ہند پاک مسئلہ کشمیرکے حل کیلئے بامعنی بات چیت شروع کریں :حریت ع | 5اگست2019تاریخ کا افسوسناک باب

تاریخ    4 اگست 2020 (00 : 03 AM)   


نیوز ڈیسک
سری نگر//حریت کانفرنس (ع)نے بھارت اور پاکستان کی حکومتوں پر زوردیا ہے کہ وہ مسئلہ کشمیرکوپر امن طور حل کرنے کیلئے بامعنی بات چیت کاآغازکریں ۔ ایک بیان میںحریت کانفرنس(ع) نے گزشتہ برس5اگست کے مرکزی حکومت کے اقدامات کو یکطرفہ اور اس کے نتیجے میں قوانین کے نفاذ کو جموں کشمیرکی تاریخ کاایک انتہائی افسوسنا ک باب قراردیا ہے۔ بیان میں حریت نے کہا کہ ایک برس گزرچکا ہے اور لاک ڈائون اور گرفتاریوں اورنظر بندیوں کاسلسلہ ہنوزجاری ہے جبکہ ایک بعد ایک کشمیرمخالف اوراکثریت مخالف اقدامات اور قوانین اور آرڈیننسزکوعوام پر مسلط کیا جارہا ہے جو حکومت کی جارحانہ پالیسیوں کاعکاس ہے ۔بیان میں کہاگیا ہے کہ یہاں تک کہ مذہبی تقاریب پر بھی پابندیاں ہنوزجاری ہیں ۔حریت نے کہا کہ جموں کشمیرکی آبادی کے تناسب کو بگاڑنے کی کوششوں کے نتیجے میں اس کی متنازعہ حیثیت اورہیت کوتبدیل نہیں کیاجاسکتااورنہ ہی اس حقیقت سے فرار اختیارکیاجاسکتا ہے کہ مسئلہ کشمیرکا پرامن حل نکالنا ناگزیر ہے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ حکومت کے ان اقدامات سے جموں کشمیرکے تمام خطوں کے لوگوں میں شدیدناراضگی اور مایوسی میں اضافہ ہوا ہے ۔حریت نے اپنے اس موقف کوواضح کیا ہے کہ اس نے روزاول سے ہی مسلہ کشمیرکے عوام کی خواہشات اور امنگوں کے مطابق پرامن حل کی وکالت کی ہے اور وہ اپنے اس موقف پر قائم ہے۔بیان میں بھارت اورپاکستان کی حکومتوں پرزوردیا گیا کہ وہ مسئلہ کشمیرکے پائیداراورپرامن حل کیلئے فوری طوربامعنی بات چیت کاآغازکریں اور اس عمل میں مسئلہ کشمیرکے اہم فریق کشمیری عوام کی شرکت کو یقینی بنائیں۔
 

تازہ ترین