اجودھیا میں مسجد کی تعمیر کیلئے پیش رفت شروع | سنی وقف بورڈ کی لوگوں سے مالی تعاون کی اپیل

تاریخ    15 اگست 2020 (00 : 02 AM)   


یو این آئی
لکھنؤ// اجودھیا میں رام مندر کی تعمیر کے لئے 5اگست کو بھومی پوجن اور سنگ بنیاد رکھے جانے کے بعد اترپردیش سنی سنٹرل وقف بورڈ نے بابری مسجد کی شہادت کے بعد کورٹ کے حکم پر ریاستی حکومت کی جانب سے فراہم کی گئی پانچ ایکڑ زمین پر مسجد و دیگر تعمیرات کے لئے پیش رفت کا آغاز کردیا ہے ۔بورڈ نے پانچ ایکڑ زمین پر مسجد،اسپتال اور انڈو ۔اسلامک کلچر سنٹر بنانے کے لئے عوام سے تعاون کی اپیل کی ہے ۔اس ضمن میں سنی وقف بورڈ کی جانب سے تشکیل شدہ انڈو۔اسلامک کلچر فاونڈیشن کے نامی ٹرسٹ کا دو اکاونٹ کھولا جائے گا۔ جس میں سے ایک کا استعمال صرف مسجد کی تعمیر کے لئے رقم یکجا کرنے کے لئے کیا جائے گا۔جبکہ دوسرے کا استعمال اسپتال اور ریسرچ سنٹر کی تعمیر کے لئے رقم کی حصولیابی کے لئے کیا جائے گا۔ٹرسٹ کے ترجمان اطہر حسین نے جمعہ کو بتایا کہ ٹرسٹ کا لکھنؤ میں ایک نیا آفس ہوگا۔اس کے لئے کاروائی کا آغاز کردیا گیا ہے اور 25اگست تک پورا ہوجائے گا۔انہوں نے مزید مطلع کیا کہ اکٹھا ہونے والی رقم میں شفافیت برتنے اور اس کی تمام تفصیلات آن لائن فراہم کرنے کے لئے ایک ویب پورٹل بھی بنایا جائے گا۔اس کام کے لئے ایک کمپنی کا انتخاب کیا جاچکا ہے اور iicf.comنام سے ویب پورٹل کے لئے ڈومین خریدا جاچکا ہے ۔اس سے قبل سنی سنٹرل وقف بورڈ نے اجودھیا میں 5ایکڑ زمین پر مسجد کی تعمیر کے لئے ایک ٹرسٹ بنانے کا اعلان کیا تھا۔
 

تازہ ترین