مزید خبرں

تاریخ    15 اگست 2020 (00 : 02 AM)   


نیوز ڈیسک

انتہا پسندی ناقابل قبول :اپنی پارٹی |  مہلوک پولیس اہلکاروں کے لواحقین سے اظہار یکجہتی

سرینگر//’ اپنی پارٹی‘ نے جمعہ کے روز نوگام میں جنگجویانہ حملہ میں دو پولیس اہلکاروں اشفاق احمد اور فیاض احمد کی ہلاکت اور متعدد کے زخمی ہونے کے واقعہ کی کڑے لفظوں میں مذمت کی ہے۔ ایک بیان میں پارٹی ترجمان نے حملے کو غیر انسانی حرکت قرار دیتے ہوئے کہاکہ تشدد کوئی حل نہیں بلکہ ایک بہت بڑی رکاوٹ ہے اور اِس سے نفرت پھیلتی ہے ۔ترجمان نے مزید کہا کہ کسی بھی مہذب معاشرے میں سیاسی ، نظریاتی یا مذہبی محرکات سے قطع نظرتشدد وانتہا پسندی ناقابل قبول ہے۔ترجمان نے کہا کہ یہ انتہائی بدقسمتی اور دل دہلادینے والی بات ہے کہ کشمیر بے حس تشدد کے ہاتھوں قیمتی جانیں گنوا رہا ہے جس نے صرف پچھلے کئی سالوں میں عوام کی مشکلات میں کئی گناہ اضافہ کیا ہے۔حملہ میں مارے گئے اہلکاروں کے اہل خانہ سے اظہارِ یکجہتی اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کی دعا کرتے ہوئے پارٹی نے کہاکہ حملہ آوروں کو انسانی جانوں کی کوئی قدر نہیں اور وہ ایسے بدقسمت خاندانوں کے سانحات میں اضافہ کرتے جارہے ہیں جس کی ہرکسی کو مذمت کرنی چاہئے۔
 
 

نوگام حملہ احمقانہ حرکت  کانگریس 

سرینگر//جموں کشمیرپردیش کانگریس کمیٹی نے نوگام حملہ کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے شرمناک اور احمقانہ قراردیا ہے۔ایک بیان میں پارٹی نے اس حملہ میں پولیس اہلکاروں کی ہلاکت پر افسوس کااظہار کرتے ہوئے ملوثین کو کیفرکردار پہنچانے کا بھی مطالبہ کیا۔پارٹی ترجمان نے نوگام حملہ جس میں اشفاق ایوب اورفیاض احمدنامی دواہلکارمارے گئے،کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اس حملہ کو احمقانہ،شرمناک اورغیراانسانی قراردیا۔ترجمان نے اہلکاروں کی ہلاکت پرصدمے کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ تشدداور ہلاکتیں کسی مسئلہ کاحل نہیں ہوسکتے۔انہوں نے کہا کہ جنگجو حملوں کی وجہ سے کشمیر میں خون بہہ رہا ہے،جوباعث تشویش ہے۔پارٹی نے مہلوک اہلکاروں کے لواحقین سے ہمدردی اوریکجہتی کااظہار کیااوراس حملے میں زخمی اہلکار کی فوری صحت یابی کی دعا کی۔
 
 
 
 

۔18،20،اور22اگست کومتعدد علاقوں میں بجلی سپلائی متاثر رہے گی

سرینگر//پاور کنڑولر کشمیر کی اطلاع کے مطابق ضروری مرمت کے پیش نظر 33کے وی پلوامہ لیتہ پورہ ،ریسوینگ اسٹیشن لیتہ پورہ ،33کے وی پانپورہ جے کے سیمنٹس لائیناورریسوینگ اسٹیشن کھریو کے تحت آنے والے علاقوں میں 18،20،اور22اگست کو صبح9بجے سے شام5بجے تک بجلی سپلائی متاثر رہے گی ۔اسی طرح 132گرڈ اسٹیشن میر بازار میں ضروری مرمت کے پیش نظر 132کے وی میر بازار کولگام اور میر بازار ونپوہ کے تحت آنے والے علاقوں میں 17اگست کو مرحلہ وار بنیاد پر بجلی سپلائی متاثر رہے گی ۔اسی تناطر میں میر بازار مٹن ،میر بازار لیسر اور جنوبی کشمیر کے متعدد علاقوں میں وقفے وقفے سے مرحلہ وار بنیادوں پر بجلی سپلائی متاثر رہے گی۔
 
