’کورونا ٹیسٹ کے بعد ہی آئی پی ایل کھیل سکیں گے کھلاڑی‘

تاریخ    6 اگست 2020 (00 : 03 AM)   


نئی دہلی/ انڈین پریمیر لیگ (آئی پی ایل) نے متحدہ عرب امارات (یو اے ای) میں 19 ستمبر سے 10 نومبر تک ہونے والے آئی پی ایل کے 13 ویں سیشن میں کھلاڑیوں اور عملے کوسخت جانچ کے عمل سے گزرنا ہوگا جنہیں یو اے ای میں مشق شروع کرنے سے قبل کم از کم چار ٹیسٹ پاس کرنے ہونگے اور ایک ہفتہ کورنٹائن ہونا ہوگا۔ آئی پی ایل نے جانچ اور معیاری آپریٹنگ طریقہ کار (ایس او پی) کے عمل کا ڈرافٹ دستاویز فرنچائزی ٹیموں کے ساتھ شیئر کیا ہے ۔ایس او پی میں بتایا گیا ہے کہ 53 دن کے اس ٹورنامینٹ کے دوران سفر، قیام اور ٹریننگ کے لئے کیا کرنا ہوگا اور کیانہیں کرناہوگا۔ اس ٹورنامینٹ کے میچ دبئی، ابو ظہبی اور شارجہ میں کھیلے جائیں گے ۔ بی سی سی آئی نے ابھی ٹورنامنٹ شیڈول کا اعلان نہیں کیا ہے اور اسے یو اے ای میں ٹورنامنٹ کے انعقاد کے لئے حکومت ہند سے باضابطہ منظوری کا انتظار ہے ۔ایسا سمجھا جاتا ہے کہ ٹیموں کو کم سے کم عملے کے ساتھ سفر کرنے کو کہا گیا ہے اور وہ 20 اگست کے بعد ہی سفر کرسکتی ہیں۔ ایس او پی میں آئی پی ایل نے ٹیم کے ممبروں کے اہل خانہ کو متحدہ عرب امارات جانے کی اجازت دے دی ہے لیکن انہیں حیاتیاتی حفاظتی ماحول میں رہنا ہوگا حالانکہ اس معاملے میں حتمی فیصلہ ہر فرنچائزی کا ہوگا۔ آئی پی ایل نے یہ ضروری کردیا ہے کہ ہر ٹیم کے ساتھ ایک ڈاکٹرہونا چاہئے تاکہ خطرے کوکم رکھنے میں فرنچائزی کومدد مل سکے اوروہ کوروناکے تیئں ٹیم کو آگاہ رکھ سکے ۔ایس او پی کے مطابق آئی پی ایل نے سبھی فرنچائزی سے کہا ہے کہ یو اے ای روانگی سے قبل سبھی ممبران کے دو ٹیسٹ ہونے چاہئیں۔ یہ دونوں ٹیسٹ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) کے مطابق 24 گھنٹوں کے وقفے کے دوران کرانے ہوں گے ۔ یہ ٹیسٹ اس شہر میں کرانے ہونگے جہاں کھلاڑی اور عملہ متحدہ عرب امارات کی پرواز پکڑنے سے قبل جمع ہونگے ۔ دوسرے ٹیسٹ کی توثیق کم از کم چار دن یعنی 96 گھنٹے ہونی چاہئے جس میں یو اے ای پہنچنے کی تاریخ شامل ہے ۔ دونوں ٹیسٹ منفی ہونے پر ہی کھلاڑی اور عملہ پرواز پکڑ سکتا ہے ۔ اگر کوئی انفیکشن سے متاثر ہوتا ہے تو اسے حکومت ہند کی ہدایات کے مطابق لازمی طور پر 14 دن کے لئے قرنطین میں رہنا ہو گا۔ اس کے بعد اس شخص کو دو نئے ٹیسٹ سے گزرنا پڑے گا اور اس کا نتیجہ منفی ہونا چاہئے تب ہی وہ متحدہ عرب امارات میں اپنی ٹیم میں شامل ہو پائے گا۔ٹیم کے متحدہ عرب امارات پہنچنے کے بعد تمام ممبران کا ائیر پورٹ پر ایک اور ٹیسٹ ہوگا جس کے بعد وہ ٹیم کے ہوٹل پہنچیں گے ۔ یہاں سے آئی پی ایل ٹیسٹنگ پروٹوکول شروع ہوجائے گا۔ 

تازہ ترین