تازہ ترین

جنوبی کشمیر کے سری گفوارہ بجبہاڑہ میں جھڑپ ، 2جنگجو جاں بحق

خاتون زخمی،جائے تصادم سے اسلحہ وگولہ بارود برآمد

تاریخ    14 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


عارف بلوچ
سرینگر//جنوبی کشمیر کے سری گفوارہ بجبہاڑہ میں جنگجوئوں اور فوج کے درمیان تصادم آرائی میں ایک مقامی جنگجو سمیت2جنگجو جان بحق ہوئے،جبکہ ایک خاتون زخمی ہوئی۔پولیس ذرائع نے بتایا کہ علاقے  میںجنگجوؤں کے موجود ہونے کی مصدقہ اطلاع موصول ہوتے ہی فوج کی 3آر آر،116 سی آر پی ایف اور پولیس کے سپیشل آپریشن گروپ کی ایک مشترکہ ٹیم نے سری گفوارہ علاقے کا محاصرے کر کے تلاشی آپریشن شروع کر دیا۔ ذرائع نے بتایا کہ آپریشن کے دوران صبح6بجکر25منٹ کے قریب جنگجوئوں اور فوج و فورسز کا آمنا سامنا ہوا،جس کے بعد طرفین میں جھڑپ شروع ہوئی۔ جھڑ پ کے ساتھ ہی حکام نے پورے ضلع میں انٹرنیٹ خدمات معطل کر دی ۔پولیس ذرائع نے بتایا کہ فورسز کی ایک ٹیم ایک مشتبہ جگہ کے نزدیک پہنچی تو وہاں موجود جنگجوئوں نے اس ٹیم میں شامل اہلکاروں پر فائرنگ کی۔طرفین میں دوپہر12بجکر30منٹ تک گولیوں کا تبادلہ جاری رہا،جس کے دوران جیش محمد سے وابستہ2جنگجو جان بحق ہوئے۔ بتایا جاتا ہے کہ بیچ میں جنگجوئوں نے مکان سے باہر آکر زبردست فائرنگ کی تھی،تاہم انہیں جائے تصادم سے فرار ہونے کا موقعہ نہیں ملا۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ جان بحق جنگجوئوں میں ایک غیر ملکی جنگجو تھا،جس کی شناخت ناصر عرف شہباز بھائی ساکن پاکستان کے بطور ہوئی اور وہ ’’ائے زمرے‘‘ میں شامل تھا،تاہم بتایا جاتا ہے کہ دوسرا جنگجو مقامی تھا،مگر اس کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی۔ تصادم آرائی کے دوران ایک مقامی خاتون بھی گولی لگنے سے زخمی ہوئی،جس کی شناخت عارفہ زوجہ ارشاد احمد کے بطور ہوئی۔زخمی خاتون کو فوری طور پر گورنمنٹ میڈیکل کالج اننت ناگ پہنچایا گیا،جہاں پر ڈاکٹروں کے مطابق اس کی حالت خطرے سے باہر ہے۔ فائرنگ کے تبادلے میں ایک مکان بھی تباہ ہوا۔جھڑپ کے ساتھ ہی ضلع اننت ناگ میں موبائیل انٹر نیٹ خدمات بند کر دی گئی جبکہ حساس مقامات پر بندشوں کا بھی نفاذ عمل میں لایا گیا تھا ۔ذرائع کے مطابق جو نہی علاقے میں گولیوں کا تبادلہ رک گیا تو فوج وفورسز نے جھڑپ کے مقام سے دو جنگجوئوں کی نعشیں بر آمد کر لی جبکہ ان کے قبضے سے اسلحہ و گولی بارود بھی ضبط کر لیا گیا ۔ پولیس نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ مصدقہ اطلاع ملنے کے بعد علاقے میں تلاشیوں کا آپریشن کیا گیا۔بیان میں کہا گیا کہ محصور جنگجوئوں کو خود سپردگی کا موقعہ دیا گیا،تاہم انہوں نے اندھا دھند فائرئنگ کی،جس کے نتیجے میں ایک خاتون زخمی ہوئی،جس کو اسپتال منتقل کیا گی اور اس کی حالت مستحکم ہے۔ پولیس بیان میں کہا گیا ’’ جھڑپ میں2جنگجوئوں کو مارا گیا،جن میں سے ایک کی شناخت ناصر عرف شہباز بھائی ساکن پاکستان کے بطور ہوئی اور دوسرے جنگجو کی شناخت کی جا رہی ہے‘‘۔پولیس کا کہنا ہے کہ جائے تصادم سے ہتھیار برآمد کئے گئے۔پولیس کا کہنا ہے کہ کرونا صورتحال کے پیش نظر جان بحق جنگجوئوں کی نعشوں کو آخری رسومات کی ادائیگی کیلئے بارہمولہ روانہ کیا گیا،جہاں پر دیگر قانونی لوازمات بھی پورے کئے جائے گے۔انہوں نے کہا کہ اگر کوئی کنبہ مہلوک جنگجو کو اپنا وارث ہونے کا دعویٰ کرے تو وہ شناخت اور آخری رسومات میں شامل ہونے کیلئے سامنے آئیں۔لوگوں سے اپیل کی گئی ہے کہ جب تک علاقے کو ممکنہ بارودی مواد مکمل طور پر صاف نہیں کیا جاتا، وہ تعاون کریں۔
 

