انڈیا کا نام تبدیل کرکے بھارت کرنے سے متعلق عرضی کی سماعت آج

تاریخ    3 جون 2020 (00 : 03 AM)   


یو این آئی
نئی دہلی//ملک کا انگریزی نام‘انڈیا’کو تبدیل کر کے ‘بھارت’یا‘ہندوستان’کرنے سے متعلق ایک درخواست پر سپریم کورٹ میں منگل کو بھی سماعت نہیں ہوسکی۔اب اس پر بدھ کو غور کیا جائے گا۔معاملے کی سماعت آج پہلے سے متعین تھی،لیکن چیف جسٹس شرد اروند بوبڑے کی عدم موجودگی کی وجہ سے اسے کل تک کے لئے ملتوی کردیا گیا۔سپریم کورٹ ویب سائٹ پر اپلوڈ کی گئی ایک نوٹس کے مطابق،جسٹس بوبڑے کی غیرحاضری کے سبب ان کی صدارت والی تین رکنی بنچ کے سامنے آج درج تمام معاملوں کی سماعت ملتوی کی گئی ہے ۔اب ان معاملوں کی سماعت کل یعنی 3 جون کو ہوگی۔ان میں نمہ نامی شخص کی وہ درخواست بھی شامل ہے جس میں ملک کانام انڈیا کے بدلے بھارت یا ہندوستان کرنے کے لئے آئین کے آرٹیکل 1 میں ترمیم کی ہدایت کا مطالبہ کیا گیا ہے ۔قابل ذکر ہے کہ متعلقہ درخواست پر سماعت 29 مئی کو نہیں ہوسکی تھی،کیونکہ چیف جسٹس اس روز بھی موجود نہیں تھے ۔اس کے بعد سماعت کے لئے آج کی تاریخ مقرر کی گئی تھی۔درخواست گذار نے انڈیا لفظ کو استعمار اورغلامی کی علامت قرار دیتے ہوئے ایکٹ ایک میں ترمیم کی مرکز کو ہدایت دینے کی درخواست کی ہے ۔درخواست گذار نے یہ عرضی وکیل راجکشور چودھری کے ذریعہ دی ہے ۔درخواست میں کہا گیا ہے کہ انڈیا کی جگہ بھارت کرنے سے ملک میں ایک قومی جذبہ بیدار ہوگا۔درخواست گذار نے اپنی عرضی میں 15نومبر 1948کو ہوئے آئین کے مسودے کا بھی تذکرہ کیا ہے ،جس میں آئین کے مسودہ ایک کے آرٹیکل ایک پر بحث کرتے ہوئے ایم اننتشینم اینگراور سیٹھ گووند داس نے انڈیا کی جگہ بھارت ،بھارت ورس،ہندوستان ناموں کو اختیار کرنے کی وکالت کی تھی۔یو این آئی 
 

تازہ ترین