توہین آمیز خاکوں کی اشاعت کے خلاف ایچ ایم ٹی میں احتجاج

تاریخ    15 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


یو این آئی
سرینگر//فرانسیسی جریدے چارلی ایبڈو کی طرف سے پیغمبر اسلام ؐکی شان میں توہین آمیز خاکے شائع کرنے کے خلاف سوموار کوایچ ایم ٹی میں درجنوں لوگوں نے کورونا احتیاطی تدابیر پر عمل کرتے ہوئے احتجاج درج کیا۔احتجاجیوں کی اکثریت سیاہ لباس میں ملبوس تھی اور فضا 'لبیک یا رسول اللہ' کے نعروں سے گونج رہی تھی۔ احتجاجی چارلی ایبڈو جریدے پر پابندی عائد کرنے کا مطالبہ کر رہے تھے۔اس موقع پر ایک احتجاجی نے کہا: 'ہم فرانسیسی جریدے میں شائع توہین آمیز خاکوں کے خلاف بر سر احتجاج ہیں تاکہ اظہار عقیدت کیا جائے اور گستاخ رسولؐ کے خلاف نفرت کا اظہار کیا جا سکے یہی ہمارے ایمان کی بنیاد ہے'۔موصوف نے کہا کہ مسلمانوں کو آپسی نجی اختلافات کو نظر انداز کر کے اپنے اصلی دشمن کے خلاف صف آرا ہونا چاہئے۔شبیر حسین نامی ایک احتجاجی نے کہا کہ پیغمبر اسلامؐ کی توہین کرنے والے میگزین پر پابندی عائد ہونی چاہئے اور اس کے لئے دنیا بھر کے مسلمانوں کو ایک ہو جانا چاہئے۔قابل ذکر ہے کہ فرانسیسی ہفتہ وارمیگزین چارلی ایبڈو نے ایک بار پھر پیغمبر اسلام ؐکی شان میں توہین آمیز خاکے شائع کئے ہیں یہ خاکے ہالینڈ کے ایک اخبار میں بھی  شائع کئے گئے تھے۔سات جنوری سال 2015 میں یہ توہین آمیز خاکے شائع کرنے پر چارلی ایبڈو میگزین پر حملہ ہوا تھا جس میں بارہ افراد ہلاک ہوئے تھے ان میں یہ خاکے بنانے والا مشہور کارٹونسٹ بھی شامل تھا۔یو این آئی 
 

تازہ ترین