شہر میں لاک ڈائون بندشیں برقرار | 15اگست کے پیش نظر تلاشی کارروائیاں تیز

تاریخ    13 اگست 2020 (00 : 02 AM)   
(عکاسی: مبشرخان)

بلال فرقانی
سرینگر/لاک ڈائون کے بیچ15اگست کی مناسبت سے سیکورٹی بندوبست کو مزید سخت کیا گیا ہے جبکہ نجی گاڑیوں اور راہگیروں کی تلاشیوں کا سلسلہ بھی دراز کیا گیا ہے اور بدھ کو شہر میںہاوس بوٹوں کی تلاشیاں بھی لی گئیں۔ سونہ وارمیں کرکٹ اسٹیڈیم کے گرد نواح علاقو ں میں اضافی فورسز اور پولیس اہلکاروں کو تعینات کیا گیا ہے جبکہ اہم پلوں کو بھی خار دار تاروں سے یک طرفہ بند رکھا گیا ہے۔15اگست سے 2روز قبل مرکزی تقریب گاہ کو فورسز نے اپنی تحویل میں لیکر حسب روایت تلاشی کارروائی عمل میںلائی گئی ۔شہر میں ناکہ چیکنگ عمل میں تیزی لائی گئی اورخفیہ کیمروں کے ذریعے مشکوک افراد پر کھڑی نگاہ رکھی جارہی ہے ۔شہر کے سبھی داخلہ و خارجی مراکزپر فورسز کی پارٹیاں تعینات کرنے کے علاوہ مخصوص ناکے لگائے گئے ہیں اوریہاں گزر نے والی گاڑیوں اور موٹر سائیکل سواروں سے پوچھ تاچھ کرنے کے علاوہ چیکنگ بھی کی جارہی ہے ۔اس دوران فورسز نے بدھ کو دریائے جہلم میں واقع ہائوس بوٹوں کی تلاشی لی ۔ فٹ برج اور اسکے مضافاتی بنڈ علاقے میں فورسز اہلکار نمودار ہوئے ،جنہوں نے یہاں دریائے جہلم کے کنارے پر واقع ہائوس بوٹوں میں داخل ہو کر ان میں رہائش مکینوں سے پوچھ تاچھ کی اور شناختی کارڈ چیک کئے ۔تلاشی کا عمل یہ سلسلہ ایک گھنٹے تک جاری رہا ۔سیول لائنز میں لالچوک اور اس کے ملحقہ بازار مقفل ہیںجبکہ گھنٹہ گھر اور امیراکدل کو خاردار تاروں کے ساتھ بدستور سیل رکھا گیا۔شہر خاص میں بھی دکا نیں بند رہیں ۔شہر خاص میں بھی پولیس نے کویڈ۔19گائیڈ لائنز کے تحت نافذ لاک ڈائون کے اصولوں کو سختی کیساتھ نافذ کیا ۔صبح سویرے شہر خاص میں محلہ سطح کی دن بھر کھلی رہتی تھیں ،تاہم بدھ کو یہ دکانیں بھی بند کرائی گئیں ۔سڑکوں سے پبلک ٹرانسپورٹ غائب رہا ۔تاہم چند ایک روٹوں پر ٹاٹا مسافر گاڑیاں چلتی ہوئی دیکھی گئیں ۔
 

تازہ ترین