تازہ ترین

مزید خبرں

تاریخ    12 جون 2020 (00 : 03 AM)   


سری نگر ، جموں میں رہائش کی الاٹمنٹ

 محکمہ ایسٹیٹس نے تفاصیل طلب کرلیں

نیوز ڈیسک
 جموں//حکومت جموں وکشمیر کے محکمہ ایسٹیٹس نے اِنتظامی سیکریٹریوں کو مختلف محکموں کے سربراہان کو اُن افسروں اور ملازمین کی فہرست طلب کی جو دربار مؤ کے ساتھ سری نگر منتقل ہو رہے ہیں اور جو جموں میں ہی رہیں گے ۔محکمہ نے فہرست کے ساتھ گزشتہ رہائشی تفاصیل دو دِن کے اندر پیش کرنے کے لئے کہا ہے تاکہ اُن کے لئے رہائشی سہولیات دستیاب رکھی جاسکیں۔واضح رہے کہ سالانہ دربارمؤ کے سلسلے میں جی اے ڈی کی جانب سے8 ؍جون 2020ء کوجاری کئے گئے حکمنامے کے مطابق محکمہ ایسٹیٹس کو دونوں مقاما ت پر ضرورت کے حساب سے اَفسروں اور ملازمین کو رہائشی سہولیات دستیاب رکھنے کے لئے کہا گیا تھا۔
 

کورونا وائرس 

رابطہ میں آنے والے شہریوں کی آزادانہ نقل وحمل 

گھرکوٹ اوڑی میںخوف و دہشت 

اوڑی//ظفر اقبال//گھر کوٹ اوڑی میں حالیہ دنوں 2حاملہ خواتین کے کورونا ٹیسٹ مثبت آنے کے بعدگھر والوں اور رشتہ داروں کو ابھی تک ہوم کورنٹائن نہیں کیا گیا ہے۔مقامی لوگوں میں اس بات کو لیکر سخت تشویش اور خوف و ہراس پایا جارہا ہے کہ 2حاملہ خواتین کے رشتہ داروں اور رابطے میں آنے والے افراد کھلے عام علاقہ میں گھوم رہے ہیں ۔لوگوںنے انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ رابطے میں آنے والے شہریوں کو قرنطینہ میں رکھا جائے تاکہ وائرس مزید نہ پھیل سکے۔ ادھر ایس ڈی ایم اوڑی نے اوڑی اور بونیار کے قریب 6 دیہات جن میں زمبور پٹن، گھر کوٹ B, پرانکترن بونیار، پیرن بمیار بونیار، ناگاناری بونیار، واری کھا بونیار شامل ہیں ،میں ڈیوٹی مجسٹریٹ کو تعینات کیا جو کووڈ مریضوں کے رابطے میں آنے والے اشخاص کو سختی سے ہوم کورنٹائن رکھے گے ۔تا ہم اوڑی انتظامیہ کے مطابق سب ڈویژن اوڑی میں اس وقت کوئی بھی علاقہ ریڈ زون کے دائرے میں نہیں ہے۔اوڑی سب ڈویژن کے دو میڈیکل بلاکوں میں ابھی تک 6 حاملہ خواتین  سمیت کل 22 افراد کے کورونا وائرس کے مثبت کیس سامنے آئے جن میں 14 اوڑی اور 8 بونیار بلاک سے ہیں جن میں 12 مریض صحت یاب ہو گئے ہیں 10 ابھی بھی مختلف ایسولیشن وارڈوں میں بھرتی ہیں۔
 

