تازہ ترین

پاکستان کی طرف سے نئے نقشے کی اجرائی | بھارت نے مسترد کرکے بچگانہ حرکت قراردی

تاریخ    5 اگست 2020 (00 : 03 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر//بھارت نے پاکستان کے نئے سیاسی نقشے کوبچگانہ دعویٰ قرار دیتے مسترد کیا ہے۔ پاکستان نے منگل کو اپنے ملک کا نیا سیاسی نقشہ متعارف کیا،جس میں مکمل جموں کشمیر کے علاوہ گجرات کے کئی حصوں کو اپنا علاقہ قرار دیا گیاہے۔ بھارت نے اس نقشے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس بچگانے دعوئے کا نا ہی کوئی قانونی  اور نا ہی بین الاقوامی جواز ہے۔ وزارت خارجہ نے مختصر بیان میں کہا’’ ہم نے پاکستان کا خود ساختہ سیاسی نقشہ دیکھا ہے،جس کو پاکستانی وزیر اعظم عمران خان نے  منظر عام پر لایا ہے۔یہ غیر منطقی سیاسی سرگرمی ہے جس میں بھارت کی ریاست اور ہمارے مرکزی زیر انتظام والے علاقوں جموں کشمیر اور لداخ پر کمزور دعویٰ کیا گیا ہے‘‘۔ان کا کہنا تھا’’کہ اس بچگانے دعوئے کا نا ہی کوئی قانون جواز ہے اور نا ہی بین الاقوامی جواز ہے،اور حقیقت میں یہ نئی کوشش پاکستان کے عزائم بشمول سرحد پار دہشت گردی کو ظاہر کرتے ہیں‘‘۔اس سے قبلپاکستان کے نئے سرکاری نقشے کو پاکستانی کابینہ نے منظوری دے دی جس میں جموں و کشمیرسمیت دیگر علاقے بھی شامل ہیں۔عمران خان نے کہا ہے کہ ہم دنیا کے سامنے پاکستان کا سیاسی نقشہ لے کر آرہے ہیں جو پاکستان کے عوام کی امنگوں کی ترجمانی کرتا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ’’یہ پاکستان اور کشمیر کے لوگوں کے اصولی مؤقف کی تائید کرتا ہے اور بھارت نے کشمیر میں پچھلے سال 5 اگست کو جو قدم اٹھایا تھا اس کی نفی کرتا ہے‘‘۔انہوں نے کہا’’ پاکستان کا سرکاری نقشہ وہی ہوگا جس کو کابینہ نے منظور کیا ہے‘‘  ۔انہوں نے کہا کہ ’’اسکولوں، کالجوں اور عالمی سطح پر اب پاکستان کا یہ نقشہ ہوگا‘‘۔انہوں نے کہا’’اس نقشے میں سرخ رنگ کی ایک اور لکیر کھینچی گئی ہے جو فوجی حد بندی ہے اور یہ اس سے قبل پہلے ہی ختم ہوجاتی تھی لیکن اب اس کو چین کے ساتھ سرحد سے ملادیا گیا ہے‘‘۔نقشے کی وضاحت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ’’سرکریک میں ہندوستان جو دعویٰ کرتا تھا ہم نے اس نقشے میں اس کی نفی کردی ہے اور ہم نے کہا ہے کہ پاکستان کا مؤقف یہ ہے‘‘۔