لیفٹیننٹ گورنر کا مذہبی رہنماؤں کیساتھ تبادلہ خیال

کہامذہبی قائدین کی کووڈ کے خلاف لڑائی میں شمولیت اہم

تاریخ    16 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر //لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے کووڈ 19 وباء سے متعلق جانکاری اور احتیاطی تدابیر پر منعقدہ میٹنگ میں ایس کے آئی سی سی میں جموں کشمیر کے مذہبی رہنماؤں سے تبادلہ خیال کیا ۔ مذہبی رہنماؤں کے سماجی شمولیت کے کردار کو اجاگر کرتے ہوئے لیفٹیننٹ گورنر نے انہیں اس وباء کے پھیلاؤ پر قدغن لگانے کیلئے لوگوں کے برتاؤ میں تبدیلی لانے ، وباء سے متعلق جانکاری عام کرنے اور مثبت معاملات کی نگرانی کرنے کیانتظامیہ کی کوششوں پر معاونت کرنے کیلئے کہا ۔ مذہبی قاعدین کا ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے میٹنگ میں شرکت کرنے کیلئے اُن کا شکریہ ادا کرتے ہوئے ایل جی نے کووڈ سے متعلق رہنما خطوط اور احتیاطی تدابیر سے متعلق جانکاری عام کرنے میں اُن کے کردار کی اہمیت پر روشنی ڈالی ۔ اپنے خطبے میں لیفٹیننٹ گورنر نے کووڈ وباء کی موثر روکتھام کیلئے 4  اہم پہلوؤں بشمول ٹیسٹنگ ، طبی نظام کی تیاری ، بیماری کی روکتھام کیلئے مثبت معاملات پر نظر رکھنے اور انفرادی برتاؤ پر روشنی ڈالی ۔ یہ چار پہلو رُکنی نیتی آیوگ ڈاکٹر وی کے کول نے اجاگر کئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ یہ چاروں پہلو کیسے اس بیماری کے خلاف فیصلہ کُن لڑائی میں معاون ثابت ہو سکتے ہیں ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے مذہبی قاعدین کو لوگوں کو قوتِ مدافت بڑھانے کیلئے باقاعدہ ورزش کرنے ، مقوی غذا کھانے اور آیورویدک اور یونانی ادویات استعمال کرنے کیلئے بھی کہا ۔ مذہبی قاعدین نے یو ٹی انتظامیہ کو یقین دلایا کہ وہ جاری وباء کے خلاف لڑائی میں انہیں بھر پور تعاون فراہم کریں گے ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے انہیں یقین دلایا کہ اُن کی جانب سے پیش کی گئی تجاویز پر غور کیا جائے گا ۔ انہوں نے سبھی قاعدین کو جے کے صحت سکیم سے متعلق لوگوں میں بیداری عام کرنے کیلئے کہا جس کے تحت تمام کنبے ہر سال پانچ لاکھ روپے کے صحت  بیمے کے حقدار ہوں گے ۔ اس موقعہ پر نیتی آیوگ کے رُکن ڈاکٹر وی کے پال نے بھی کووڈ وباء کی روکتھام سے متعلق ایک مفصل پرذنٹیشن پیش کی ۔ انہوں نے ماسک پہننے ، ہاتھوں کو صابن اور پانی سے دھونے یا ہینڈ سینی ٹائیزر استعمال کرنے پر زور دیا ۔ 

تازہ ترین