے جمعہ کو کہا،’’چین سائبر حملے کے سخت خلاف ہے۔سائبر کرائم کی کسی بھی شکل کی ہم شدید مخالفت کرتے ہیں۔میں یہ کہنا چاہتا ہوں کہ کورونا وائرس ٹیکہ کے سلسلے میں تحقیق اوراسے ترقی دینے کے معاملے میں ہمارا ملک سب سے آگے چل رہا ہے۔ہمیں غیر قانونی طور سے ٹیکہ کے تعلق سے کسی طرح کا ڈاٹا حاصل کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ سائبر حملہ آج دنیا کے سبھی ممالک کے لئے زبردست خطرہ بن گیا ہے۔ترجمان نے کہا ،’’میں امید کرتا ہوں کہ کوئی بھی ملک بغیر کسی ثبوت کے کسی کے خلاف غیر ذمہ دارانہ تبصرہ نہیں کرے گا۔چین کے سائنس و تکنیکی وزیر نے آج کہا کہ ان کا ملک کورونا کے کم از کم 11 ٹیکوں کا کلینکل ٹرائل کررہا ہے جن میں چار تیسرے مراحل کے ٹرائل میں ہیں۔اسپین کے سائنسداں کووڈ-19 کے کم از کم 12 ٹیکوں پر کام کررہے ہیں لیکن کوئی بھی کیلنکل ٹرائل کے مرحلہ میں نہیں پہنچا ہے۔اسپین کے ایک اخبار نے قابل اعتماد ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے جمعہ کو خبر شائع کی ہے کہ چین کے سائبر ہیکروں نے ملک کے کورونا ویکسین مرکز سے ویکسین ڈاٹا مبینہ طور سے چوری کرلیا ہے۔اس نے دعویٰ کیا کہ روس اور چین کے ہیکر دیگر ممالک کے ویکسین تیار کرنے والے مراکز سے ڈاٹا چوری کرنے کا کام کررہے ہیں اور اسپین کے مرکز سے چین کے ہیکروں نے ڈاٹا چوری کیے ہیں۔اسپوتنک۔الف الف