مظفرآبادمیں کورونا وائرس معاملات میں اضافہ

۔18جون تک سخت لاک ڈائون کا نفاذ 

سرینگر ///پاکستانی زیر انتظام کشمیر میں کووڈ19کے کیسوں میں مسلسل اضافہ کی وجہ سے لاک ڈاون اب مزید سخت کردیا گیا ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق مظفرآباد میں کرونا وائرس کے بڑھتے معاملات کے باعث مختلف سیاسی اور سماجی جماعتوں سمیت تاجروں کی مشاورت کے بعد لاک ڈائون میں نرمی کو ختم کرتے ہوئے مزید ایک ہفتے کی سختی کی توسیع کردی جس میں 12جون صبح 6بجے سے 18جون تک مظفرآباد شہر میں مکمل لاک ڈائون کرتے ہوئے نقل و حمل پر پابندی عائد کردی گئی ہے ۔اس دوران شہر میں ہر قسم کی ٹرانسپورٹ پر مکمل پابندی عائد کی گئی ہے۔ نوٹیفکیشن کے مطابق ادویہ اور اشیایہ ضروریہ کی دکانیں ہفتہ تا جمعہ کوکھلی رہیں گی جبکہ صبح 8بجے سے 4بجے تک کھلی رہیں گی ۔
 

جموں کشمیر میں درماندہ کامگاروں کیلئے اطلاع

 جموں//جموںوکشمیر میں درماندہ بیرون یوٹی مائیگرنٹ ورکروں کے انخلأکے حصہ کے طور پر 12؍جون 2020ء کو 3شرمک خصوصی ریل گاڑیاں کٹرا سے چھتیس گڈھ اور مدھیہ پردیش کے لئے روانہ ہوں گی۔سرکاری اطلاع کے مطابق حکام نے اِن مائیگرنٹ کامگاروں جو اپنی ریاستوں اور یوٹیز واپس جانا چاہتے ہیں,کولیبر ڈیپارٹمنٹ میں رجسٹریشن کرنے اور اَپنی بھاری کا اِنتظار کرنے کے لئے کہا گیا ہے ۔اِنتظامی منظوری کے بغیر کسی کو بھی ریل گاڑی میںچڑھنے کی اِجازت نہیں ہوگی۔ 
 

ایڈوکیٹ جاوید اقبال کی ہائی کورٹ جج تعیناتی 

پرائیویٹ سکول ایسوسی ایشن کا خیر مقدم 

سرینگر // جموں و کشمیر پرائیوٹ ایسو سی ایشن نے ایڈوکیٹ جاوید اقبال وانی کو جموں و کشمیر اور لداخ ہائی کورٹ کا جج مقرر کرنے کا خیرمقدم کیا ہے۔ ایسو سی ایشن نے جاوید اقبال کی ترقی کو ان طلاب کیلئے حوصلہ افزا کہانی قرار دیا ہے جو اپنی صلاحیتوں سے اپنی زندگی میں کوئی مقام حاصل کرنا چاہتے ہیں۔ایڈوکیٹ جاوید اقبال خاص طور پر ان طلاب کیلئے مشعل راہ ہیں جو قانون کو پیشے کے طور پر اختیا کرنا چاہتے ہیں۔ایسو سی ایشن کے صدر غلام نبی وار نے بیان میں کہا کہ وہ ایک بہترین وکیل تھے اور ہمیں یقین ہے کہ وہ ایک بہترین جج بھی ثابت ہونگے۔ ایڈوکیٹ جاوید اقبال نے کشمیر یونیورسٹی سے قانون کی تعلیم میں سونے کا تمغہ حاصل کیا اور 1990 سے وکالت شروع کی۔
 

ڈانگر پورہ پلوامہ میں نوجوان کی نعش بر آمد 

سرینگر // ڈانگرپورہ پلوامہ میں اسکول کے نزدیک ایک نوجوان کی نعش پائی گئی ۔ نوجوان کی شناخت 25سالہ عادل یوسف زرگر ساکنہ نیو کالونی پلوامہ کے بطور ہوئی ہے۔ پولیس نے نعش کو تحویل میںلیکر ضروری لوازمات کے بعد میت لواحقین کے سپرد کی اور اس ضمن میں پولیس اسٹیشن پلوامہ میںکیس درج کرکے معاملہ کی تحقیقات شروع کی۔ (سی این آئی )
 