 
 

’مسئلہ کشمیر حل ہونے تک ہندو پاک کی آزادی نا مکمل ‘

یواین آئی
سری نگر// نیشنل کانفرنس کے معاون جنرل سکریٹری ڈاکٹر شیخ مصطفی کمال نے کہا ہے کہ جب تک مسئلہ کشمیر حل نہیں ہوگا تب تک ہندوستان اور پاکستان کی آزادی نا مکمل ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر ہندوستان اور پاکستان کی دوستی کے درمیان بہت بڑی رکاوٹ ہے اور برصغیر کے امن کے لئے بھی ایک آتش فشان پہاڑ کی حیثیت رکھتا ہے۔ موصوف معاون جنرل سکریٹری نے بتایا،’’ہندوستان اور پاکستان کی آزادی تب تک نامکمل ہے جب تک نہ مسئلہ کشمیر کا پائیدار حل تلاش کیا جائے۔ یہ مسئلہ دونوں ممالک کی دوستی کے درمیان بہت بڑی رکاوٹ ہے اور برصغیر کے امن کے لئے بھی ایک آتش فشان پہاڑ کی حیثیت رکھتا ہے‘‘۔انہوں نے دونوں ممالک کے لئے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ’’مرحوم شیخ محمد عبداللہ نے ہندوستان اور پاکستان کے درمیان پل کا کام کیا اور مستحکم ہندوستان اور مضبوط پاکستان کا راز مسئلہ کشمیر کے حل میں ہی مضمر ہے‘‘۔ کشمیری تاجروں، دکانداروں ، مزدوروں کی مالی بد حالی پر اظہار تشویش کرتے ہوئے مصطفی کمال نے کہا،’’ایک طرف کورونا وبا کے پیش نظر عائد لاک ڈاؤن نے لوگوں کی کمر توڑ کے رکھ دی ہے تو دوسری طرف مودی سرکار کورونا کی آڑ میں ہی کشمیریوں کو اپنے جمہوری و آئینی حقوق سے محروم رکھ رہی ہے‘‘۔انہوں نے کہا کہ اگر مرحوم مفتی سعید اور ان کی صاحبزادی نے فرقہ پرست جماعت بی جے پی کے ساتھ ہاتھ نہ ملایا ہوتا تو آج کشمیری، ڈوگرہ اور لداخی لوگ اس مصیبت میں مبتلا نہیں ہوتے۔شیخ مصطفی کمال نے کہا کہ ملک کے موجودہ حکمرانوں کو کشمیر کے تئیں سخت پالیسی کو ترک کرنا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ مودی حکومت کی طرف سے جموں وکشمیر کی خصوصی حیثیت کی تنسیخ سے ملک کی جمہوری شبیہ داغدار ہوئی ہے اور بین الاقوامی سطح پر بھی اس اقدام کی مذمت کی جارہی ہے۔موصوف معاون جنرل سکریٹری نے کہا کہ کشمیری عوام کے ساتھ کی جارہی زیادتی کو دنیا اور ملک کے عوام سے زیادہ دیر تک چھپایا نہیں جاسکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی اور نوجوانوں کی نسل کشی برابر جاری ہے۔ 
 
 
 
 
 
 
 
 

