تازہ ترین

لاک ڈائون کا76واں دن

بندشیں نرم، تجارتی سرگرمیوں کا آغاز

تاریخ    7 جون 2020 (00 : 03 AM)   


بلال فرقانی
 سرینگر// ملک گیر لاک ڈائون کے 76 ویں روز سنیچر کو شہر سرینگر  اور دیگر قصبوں میں بندشیں نرم کی گئیں اور کاروباری و تجارتی سرگرمیوں کا آغاز ہوگیا۔البتہ شوپیان، پلوامہ، بانڈی پورہ، کولگام، ترال،پانپور،گاندربل، کنگن، حاجن، سمبل،پٹن، کریری ، ٹنگمرگ ، ماگام، بیروہ، چاڑورہ، ثرار شریف، پکھر پورہ، بارہمولہ، سوپور، بومئی، ہندوارہ، لنگیٹ، کرالہ گنڈ، وتر گام رفیع آباد، کپوارہ، ترہگام اور دیگر کئی قصبوں میں مکمل طور پر بندشیں عائد رہیں اور بہت کم تجارتی سرگرمیاں دیکھی گئیں۔ریڈ زونوں میں پہلے ہی لوگوں کی نقل و حرکت کی اجازت نہیں ہے۔بین ضلعی نجی ٹرانسپورٹ  جاری ہے البتہ پبلک ٹرانسپورٹ بند ہے۔ شہر سرینگر میں دیگر قصبوں اور دیہات کے برعکس صورتحال قدرے نرم ہے، جہاں بیشتر تجارتی سرگرمیاں نظر آتی ہیں البتہ بڑے مارکیٹ  بدستوربندہیں جبکہ سیول لائنز علاقہ مکمل طور پر بند ہے۔لال چوک، بڈشاہ چوک، مائسمہ مارکیٹ، کوکر بازار، امیرا کدل مارکیٹ،جہانگیر چوک،مہاراجہ بازار،ہری سنگھ ہائی سٹریٹ، بٹہ مالو، ریذیڈنسی روڑ، پولو وویو،گائو کدل مارکیٹ، حاجی مسجد مارکیٹ، اوقاف مارکیٹ، ایکسچینج روڑ، بر بر شاہ،ڈلگیٹ، جواہر نگر، رام باغ، اقبال مارکیٹ گوگجی باغ، چھانہ پورہ، نٹی پورہ، باغات برزلہ اور دیگر بازار بند رہے۔ ان علاقوں میں کہیں کہیں کوئی اکا دکا دوکانیں کھلی تھیں۔لال چوک کی تاربندی بدستور جاری ہے۔دیگر ضلع مقامات پر مجموعی طور پر بھرپور طریقے سے بازار نہیں کھل رہے ہیں اور تجارتی سرگرمیاں مکمل طور پر بحال نہیں ہوسکی ہیں۔