اپنی پارٹی کاجموں وکشمیر سپورٹس کونسل کے خلاف جموں میں احتجاج

۔10 دنوں کے اندر بھرتی عمل پورا نہ کیاگیا تو ایجی ٹیشن شروع کریں گے:رقیق احمد خان

تاریخ    10 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


 جموں//جموں وکشمیر اپنی پارٹی نے خواہشمند کوچز جن کے انٹرویو سال 2016کو مشتہر اسامیوں کے لئے ہائی کورٹ کی ہدایات کے باوجود نہیں لئے گئے، کے حق میں احتجاج کیا۔سنیئر یوتھ لیڈر رفیق احمد خان کی قیادت میں اپنی پارٹی ممبران پریس کلب جموں کے نزدیک نمائشی گراؤنڈ میں جمع ہوئے اور جے اینڈ کے سپورٹس کونسل کے خلاف زبردست احتجاج کیا اور الزام عائد کیاکہ وہ پچھلے چا رسالوں کے دوران انٹرویو کا انعقاد کرنے میں ناکام رہی ہے۔ احتجاجی کارکنان نے کونسل کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے الزام لگایاکہ کوچوں کے ساتھ امتیازی سلوک برتا جارہا ہے جوکہ اِس وقت سخت پریشان حال ہیں۔ مظاہرین نے کونسل کو دس دن کا الٹی میٹم جاری کرتے ہوئے کہاکہ اگر بھرتی عمل مکمل نہ کیاگیا تو کوچوں کے حق میں اپنی پارٹی ایجی ٹیشن شروع کرے گی۔ اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے رقیق احمد خان نے کہاکہ اِن کوچوں کے پاس روزی روٹی کا کوئی ذریعہ نہیں جنہوں نے انٹرویو دیئے ہیں لیکن جموں وکشمیر ہائی کورٹ کی ہدایات کے باوجود سلیکشن عمل مکمل نہ کیاگیا۔ انہوں نے مزید بتایاکہ  جموں وکشمیر سپورٹس کونسل نے 24اگست 2016کو جونیئر کوچوں کی تقرری کے لئے نوٹیفکیشن کے ذریعے آسامیاں مشتہر کیں جس کے لئے جنوری 2017میں انٹرویو لئے گئے ، لیکن 48جونیئر کوچوں کی اسامیوں پر محض 17اہل امیدوارو ہونے کے باوجود نتائج ظاہر نہیں کئے گئے۔ علاوہ ازیں دیگر مشتہر مختلف اسامیوں کا بھی بھرتی عمل شروع ہوا جس کو اپریل 2018میں مکمل ہونا تھا لیکن سیکریٹری سپورٹس کونسل کے مستعفی ہوجانے کی وجہ سے بھرتی عمل ٹھپ ہوگیا ، بدقسمتی سے وہ فائل جس میں بھرتی کا طریقہ کار وضع ہے وہ بھی حکومتی تبدیلی کے ساتھ ہی لاپتہ ہے۔متاثرہ امیدواروں نے ہائی کورٹ سے رجوع کیا جہاں سپورٹس کونسل نے اعتراف کیاکہ انٹرویوکا ریکارٹ کھوگیا ہے۔ جس پر عدالت عالیہ نے چار ماہ کے اندر سلیکشن عمل مکمل کرنے کی ہدایت دی۔ اس حوالہ سے کرائم برانچ میں فائل لاپتہ ہونے کی ایف آئی آر بھی درج ہوئی۔جموں وکشمیر سپورٹس کونسل نے ایک نوٹیفکیشن SO/662-IV/2475-84  شائع  کیا جس میں کہاگیاکہ سرینگر میں 31جولائی تا2اگست 2019تک انٹرویو لئے جائیں گے لیکن 30جولائی 2019کو جے اینڈ کے سپورٹس کونسل نے انٹرویو کمیٹی کے چیئرمین یعنی ڈائریکٹر یوتھ سروسز اینڈ سپورٹس کی مصروفیات کی وجہ سے انٹرویو ملتوع کرنے کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہاکہ سپورٹس کونسل پہلے سے شیڈیول انٹرویو لینے میں ناکام رہا، ہائی کورٹ کی ہدایات کے باوجود بھی سپورٹس کونسل کا سلیکشن عمل مکمل کرنے کاکوئی ارادہ نہیں۔ انہوں نے کہاکہ جن کوچوں کو کھیل کے میدان میں ہونا چاہئے انہیں حکومت سڑکوں پر اْترنے پر مجبور کر رہی ہے، لہٰذا جلد اِن کا سلیکشن عمل مکمل کیاجانا چاہئے۔ رقیق خان نے کہاکہ نوجوانوں کی کھیل کود سرگرمیوں کے لئے حوصلہ افزائی کرنے کی بجائے جموں وکشمیر سپورٹس کونسل کی طرف سے اپنائی جارہی لیت ولعل پالیسی سے اْن کھلاڑیوں کی حوصلہ شکنی ہورہی ہے جوکہ یوٹی، ریاستی، بین الریاستی، قومی اور عالمی سطح پر اپنا کیرئر بنانے کے خواہشمند ہیں۔احتجاج میں سندیپ گندوترہ، امندیپ سنگھ چوپڑہ، ہتیشو ر سنگھ، وائی بہو مٹو، ورون انکوش، دھنجے، اقدس علی وغیرہ شامل تھے۔
 

تازہ ترین