حبہ کدل کااچانک محاصرہ

زیندمحلہ میں گھرگھر تلاشی

سرینگر// شہر کے حبہ کدل علاقے کا پیر کو فورسز اور ٹاسک فورس نے محاصرہ کرکے تلاشیاں لیں۔سی آر پی ایف اور پولیس ٹاسک فورس نے مشترکہ طور پر سرینگر کے حبہ کدل علاقے کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن شروع کیا جس دوران گھر گھر تلاشی لی گئی۔ اچانک محاصرے نے حبہ کدل کی کے لوگوں کو حیرت میں ڈال دیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ آپریشن علاقے میں مشتبہ جنگجوئوں کی ممکنہ نقل و حرکت سے متعلق اطلاعات کے بعد شروع کیا گیا۔پولیس ذرائع نے بتایا کہ علاقے کے زیندار محلے کے کچھ حصوں میں گھر گھرتلاشی لی گئی تاہم اس دوران کہیں پر بھی فورسز کا جنگجوں کے ساتھ کوئی آمنا سامنا نہیں ہوا اور ناہی کسی کی گرفتاری عمل میں لائی گئی۔
 
 
 

شمالی کشمیر میں 35 سے 40 غیر ملکی اور17 مقامی جنگجوسرگرم: پولیس

غلام محمد
 
سوپور// شمالی کشمیرمیں 40کے قریب غیر ملکی جنگجو سرگرم ہیں جبکہ سوپورمیں اتوارکوایک جھڑپ میںلشکر طیبہ کے تین جنگجوئوں جن میں سے دوکاتعلق پاکستان سے تھا، کی ہلاکت سے ایک بڑے خطرے کوٹالاگیاہے۔اس بات کااظہار شمالی کشمیرکے ڈپٹی انسپکٹرجنرل آف پولیس ،محمدسلیمان چودھری نے ذرائع ابلاغ کے نمایندوں سے بات کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ ہم کسی حملے کو خارج ازامکان قرارنہیں دے سکتے ،کیوں کہ مارے گئے جنگجوئوں کے قبضے سے جو ہتھیاراورگولہ بارود برآمد ہواہے ،اُس سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ کسی بڑے حملے کی منصوبہ بندی کررہے تھے۔اُن کی ہلاکت سے ایک بڑے خطرے کو ٹالاگیا۔انہوں نے مزیدکہا کہ انہوں نے ماضی میں بھی ایسے واقعات دیکھے ہیں اور پولیس کسی بھی مشکل کامقابلہ کرنے کیلئے تیار ہے۔ڈی آئی جی شمالی کشمیرنے مارے گئے جنگجوئوں کی شناخت پاکستان کے عثمان بھائی اور سیف اللہ کے طور کی۔تیسرے جنگجوکی شناخت کے بارے میں انہوں نے کہا کہ اُس کی شناخت کی جارہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ عثمان بھائی سوپور میں ہوئے حالیہ حملے جس میں ایک سی آرپی ایف اہلکاراورایک شہری ہلاک ہوئے تھے،میں ملوث تھا۔دونوں غیرملکی جنگجو گزشتہ دو برس سے یہاں یہاں سرگرم تھے۔شمالی کشمیرمیں غیر ملکی جنگجوئوں کی موجودگی کے بارے میں پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ شمالی اضلاع میں اطلاعات کے مطابق 35سے40غیر ملکی جنگجو کام کررہے ہیں۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ کچھ16یا17مقامی جنگجو بھی سرگرم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اطلاعات کے مطابق شمالی کشمیرمیں سرگرم 7 جنگجو گزشتہ کئی ماہ کے دوران دراندازی کرکے یہاں پہنچے ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال دفعہ370کی تنسیخ کے بعد حدمتارکہ کے اُس پار سے کشمیر میں اُبال پیدا کرنے کی کوششیں ہورہی ہیں تاکہ ایک بیانیہ قائم کیاجائے۔ڈی ا ٓئی جی شمالی کشمیرنے کہا کہ کشمیرمیں سرگرم جنگجوئوں نے میوہ بیوپاریوں،شہریوں اور غیرقامی مزدوروں پر حملے کئے لیکن لوگ ہمارے ساتھ تعاون کررہے ہیں اوراس طرح جنگجویت میں بھرتی کے گراف کو نیچے کررہے ہیں ۔  انہوں نے کہا کہ گزشتہ برس سے جن نوجوانوں نے ہتھیاراُٹھائے ہیں وہ یا توہلاک کئے گئے یاگرفتارجبکہ متعدد کو جنگجو صفوں میں شامل ہونے سے بچایا گیا۔5راشٹریہ رائفلز کے سیکٹر کمانڈر جو ڈی آئی جی کے ہمراہ تھے،نے کہاکہ حدمتارکہ پر فورسزنے دراندازی کی متعدد کوششوں کو ناکام بنایا ۔انہوں نے کہا کہ فی الوقت250 سے300جنگجو اِس پار داخل ہونے کیلئے لانچنگ پیڈوں پر تیار ہیں ۔