تازہ ترین

شکایات کا ازالہ شفاف حکمرانی کی فراہمی کا اہم حصہ:فاروق خان

سرینگر میں ہفتہ وار عوامی دربارکے دوران متعدد وفود مشیر سے ملاقی

تاریخ    18 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


سری نگر//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر فاروق خان نے کل کہا ہے کہ جموں و کشمیر اِنتظامیہ کی شکایات کے ازالے کا میکانزم اچھی اور شفاف حکمرانی کی فراہمی کا ایک اہم حصہ بن گیا ہے۔مشیر خان نے کل لیفٹیننٹ گورنر شکایتی سیل چرچ لین میں ہفتہ وار عوامی شنوائی کے دوران مختلف عوامی وَفود اور اَفراد سے ملے اور اُن کے مطالبات اور مسائل سنے۔کشمیر کے مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے 120 عوامی وَفود اور اَفراد نے محکمہ بجلی ، محکمہ حج و اوقاف ، سماجی بہبود ، قبائلی امور ، ثقافت ، زراعت ، باغبانی اور دیہی ترقی اور پنچایتی راج ، سکولی تعلیم ، تکنیکی تعلیم دیگر محکموں کے علاوہ دیگر عوامی اہمیت اور ترقیاتی امور سے متعلق متعدد معاملات مشیر موصوف کو گوش گذار کئے۔ اُنہوں نے ان مسائل اورمطالبات کا فوری اَزالہ یقینی بنانے کے لئے مشیر کی مداخلت طلب کی۔چند ایک مسائل مشیرموصوف نے موقعہ پر ہی متعلقہ محکموں کو فوری طور حل کرنے کی ہدایت دی۔سری نگر کے علاقے صنعت نگر سے آئے ایک وَفد نے اُن کے علاقے میں اندرونی سڑکو ں پر میکڈم بچھانے  اور نکاسی آب مسائل کے ازالے کی مانگ کی۔پانپور کے سیفکو کالونی خانقاہ باغ سے ایک اوروَفد نے پانپور علاقے میں قبرستان کی دیواری بندی کا مطالبہ کیا۔اِسی طرح نِٹنگ انسٹریکٹروں کے ایک وفد نے 2018 ء سے زیر التوأ اَسامیوں کا سلیکشن لسٹ جاری کرنے کا مطالبہ کیا۔آلسٹینگ کے ایک وَفد نے علاقے میں نئے ٹرانسفارمروں اور ٹرانسمیشن لائنوں کی مرمت کا معاملہ اُٹھایا ۔ایس آر  او۔ 43 ملازمت کے خواہشمند اَفراد کی ڈیپوٹیشن نے کلیئرنس کے لئے متعدد محکموں کے پاس زیر اِلتوأ ان کے معاملات کا معاملہ اُٹھایا۔ مشیر نے ایس  آر  او۔ 43 کے خواہشمندوں کو یقین دِلایا کہ اُن کے معاملے کو جلد از جلد اَزالہ کرنے کے لئے متعلقہ محکموں کے ساتھ اُٹھایا جائے گا۔اِسی طرح دیگروَفود اور اَفرادجو قاضی گنڈ ، ہندواڑہ ، سوپور ، بڈگام ، کولگام ، بانڈی پورہ ، لولاب ، دیوسر ، ناربل بڈگام ، بجبہاڑہ ، پٹن اور کشمیر کے دیگر علاقوں سے آئے تھے ۔ اُنہوں نے مشیر موصوف سے مل کر اپنے علاقوں کے مسائل اور مطالبات اُٹھائے ۔مشیرفاروق خان نے تمام وَفود او راَفراد کو بغور سنا اور اُنہیں یقین دِلایا کہ ان کی طرف سے پیش کئے گئے معاملات اور مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر ازالہ کیا جائے گا۔