بارشوں سے شاہراہ پر پسیاں اور پتھر گرآئے

پانچ سو سے زائد گاڑیاں درماندہ،بحالی کاکام جاری

تاریخ    22 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


محمد تسکین
بانہال //شدید گرمی کے بیچ ہوئی بارشوں کے نتیجے میں منگل کی دوپہر بعد سے جموں سرینگر شاہراہ پر پنتھیال اور رام بن کے نزدیک شاہراہ پر پتھر گرآئے جس سے ٹریفک کی نقل وحرکت متاثر ہوئی ہے۔ ڈی ایس پی ٹریفک نیشنل ہائی وے رام بن اجے آنند نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ رام بن کے نزدیک بارشوں کی وجہ سے ترشول موڑ پر پتھروں کو صاف کرکے اس حصے کو منگل کی سہہ پہر بعد قابل آمدورفت بنایا گیا ہے تاہم پنتھیال کی پسی میں منگل کی شام تک پتھروں کے گرنے کے جاری سلسلے کی وجہ سے  ٹریفک کی نقل وحرکت فی الحال متاثر تھی اور منگل دیر گئے شام تک بحالی کے امکانات موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شاہراہ کے بند ہونے  کی وجہ سے پنتھیال اور ناشری ٹنل کے درمیان کشمیر کی طرف آنے والی کم از کم 500مال بردار گاڑیاں بشمول ٹرک ٹینکراور پاس پر چلنے والی مسافر گاڑیاں مختلف مقامات پر روک دی گئی ہیں ، جن میں بیرونی ریاستوں سے کشمیر آنے والے مزدوروں سے بھری 40سے زائد بسیں بھی شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پنتھیال کے مقام گرتے پتھروں کی وجہ سے بحالی کا کام متاثر ہو رہا ہے اورمنگل کی شام تک اسے قابل آمدورفت بنائے جانے کیلئے وہ پرْ امید ہیں۔ پیر اور منگل کی درمیانی رات سے محکمہ موسمیات کی پیش گوئی کے مطابق ضلع رام بن کے بانہال سمیت دیگر علاقوں میں بھی بارشوں سے لوگوں کو شدید گرمی سے راحت ملی ہے جبکہ سوکھے کی صورتحال سے دوچار زمینداروں نے بھی راحت کی سانس لی ہے کیونکہ ان بارشوں سے مال مویشی کیلئے سرسبز گھاس ختم ہوچکی تھی اور پچھلے قریب دو ماہ سے بارش نہ ہونے کی وجہ مال مویشی اور کاشت کاری سے وابستہ لوگوں کیلئے حالات دگرگوں ہوکر رہ گئے تھے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ  بارشوں کے نہ ہونے کی وجہ سے پہاڑی علاقوں میں مال مویشی کیلئے میدانوں میں سبز گھاس ختم ہو چکی تھی اور ضلع رام بن کے بیشتر علاقوں میں سب سے زیادہ اگائی جانے والی مکئی کی فصل بھی بری طرح سے متاثر ہوئی ہے تاہم ان بارشوں سے مجموعی طور پر وادی چناب میں سب لوگوں  نے راحت کی سانس لی ہے۔
 

تازہ ترین