بیگم اکبر جہاں کی20برسی پر انکے مرقد پر گلباری | نیشنل کانفرنس،عوامی نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی کا خراج عقیدت

تاریخ    12 جولائی 2020 (30 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر// مرحوم شیخ محمد عبداللہ کی اہلیہ اور سابق ممبر پارلیمنٹ بیگم اکبر جہاں کی 20 ویںبرسی پرنیشنل کانفرنس سمیت دیگر سیاسی جماعتوں نے انہیں شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا۔نیشنل کانفرنس کے صدرڈاکٹر فاروق عبد اللہ، نائب صدر عمر عبد اللہ نیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈرصوفی غلام رسول نے مرحومہ کے مقبرے وقع نسیم باغ حضرت بل سرینگر پر حاضری دی جبکہ شیخ محمد عبد اللہ کے مقبرے پر بھی فاتحہ خوانی اور گلباری کی۔ دونوں لیڈارن نے درگاہ حضرت بل میں حاضری دیکر اس مہلک وبا سے عالم انسانیت کو بچانے ا ور امن کے لئے دعا کی ہے ۔پارٹی کے سینئر لیڈراںر محمد اکبر لون، محمد سعید آخون،پیر آفاق،شیخ محمدرفیع،غلام نبی بٹ، صبیہ قادی، نے بھی مرحومہ کو شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کر کے مرحومین کے مرقدوں پر گلباری کی اورنکے خدمات کو یاد کیا ہے جو انہوں نے جموںو کشمیر کے عوام کیلئے کی ہیں ۔جموں میں بھی اس حوالے سے تقریبات کا انعقاد کیا گیا ہے جس میں انہیں زبردست الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا گیا۔اس دوران عوامی نیشنل کانفرنس صدر خالدہ شاہ نے اپنی والدہ بیگم عبداللہ کو خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ دور میں لڑکیوں کی تعلیم کے حوالے سے اُن کا کردار بے مثال ہے۔ اپنے ایک بیان میں انہوں نے بتایا کہ وہ گھر گھر جاکر عوام کو تعلیم دلاتیں اور ان پر دباؤ ڈالتیں کہ لڑکیوں کو تعلیم حاصل کرنے کے لئے بھیجیں۔خالدہ شاہ نے بتایاکہ مرحوم شیخ محمد عبداللہ کی گرفتاری کے دوران موصوفہ نے انتہائی مشکل وقت کے دوران ریاست اور اپنی پارٹی کو کھڑا رکھا۔انہوں نے مرحومہ کے حق میں مغفرت کی دعا کی۔پارٹی کے نائب صدر مظفر شاہ نے  اپنی پارٹی کے سینئر ساتھیوں کے ہمراہ اُن کے مقبرے پر حاضرے دیکر مغفرت کی دعا کی۔ادھرنیشنل کانفرنس کے سینئر کارکنوں کی ایک میٹنگ میںبیگم عبداللہ کو 20ویں یوم وصال پرخراج عقیدت پیش کیاگیا۔ میٹنگ میں خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا گیا کہ بیگم عبداللہ نے کشمیری خواتین میں سماجی اورحقوق کی بیداری پیداکرنے میں اہم رول اداکیا جبکہ غریب لوگوں کی معاونت میں بھی وہ پیش پیش رہیں ۔میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے ارشاد رسول کار نے کہا کہ بیگم عبداللہ کی خواہش اورکوشش رہی ہے کہ کشمیری خواتین کی سماجی ومعاشی حالت میں بہتری آئے ۔میٹنگ میں پارٹی کے سینئر کارکنوں بشمول بشیر احمدماگرے ،غلام احمد،محمداکبر گنائی ،حبیب اللہ میر ،ایڈووکیٹ بشیر احمدملہ ،غلام نبی مناری اوردیگر کئی کارکنان نے بھی شرکت کی ۔ادھرپی ڈی پی لیڈر انجینئر نذیر احمدا یتو نے بیگم عبداللہ کو20ویں برسی پر خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ بیگم عبداللہ نے مرحوم شیخ محمد عبداللہ کے مشن کو آگے بڑھاتے ہوئے لوگوں کے وقار یقینی بنانے میں ہر ممکن کوشش کی ۔انہوں نے کہا کہ کشمیر کے لوگ بیگم عبداللہ کے کام کو نظر انداز کرنے کے متحمل نہیں ہو سکتے ۔انہوں نے کہا کہ خواتین کی خواندگی کو فروغ دینے میں ان کی کردار مثالی ہے۔
 