ٹنگمرگ کے کئی علاقے پینے کے پانی سے محروم 

مشتاق الحسن
 
ٹنگمرگ//ٹنگمرگ کے سونلی پورہ حیات پورہ اور روات پورہ کے لوگوں نے جل شکتی محکمہ کے خلاف زبردست احتجاج کرتے ہوئے الزام عائد کیا کہ ان تین دیہات میں گزشتہ پانچ روز سے پانی کی سپلائی دستیاب نہیںہے ۔لوگوں کا کہنا ہے کہ لوگ گزشتہ پانچ روز سے ندی نالوں کا پانی استعمال میںلانے کیلئے مجبور ہیں۔ اس سلسلے میں اسسٹنٹ ایگزیکٹو انجینئر پی ایچ ای ٹنگمرگ صریر احمد نے معاملہ جلد حل کرنے  کا یقین دلایا۔
 

 موسم گرما کیلئے جل شکتی محکمہ کی تیاریاں 

بھٹناگر نے جموںمیں واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹوں اور پمپنگ سٹیشنوںکا معائنہ کیا

جموں//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر راجیو رائے بھٹناگر نے جموں شہر کے تفصیلی دورے کے دوران جل شکتی محکمہ کی جانب سے جاری کاموں اور اور پروجیکٹوں کا جائزہ لیا۔متعدداہم ترقیاتی پروجیکٹوں بشمول واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹوں ، جدید پمپنگ سٹیشنوں اور جل بھون پر جاری کام کا جائزہ لیتے ہوئے مشیر نے افسروں کو آپس میں قریبی تال قائم کر کے کاموں کی رفتار میں درپیش مشکلات کو دور کرنے کی ہدایت دی۔کمشنر سیکرٹری جل شکتی محکمہ ، چیف انجینئر جموں اور دیگر متعلقہ افسران دورے کے دوران مشیر کے ہمراہ تھے۔دورے کے دوران مشیر نے ستلی ،ڈونٹلی ،بوریاں ، واٹرٹریٹمنٹ پلانٹوں اور کمپنی باغ نروال کے پمپنگ سٹیشنوں کا معائنہ کیا۔ انہوں نے جل بھون پر جاری کام کی رفتار کا بھی جائزہ لیا۔ستلی اور بوریا میں واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹوں کا معائنہ کرتے ہوئے مشیر نے متعلقہ افسران کو ان پلانٹوں کے بنیادی ڈھانچے کی صلاحیت کو بڑھانے کے لئے لازمی اقدامات کرنے کے لئے کہا ۔اُنہوں نے واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹوں کی صلاحیت کو بڑھانے کے لئے معقول لائحہ عمل مرتب کرنے کی بھی متعلقہ حکام کو ہدایت دی۔کمپنی باغ اور نروال میں پمپنگ سٹیشنوں کا معائینہ کرتے ہوئے مشیر نے ان سٹیشنوں کی کارکردگی پر اپنے اطمینان کا اظہار کیا اور متعلقہ حکام کو موسم گرما کے دوران عوام کو معقول مقدار میں پانی کی فراہمی کے لئے لازمی اقدامات اٹھائیں۔دریں اثنا مشیر بھٹنا گر نے نروال میں تعمیر کی جارہی جل بھون عمارت پر جاری کام کی رفتار کا بھی جائزہ لیا ۔ کمشنر سیکرٹری جل شکتی نے انہیں عمارت کے مختلف خد و خال کے بارے میں جنکاری د۔ مشیر نے متعلقہ حاکم کو پروجیکٹ کی بروقت تکیمل یقینی بنانے کے لئے کام کی رفتار میں سرعت لانے کی ہدایت دی۔مشیر نے افسروں کو عمارات میں سولر پینلز نصب کرنے کے لئے کہا ۔بعدمیں مشیر بھٹناگر نے جل بھون نروال میں میٹنگ منعقد کر کے جموں صوبہ میں پانی کی فراہمی کی صورتحال اور جل شکتی محکمہ کی جانب سے سرما کے لئے تیاریوں کا جائزہ لیا۔مشیر کو منظور شدہ کاموں پر عمل آوری سے متعلق رِپورٹ پاور پوائنٹ پرزنٹیشن کے ذریعے دی گئی۔مشیر نے متعلقہ حکام کو مختلف سطحوں پر بنیادی ڈھانچہ کی دیکھ ریکھ کے لئے مشینری بینک قائم کرنے کے لئے کہا۔ اُنہوں نے ملازمین کو گرما کے دوران عوام کی سٹی مانگ پوری کرنے کے لئے منصوبہ مرتب کرنے کے لئے کہا۔ مشیر نے دورے کے دوران کام کی جگہوں پر کووِڈ۔19وبا کی روکتھام کے لئے کئے گئے اقدامات کی عمل آوری پر من و عن عمل کرنے کے لئے کہا۔ میٹنگ میں دیگر افسروں کے علاوہ سپرانٹنڈنٹ انجینئر پی ایچ ای ، نریش کھجوریا ، ایگزیکٹو انجینئر پی ایچ ای  آر کے رکوال ، ایگزیکٹو انجینئر آر کے مہاجن ، ایگزیکٹو انجینئرسریندر ابرول ، اے ای ای دل بہادر سنگھ ، اے ای ای  سدھیر سنگھ اور دیگر متعلقہ عہدیدار بھی موجود تھے۔
 