پاکستان کاکشمیر کی حمایت جاری رکھنے کااعلان

سرینگر //  پاکستان نے ایک مرتبہ پھر کشمیری عوام کی منصفانہ حق خودارادیت جدوجہد کی حمایت جاری رکھنے کااعلان کیا ہے۔سی این آئی کے مطابق پاکستان کے یوم آزادی کے موقعہ پرصدرپاکستان عارف علوی نے کہا کہ یوم آزادی کے موقعہ پر ہمیں جموں وکشمیرکے اپنے بھائیو ں اور بہنوں کو فراموش نہیں کرنا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ میں جموں کشمیرکے غیورعوام کو یقین دلاتا ہوں کہ پاکستان ان کے منصفانہ حق خودارادیت کی جدوجہدکی حمایت جاری رکھے گاجس کا وعدہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں میں ان سے کیا گیاہے۔پاکستانی قوم کو مبارکباد دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وہ ملک کو درپیش چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کیلئے متحدرہیں ۔ پاکستانی صدر نے کہاکہ یہ دن ہمیں ان عظیم قربانیوں کی یاددلاتاہے جو قائد اعظم محمد علی جناح کی متحرک قیادت میں ہمارے آبائو اجداد نے دیں۔ 
 
 

بونیار میں 3پستول اور 15ہتھ گولے برآمد کرنے کا دعویٰ

اوڑی //ظفراقبال//بونیار بورہ مولہ میں پولیس اور فوج نے تین پستول ،پندرہ ہتھ گولے اوردیگر اسلحہ برآمدکیا ہے ۔پولیس ذرائع کے مطابق پولیس  اور فوج نے ایک مشترکہ کارروائی کے دوران  ایک مصدقہ اطلا ع ملنے کے بعدلچھی پورہ میں تری نارئین نالہ کے پاس تین پستول،اے کے بندوق کی73گولیاں،15ہتھ گولے اور پاکستانی نقدی برآمد کی۔ 
 
 
 

۔ 3,11,901 درماندہ شہریوں کی واپسی

 جموں//حکومت جموں وکشمیر نے کووِڈلاک ڈاون کے سبب ملک کے مختلف حصوں میں درماندہ جموںوکشمیر کے     3,11,901شہریوں کو براستہ لکھن پور اور کووِڈخصوصی ریل گاڑیوں اور بسوں کے ذریعے تمام رہنما خطوط اور ایس او پیز پر عمل پیرا رہ کر یوٹی واپس لایا۔حکومت نے لکھن پور کے ذریعے اَب تک بیرون ملک سے906مسافرو ں کویوٹی واپس لایا ہے ۔ اِس طرح جموںوکشمیر حکومت نے اب تک 114کووِڈ خصوصی ریل گاڑیوں اور براستہ لکھن پور بسو ںکے کاروان میں اَب تک بیرون یوٹی درماندہ 3,11,901شہریو ں کو کووڈِ۔19 وَبا سے متعلق تمام احتیاطی تدابیر پرعمل کرکے واپس لایا۔تفصیلات کے مطابق 13اگست سے 14 اگست 2020ء کی صبح تک لکھن پور کے راستے سے1746  درماندہ مسافریوٹی میں داخل ہوئے جبکہ962مسافر جمعہ کو 93ویں دلّی کووِڈ خصوصی ریل گاڑی سے جموں پہنچے ۔اَب تک 93ریل گاڑیوں  میںیوٹی کے مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے80,502درماندہ مسافر جموں پہنچے جبکہ 21خصوصی ریل گاڑیوں سے 15,696مسافر اودھمپور ریلوے سٹیشن پر اُترے۔
 
 
 

