تازہ ترین

سفارتی سطح کی بات چیت

ہند وچین مشرقی لداخ میں فوجوں کی مکمل واپسی پر متفق

تاریخ    11 جولائی 2020 (45 : 02 AM)   


نیوز ڈیسک
نئی دہلی//مشرقی لداخ میں سرحدی تنازعے پر جمعہ کو بھارت اور چین کے درمیان سفارتی سطح کی بات چیت میں اس بات کو دہرایا گیا کہ حقیقی کنٹرول لائن پرامن امان کومکمل طور بحال کرنے کیلئے فوجیوں کی مکمل واپسی کو یقینی بنایا جائے گا۔وزارت خارجہ نے کہا کہ یہ بات چیت ہندچین سرحدی معاملات سے متعلق مشاورتی وتال میل نظام کے فریم ورک کے تحت ہوئی۔ وزارت خارجہ کے مطابق دونوں اطراف نے اس بات کااقرارکیا کہ سرحدی علاقوں میں حقیقی کنٹرول لائن پرامن وامان کو ’’مکمل بحال‘‘کرنے کیلئے باہمی معاہدوں کے تحت فوجوں کی مکمل واپسی کو یقینی بنایا جائے گا۔وزارت خارجہ کے بیان کے مطابق دونوں ملکوں نے باہمی تعلقات کومجموعی طور بہتر بنانے کیلئے سرحدی علاقوں میں مستقل طور امن وامان کو برقرار رکھنے پر اتفاق کیا۔ آن لائن بات چیت میں بھارتی وفد کی قیادت وزارت خارجہ میں (مشرقی ایشیاء) جوائنٹ سیکریٹری جبکہ چینی وفد کی قیادت چین کی وزارت خارجہ میں بائونڈری واوشنک ڈیپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر جنرل کررہے تھے۔وزارت خارجہ نے کہا کہ انہوںنے       مشرقی سیکٹر میں حقیقی کنٹرول لائن پر فوجوں کی جاری واپسی سمیت ہندچین سرحدی علاقوں کی صورتحال کاجائزہ لیا۔  دونوں اطراف اس بات پر متفق تھے کہ سینئرکمانڈروں کے درمیان ہوئے سمجھوتوں پرخلوص کے ساتھ عملدرآمد کیا جائے۔گزشتہ آٹھ ہفتوں کے دوران ہندچین افواج مشرقی لداخ میں متعددمقامات پر ایک دوسرے سے الجھ رہے تھے ۔تنائو میں اُس وقت اضافہ ہواجب گلوان وادی میں پرتشددجھڑپ میں بھارت کے 20فوجی اہلکار مارے گئے تھے۔پچھلے پانچ روزکے دوران بھارتی فوج کے ساتھ مفاہمت کے تحت چینی فوج تین مقامات سے واپس چلی گئی۔دونوں اطراف نے گزشتہ کئی ہفتوں کے دوران فوجی اور سفارتی سطح پر بات چیت کے کئی دور کئے تاکہ خطے میں تنائو کو کم کیاجائے ۔
 

تازہ ترین