گاندربل میں غیر قانونی تعمیرات منہدم

ارشاد احمد
 
گاندربل//سرینگر لیہ شاہراہ پر گاندربل میں کئی جگہوںپر تجاوزات کو کھڑا کرنے کے خلاف انتظامیہ متحرک ہوگئی ہے ۔اسی سلسلے میں ہاری پورہ کے مقام پر تحصیلدار کنگن کی ہدایت پر نائب تحصیلدار کی نگرانی میں متعلقہ پٹواری اور دیگر عملہ نے غیر قانونی تعمیرات کو مہندم کردیا گیا۔اس سلسلے میں تحصیلدار کنگن عبدالمجید نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ غیر قانونی تعمیرات کو مہندم کردیا گیا ہے اور یہ کارروائی آئندہ بھی جاری رہے گی ۔
 

محکمہ بجلی کا ایگزیکٹیو انجینئرحادثے میں لقمہ اجل

بصیر خان،روہت کنسل اور یشامدگل کا اظہاررنج

 جموں//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر بصیر احمد خان نے جے پی ڈی سی ایل سے وابستہ ایگزیکٹیو ا نجینئرجتندر سنگھ کی ایک سڑک حادثہ میں ہلاکت پر اپنے گہرے رنج و غم اظہار کیا ہے۔مشیر نے سوگوار کنبے کے ساتھ اظہار تعزیت کرتے ہوئے آنجہانی کی آتما کی ابدی سکون کے لئے دعا کی۔پرنسپل سیکریٹری پاور ڈیولپمنٹ ڈیپاٹمنٹ روہت کنسل نے ایک دِلدوز سڑک حادثہ میں جے پی ڈی سی ایل کے ایگزیکٹو انجینئر جتندر سنگھ کے انتقال پرگہرے دُکھ کا اظہار کیا۔روہت کنسل نے سوگوار خاندان سے دلّی تعزیت کا اظہار کیا اور آنجہانی کی آتما کی دائمی سکون کے لئے دعا کی۔اِدھر جموں پاور ڈسٹری بیوشن کارپوریشن لمٹیڈ(جے پی ڈی سی ایل) کی منیجنگ ڈائریکٹر یشا مڈگل نے بھی جتندرسنگھ کے اِنتقال پر گہرے دکھ کا اظہار کیا۔ انہوں نے آنجہانی کو محنت کش اور بہترین آفیسر قرار دیا جس کے لئے انہیں ہمیشہ یاد کیا جائے گا۔۔جے پی ڈی سی ایل نے سوگواراں سے دلی تعزیت کا اظہار بھی کیا اور آنجہانی کی آتما کی دائمی شانتی کے لئے دعا بھی کی۔
 