بٹہ مالومیںپولیس افسر رشوت لیتے ہوئے گرفتار

سرینگر// انسداد کورپشن ادارے’’انٹی کورپشن بیورو‘‘ نے پولیس تھانہ بٹہ مالو کے ایک پولیس افسر کو فلمی انداز میںٹرک ڈرائیور سے رشوت لیتے ہوئے رنگے ہاتھوں گرفتار کیا۔پولیس بیان کے مطابق ایک ٹرک ڈرائیور نے اپنی گاڑی بٹہ مالو کے نزدیک کھڑی کی تھی،جبکہ پولیس تھانہ بٹہ مالو سے منسلک ایک سب انسپکٹر نے ٹرک ڈرائیور سے گاڑی کے دستاویزات طلب کئے۔بیان میں بتایا گیاکہ شکایت گزار نے متعلقہ پولیس افسر کو دستاویزات فراہم کئے تاہم سب انسپکٹر نے دستاویزات کی واپسی کیلئے3ہزار روپے رشوت طلب کیا۔انسداد بدعنوانی کے اس ادارے کے بیان میں کہا گیا کہ اس دوران شکایت گزار نے انٹی کورپشن بیورو سرینگر سے رابطہ قائم کیا،اور اس سلسلے میں ایک ایک تحریری درخواست پیش کی۔اس ضمن میں پولیس تھانہ انٹی کورپشن بیورو میں ایک کیس زیر نمبر9/2020زیر دفعات7و13 انسداد کورپشن ایکٹ اور 161 تعزیرات ہند درج کیا گیا۔ بیان میںبتایا گیا کہ اس سلسلے میں جال بچھایا گیا اور پولیس تھانہ بٹہ مالو سے منسلک سب انسپکٹر کو دستاویازت کی حصولیابی کے عوض کمان پوست بٹہ مالو کے نزدیک رنگے ہاتھوں3ہزار روپے کی رشوت لیتے ہوئے دھر لیا گیا۔ ریمانڈ کے بعد مذکورہ پولیس سب انسپکٹر کو پولیس تھانہ شہد گنج منتقل کیا گیا،جبکہ اس سلسلے میں مزید تحقیقات جاری ہے۔
 
 
 
 

گھریلو پروازو ں کا 82واںدِن | 2146مسافر سرینگرپہنچے

 جموں//جموں وکشمیر یونین ٹریٹری میں گھریلو پروازوں کے دوبار ہ چالوہونے کے82ویں دِن 2,920مسافروں کو لے کر 25پروازیں جموں اور سری نگر ہوائی اڈوں پر جمعہ کو اُتریں ۔ 774مسافروں سمیت11کمرشل پروازیں جموں ہوائی اڈے اور 2146مسافروں کو لے کر14 پروازیں  سری نگر کے ہوائی اڈے پر اتریں۔واضح رہے کہ25 مئی سے اب تک جموں ایئر پورٹ پر 655گھریلو پروازیں اتری ہیں جن میں    51,554مسافروں نے سفر کیا ۔ اسی طرح سری نگر ائیر پورٹ پر1,046گھریلو پروازیںاتریں ہیں جن میں  1, 36,518مسافروں نے سفر کیا ہے۔نیز جموں وکشمیر حکومت نے عالمی وَبا کے پیش نظر اَب تک متعدد ممالک سے تقریباً3,676مسافروں کو خصوصی اِنخلأ پروازوں کے ذریعے جموںوکشمیر یوٹی میں واپس لایا ہے۔ہوائی اڈے پر اُترتے ہی تمام مسافروں کا کووِڈ۔19ٹیسٹ کیا گیا اوردونوں ہوائی اڈوں سے اَپنے منازل کی طرف تما م احتیاطی تدابیر پر عمل پیر ا رہ کر روانہ کئے گئے۔حکومت نے ہوائی پروازوں کے ذریعے یوٹی میں وارِد ہونے والے تمام مسافروں کی آمد سکریننگ نمونے لینے اور قرنطین مراکز کی طرف لے جانے کے لئے معقول ٹرانسپورٹ اِنتظامات کئے ہیں اور اِس دوران مرکزی  شہری ہوا بازی اور صحت و خاندانی بہبود کی وزارتوں کی جانب سے مقرر کئے گئے رہنما خطوط اور ایس او پیز کا خاص خیال رکھا جارہا ہے۔
 
 
 