 
 

شیر کشمیر بھون جموں میں تقریب

جموں //نیشنل کانفرنس نے ہفتہ کے روز یہاں شیر کشمیر بھون میں مادر مہربان بیگم شیخ محمد عبد اللہ کو انکی 20 ویں برسی کے موقع پر گلہائے خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ایک بیان کے مطابق نیشنل کانفرنس کے رہنماؤں نے کورونا وائرس وباء کے پیش نظر ضروری احتیاطی پروٹوکول برقرار رکھنے کے بعد ، بیگم اکبر جہاں کی تصویر پر پھول نچھاور کئے ، جنہوں نے خواتین کی خواندگی اور لوگوں خوصاً خواتین او رسماج کے کمزور طبقوں کے سیاسی استحکام کے لئے بلا لحاظ مذہب و ملت ،رنگ و نسل کام کیا۔جموں و کشمیر کی سیاسی جدوجہد کے دوران ، خاص طور پر شیر کشمیر شیخ محمد عبداللہ کی گرفتاری کے بعد ان کی شراکت بہت زیادہ رہی ہے ، کیونکہ انہوں نے شیر کشمیر کی عدم موجودگی میں عوام کو سیاسی طور پر بااختیار بنانے کے مشن کو آگے بڑھایاپروگرام کا اہتمام صوبائی صدر خواتین ونگ جموں صوبہ ستونت کور ڈوگرہ نے کیا تھا۔ مادرمہربان خراج تحسین پیش کرنے والوں میں شیخ بشیر احمد ، بشیر احمد وانی ، چوہدری ہارون ، عبد الغنی تیلی ، وجے لوچن ، ڈاکٹر گگن بھگت ، ترسیم کھولر ، رشیدہ بیگم ، ایس سوچا سنگھ ، اشوک ڈوگرہ ، ریکھا چب ، پشپا ڈوگرہ ، آشا مہرا ، پنکی بھٹ ، سوم راج تروچ ، ریاض احمد ہکلہ، تیجندر سنگھ ، روہت بالی ، نتیش گوسوامی ، مزمل ملک ، ڈاکٹر امینہ ، کرن سنگھ ، پرشوتم لال اور دیگران شامل تھے۔دریں اثنا ، ایک پیغام میں نیشنل کانفرنس کے صوبائی صدر جموں دیویندر سنگھ رانا نے مادر مہران کو شاندار خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ، کہ سماجی و سیاسی استحکام میں ان کا کردارسماج کے کمزور طبقوں کی بھلائی بالعموم خواتین کی خواندگی جموں و کشمیر کے لوگوں کے لئے کام کرنے کی ترغیب دیتا رہے گا۔ مسٹر رانا نے کہا ، "تاریخ بیگم شیر کشمیر شیخ محمد عبد اللہ کے برادریوں اور خطوں کے مابین میل جول اور بھائی چارے کے تعلقات کو مستحکم کرنے کے لئے شاندارکار کردگی کی گواہ ہے" ، انہوں نے مزید کہا کہ ہم آہنگی ، خواتین کی خواندگی کو فروغ دینے، خواتین کو بااختیار بنانے اور سماج کے کمزورطبقات کی بہتری کے لئے ان کی انتھک کام مثال بن کر رہ گئی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بیگم صاحبہ ایک پیار ی والدہ ، ایک متحرک رہنما اور ایک عظیم انسان ثابت ہوئی، جولوگوں کی فلاح و بہبود کے لئے فکرمند تھی۔انہوںنے کہا کہ خواتین کو فیصلہ سازی میں بہت بڑا کردار ادا کرنے اور مختلف شعبوں کی قیادت کے لئے ان کو صف اول میں لانا ہی مادر مہربان کو ایک زبردست خراج ہو گا۔
 

تازہ ترین