تازہ ترین

پیپلز کانفرنس کے بیان پر نیشنل کانفرنس سیخ پا

مشترکہ پلیٹ فارم کے قیام کو سبوتاژ کرنے کا الزام

تاریخ    7 اگست 2020 (00 : 02 AM)   


سرینگر//پیپلز کانفرنس کی طرف سے نیشنل کانفرنس اور کُل جماعتی اجلاس کیخلاف زہر افشائی پر شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے نیشنل کانفرنس ترجمان نے کہا ہے کہ صاف ظاہر ہورہا ہے کہ نئی دلی میں بیٹھے پیپلز کانفرنس کے آقائوں نے انہیں جموں وکشمیر میں خصوصی پوزیشن کی بحالی کی جدوجہد کیلئے تمام سیاسی جماعتوں کے مشترکہ پلیٹ فارم کے قیام کو سبوتاژ کرنے کا کام سونپ دیا ہے۔ایک بیان میں ترجمان نے کہا کہ نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے جموں وکشمیر کی سیاسی صورتحال اور دفعہ 370اور 35اے کی بحالی کیلئے سیاسی جماعتوں کے مشترکہ پلیٹ فارم اور ریاست کو درپیش دیگر چیلنجوں سے نمٹنے کیلئے لائحہ عمل مرتب کرنے کیلئے کُل جماعتی اجلاس کیلئے تمام سیاسی جماعتوں کو مدعو کیا تھا لیکن سخت ترین بندشیں اور گپکار روڑ سیل کرکے اجلاس کے انعقاد کو ناممکن بنایا گیا جس سے نئی دلی کی نیت عیاں ہوگئی اور اب پیپلز کانفرنس کو ایسے کسی بھی مشترکہ پلیٹ فارم کو سبوتاژ کرنے کا کام سونپ دیا گیا ہے، جس کا ثبوت مذکورہ جماعت کے لیڈر عبدلغنی وکیل کا حالیہ بیان ہے جس میں نیشنل کانفرنس پر بے بنیاد الزامات عائد کرکے کسی بھی مشترکہ پلیٹ فارم میں شمولیت سے انکار کیا گیا ہے۔ ترجمان نے کہا کہ جموں وکشمیر میں تباہی اور بربادی کے وہی ذمہ دار ہیں جنہوں نے پہلے نوجوانوں کو آزادی کے نغمے سناکر اُن کے ہاتھوں میں بندوق تھما دی  اور بعد میں خود آر ایس ایس اور بھاجپا کی گود میں بیٹھ گئے اور جموں وکشمیر کی خصوصی پوزیشن کو ختم کرنے میں برابر کردار ادا کیا۔ ترجمان نے کہا کہ پیپلز کانفرنس نے گزشتہ ماہ ایک بیان میں خصوصی پوزیشن کی بحالی کیلئے مشترکہ پلیٹ فارم کے قیام کیلئے نیشنل کانفرنس کو درس دینے کی کوشش کی تھی لیکن آج اچانک پارٹی کے مؤقف میں تبدیلی آگئی ہے۔ صاف ظاہر ہوتا ہے کہ نئی دلی میں بیٹھے بڑے بھائی، چھوٹے بھائی یا کسی اور آقاء نے مشترکہ پلیٹ فارم کے قیام کو سبوتاژ کرنے کا کام سونپ دیا ہے۔ ترجمان نے کہا کہ پیپلز کانفرنس کی طرف سے جو لیڈر عبدالغنی وکیل نیشنل کانفرنس کیخلاف زہر افشائی کرتے ہیں، کانگریس سے نکالے جانے کے بعد انہوں نے نیشنل کانفرنس میں شمولیت اختیار کرنے کی کافی کوشش کی لیکن ان کے کردار اور عوامی ساکھ کو دیکھتے ہوئے ان کی درخواست کئی بار رد کی گئی ۔ ترجمان نے کہاکہ وکیل نے زندگی میں کوئی بھی الیکشن نہیں جیتا اوران کی زمینی سطی پر بچی کچھی عوامی ساکھ بھی ختم ہوگئی ہے اور ان کا کام اب صرف اور صرف نیشنل کانفرنس کیخلاف زہر افشائی کرکے خبروں میں رہنا ہے۔