 سرپنچ کی ہلاکت انسانیت سوز حرکت:درخشاں اندرابی 

سرینگر/ بھارتیہ جنتاپارٹی کی خاتون ترجمان ڈاکٹر درخشاں اندرابی نے جنوبی کشمیر میںسرپنچ کی ہلاکت کوانسانیت سوز حرکت قراردیتے ہوئے کہاہے کہ تشدد کے علمبردار اورحامی اب امن پسندکشمیریوں کویرغمال بناکرنہیں رکھ سکتے ہیں ۔ڈاکٹر اندرابی نے اپنے ایک بیان میں  کہاکہ سرپنچ اجے پنڈتا کی ہلاکت کاواقعہ انتہائی دلدوز اورناقابل فراموش ہے ۔انہوں نے غمزدہ خاندان کے ساتھ دلی ہمدردی کااظہار کرتے ہوئے کہاکہ ایسی بزدلانہ حرکتوں کے طرفداروں کوانسانیت کاکوئی پاس ولحاظ نہیں ہے۔
 

گریز حکومت کی نظروں سے اوجھل:اپنی پارٹی لیڈر

سرینگر//جموں وکشمیر اپنی پارٹی لیڈر لطیف احمد خان نے کہا ہے کہ انتظامیہ کی غیر سنجیدگی نے گریز کو تنہائی اور بے بسی کی زندگی جینے پر مجبور کر دیا ہے۔ ایک بیان میں انہوں نے کہاکہ گریز میں بجلی سپلائی کی مدت دن میں گھٹاکر محض پانچ گھنٹے کر دی گئی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ گریز کے کئی گاؤں ایسے ہیں جہاں بجلی کا نام ونشان نہیں، اس سے بڑی ستم ظریفی کیا ہوگی کہ ناگہانی آفات سے بچنے کا کوئی تحفظ نہیں اور لوگ آج بھی روایتی طریقہ کار اپنانے پر مجبورہیں۔انہوں نے مزید کہاکہ بجلی اور مواصلاتی خدمات جیسی بنیادی ضروریات کے فقدان سے گریز کے لوگوں کی زندگی اجیرن بن چکی ہے۔ انہوں نے صوبائی انتظامیہ سے اپیل کی کہ جنریٹرسیٹس کے لئے وافر مقدار میں ایندھن مہیا کروایاجائے تاکہ تلیل، بکتور اورگریز علاقوں میں شیڈیو ل کے مطابق بجلی کی بحالی یقینی بن سکے۔ اپنی پارٹی لیڈر نے امید ظاہر کی ہے کہ لیفٹیننٹ گورنر گریش چندر مرمو انتظامیہ کو وادی ِ گریز کے لوگوں کی مشکلات کا ازالہ کرنے کے لئے احکامات صادر کریں گے۔
 

چرارشریف میں قائم بچوں کی پارک 

مقامی آبادی کی کوشش سے قابل ا ستعمال

سرینگر// چرارشریف میں بچوں کی پارک کوبستی سے تعلق رکھنے والے شہریوں نے ہلہ شری کرکے قابل ا ستعمال بنادیا۔ واضح رہے کہ 45برسوںسے محکمہ فلوری کلچر کی نگرانی میں قائم اس پارک کی حالت ناگفتہ بہ تھی۔مقامی شہری عبدالاحد نے بتایا کہ یہ پارک اب آوارہ کتوں کی آماجگاہ بن چکی تھی۔ مقامی لوگوں نے گذشتہ دس دنوں سے پارک میں رضاکارانہ طور کام کرکے اسے دوبارہ قابل استعمال بنایا ہے۔