تازہ ترین

بجبہاڑہ میں کورونا وائرس میں مبتلا خاتون کی جراحی

فرضی منفی سرٹیفکیٹ جمع کرانے کی تحقیقات شروع

تاریخ    16 جون 2020 (00 : 03 AM)   


پرویز احمد +عارف بلوچ
 سرینگر+اننت ناگ // چیف میڈیکل آفیسر اننت ناگ نے سب ضلع اسپتال بجبہاڑہ میں7جون کو کورونا متاثرہ حاملہ خاتون مریضہ کی طرف سے ’ منفی‘فرضی سرٹیفکیٹ جمع کر نے کے معاملے کی تحقیقات کا حکم دیا ہے اور تحقیقاتی ٹیم کو سوموار تک رپورٹ جمع کرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ چیف میڈیکل آفیسر اننت ناگ ڈاکٹر مختار شاہ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ ایس ڈی ایچ بجبہاڑہ میں ایک حاملہ خاتون کی جانب سے کورونا وائرس میں مبتلا نہ ہونے کی فرضی سرٹیفکیٹ جمع کی گئی اور اسپتال میں زچگی کیلئے داخلہ پایا۔ڈاکٹر مختار نے بتایا’’ 9جون کو مذکورہ خاتون کی جراحی کی گئی‘‘۔ انہوں نے کہا’’ اس معاملے کی تحقیقات کیلئے ڈاکٹروں کی ایک ٹیم تشکیل دی گئی ہے اور ٹیم کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ سوموار تک اپنی رپورٹ جمع کریں‘‘۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ سب ضلع اسپتال بجبہاڑہ میں 7جون کو شمسی پورہ مٹن سے تعلق کھنے والی ایک حاملہ خاتون نے بجبہاڑہ میں ڈاکٹروں کو کورونا وائرس کی منفی رپورٹ پیش کرکے اسپتال میں داخلہ لیا ۔7جون کو اس نے ٹروما اسپتال بجبہاڑہ سے منفی ہونے کی سرٹیفکیٹ جمع کرائی تھی‘‘۔’ 9جون بروز سوموار مذکورہ مریضہ کی جراحی انجام دی گئی لیکن جراحی انجام دینے کے بعد شام کو ڈاکٹروں کو معلوم ہوا کہ مریضہ مثبت تھی‘‘۔ڈاکٹروں نے بتایا ’’مریضہ کی طرف سے اسپتال میں جمع کی گئی منفی رپورٹ نمبر60152کسی اور خاتون مریضہ کی ہے‘‘۔اسی اسپتال میں مزید 3حاملہ خواتین کی جراحی بھی انجام دی گئی اور ان مریضوں کی بھی تشخیص کی ضروت پڑ گئی ہے۔ مذکورہ ڈاکٹر نے بتایا ’’ حاملہ خاتون نہ تو اسپتال میں ہے اور نہ ہی اسکو آئیسولیشن میں رہنے کی ہدایت دی گئی‘‘۔میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ایس ڈی ایچ بجبہاڑہ ڈاکٹر شوکت نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ 3جون کو ٹروما اسپتال بجبہاڑہ میں ایک جراحی انجام دی گئی تھی اور اسپتال کے انچارج ڈاکٹر نے مریضہ کو فرضی سرٹیفیکٹ جاری کی اور مریضہ نے فرضی دستاویزات کی بنیاد پر زچگی کیلئے ایس ڈی ایچ بجبہاڑہ میں داخلہ لیا اور 9جون کو اسکی جراحی ہوئی ‘‘۔ ڈاکٹر شوکت نے بتایا ’’ مریضہ کی تازہ رپورٹ 11 جون کو بھی مثبت آئی اور ہم نے چیف میڈیکل آفیسر اور ڈپٹی چیف میڈیکل آفیسر کو مطلع کیا ہے اور مریضہ کو جلد قرنطینہ میں منتقل کیا جائے ‘‘۔ڈاکٹر شوکت نے بتایا ’’ میں 3جون سے انتظامیہ قرنطینہ میں ہوں اور ٹروما اسپتال کے انچارج نے مریضہ کو کیسے سند جاری کی ، مجھے کچھ بھی پتہ نہیں ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’حقائق جاننے کیلئے چیف میڈیکل آفیسر اننت ناگ نے تحقیقات کا حکم دیا ہے ‘‘۔ انہوں نے کہا’’ ہم نے ایس ڈی ایچ بجبہاڑہ میں آپریشن تھیٹر میں تعینات پورے عملے کے ٹیسٹ کرائے ہیں اور خوشی کی بات یہ ہے کہ ان سب کی رپورٹ منفی آئی ہے‘‘۔