 درجہ چہارم کی اَسامیاں | 2,72,900درخواستیں موصول

 جموں// 14اگست صبح تک 5,17,600اُمید واروں نے بھرتی بورڈ کے آن لائن پورٹل پر رجسٹریشن کی جبکہ2,72,900    اُمید واروں نے درجہ چہارم اَسامیوں کے آن لائن درخواست پیش کرنے کا عمل مکمل کیا۔بورڈ نے جے کے ایس ایس بی کے آن لائن ایپلی کیشن پورٹل پر آن لائن درخواستیں جمع کروانے کے لئے 10 جولائی 2020 ء کو شروع ہونے کی تاریخ مقرر کی تھی ۔نیز اکاؤنٹس اسسٹنٹ کی اَسامیوں کے لئے 85,100درخواستیں آن لائن جمع کروائی گئیںجبکہ یہ بات نوٹ کی گئی کہ کل 87,000منفرد اَفرادنے بورڈ کے آن لائن ایپلی کیشن پورٹل پررَسائی حاصل کی۔جموںوکشمیر سروس سلیکشن بورڈ نے درجہ چہارم اَسامیوںکے لئے جموںوکشمیر بھرتی ( خصوصی بھرتی) قواعد 2020 ء کے تحت مختلف محکموںمیں ضلع صوبائی یونین ٹریٹری کیڈر کے لئے 8575 درجہ چہارم اَسامیوں کو اِشتہاری نوٹیفکیشن نمبر 1آف 2020 ،بتاریخ26.06.2020مشتہر کیا ہے۔بورڈ نے سری نگر اور جموں میں دو ہیلپ لائن اُمید واروں کی سہولیت کے لئے شروع کی ہے اور اگر کسی فرد کو درخواست پیش کرنے میں تکنیکی یاکسی وجہ سے مشکل پیش آرہی ہو توو ہ اِس ضمن میں مزید معلومات اور رہنمائی کے لئے ssbjkgrievance@gmail.comپرمیل بھیج سکتا ہے۔
 
 
 

جہلم کے کناروں پر آباد کنبوں کوہٹانے کی مہم | نیشنل کانفرنس کااظہار برہمی

سرینگر// نیشنل کانفرنس نے جہلم کے کناروں پر آباد کنبوںکو غیر منصوبہ بند طریقے پرہٹانے کی مہم پر سخت برہمی اور تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ اقدام اس طبقہ کو بے یارومدد گار اور بدحالی کے بھنور میں دھکیل دے گا۔ پارٹی کے ترجمان نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ اس سے بڑی بدقسمتی کی کیا بات ہوسکتی ہے کہ حکومت نے بنا کسی بازآبادکاری منصوبہ کے بے دخلی کی مہم شروع کردی ہے، جو انتہائی تشویشناک اور افسوسناک ہے۔ انہوں نے اس بات حیرانگی کا اظہار کیا کہ انتظامیہ نے سمپورہ سے سمبل تک جہلم کے کناروں پر آباد لوگوں کو بے دخل کرنے کی مہم شروع کی ہے لیکن ان لوگوں کی بازآبادکاری یا متبادل جگہوں پرانہیں پلاٹ فراہم کرنے کا کوئی بھی منصوبہ نہیں بنایا گیا ہے۔ یہ اقدام صریحاً عوام کُش اور متاثرین کو کھلے آسمان تلے لانے کا مذموم منصوبہ ہے۔ ترجمان نے کہا کہ ان کنبوں میں بیشتر ایسے ہیں، جو خط افلاس سے نیچے زندگی بسر کرتے ہیں اور اپنا روزگار دریائے جہلم سے ہی حاصل کرتے ہیں۔ اگر ان آبادیوں کو بنا کسی بازآبادکاری منصوبہ کے اس طرح بے دخل کیا گیا تو یہ لوگ کہاں جائیں گے ،اپنا روزگار کہاں سے حاصل کریں گے اور اپنے کنبوں کی کفالت کیسے کریں گے؟ترجمان نے کہا کہ انتظامیہ کو ایسے کسی بھی اقدام سے پہلے ایک وسیع بازآبادکاری منصوبہ تیار کرنا چاہئے تاکہ متاثرین کو دوسری جگہ منتقل کیا جاسکے اور اُن کے روزگار پر بھی اثر نہ پڑے۔ 
 
 
 

تازہ ترین