تازہ ترین

پوش کیری سری گفوارہ میں مسلح جھڑپ | فائرنگ کے تبادلے کے بعد جنگجو فرار، ملنگ پورہ میں ہوائی فائرنگ

تاریخ    1 جون 2020 (00 : 03 AM)   


عارف بلوچ
اننت ناگ//ضلع اننت ناگ کے سری گفوارہ  بجبہاڑہ علاقے میں جنگجوئوں اور فورسز کے درمیان شدید جھڑپ ہوئی جس کے دوران جنگجو فرار ہونے میں کامیاب ہوئے۔فائرنگ کا تبادلہ شروع ہوتے ہی ضلع میں انٹر نیٹ سروس بند کی گئی۔پولیس نے بتایا کہ پوش کیری سری گفوارہ میں دو یا تین جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے پر 3آر آر، سی آر پی ایف اور سپیشل آپریشن گروپ نے گائوں کا رات کے 3بجے محاصرہ کیا اور جب ممکنہ جگہ کی جانب فورسز اہلکاروں نے پیش قدمی کی تو یہاں موجود جنگجوئوں نے تلاشی پارٹی پر فائرنگ کی جس کے بعد طرفین کے درمیان گولیوں کا شدید تبادلہ ہوا جو کچھ منٹ تک جاری رہا۔صبح قریب 4بجے پولیس نے ٹیویٹ کیا اور اس میں مذکورہ گائوں میں جھڑپ شروع ہونے کی تصدیق کی۔تاہم فائرنگ کے تبادلے کے دوران ہی جنگجو رات کی تاریکی کا فائدہ اٹھا کر فرار ہوئے تاہم فورسز نے محاصرہ جاری رکھا اور صبح دیر گئے تک تلاشی کارروائی جاری رکھی۔تاہم جنگجو فرار ہوچکے تھے۔ بعد میں فورسز نے دو نزدیکی دیہات کنلون اور سندپورا میںبڑے پیمانے پر تلاشی کارروائیاں کیں۔لیکن کوئی قابل اعتراض چیز بر آمد نہیں کی گئی اور ان دیہات کا محاصرہ ختم کیا۔ علاقے میں مختصر جھڑپ کے ساتھ ہی ضلع اننت ناگ میں موبائیل انٹر نیٹ خدمات بند کر دی گئی تھی تاہم بعد میں اس کو دوبارہ بحال کیا گیا ۔درین اثناء ملنگ پورہ پلوامہ کا اتوار کی شام فورسز کی بھاری جمعیت نے محاصرے  میں لیا اور محاصرہ کرنے کے دوران نے فورسز نے کئی مقامات پر ہوائی فائرنگ کی جس سے لوگ سہم کر رہ گئے۔یہاں رات گئے تک تلاشی کارروائیاں جاری تھیں۔
 
 
 

پولیس اہلکار کے اغوا کی کوشش ناکام

شاہد ٹاک

شوپیان// شوپیان کے مضافاتی گائوں میں پولیس اور فوج کی بروقت کاروائی سے بندوق برداروں کی طرف سے اغوا کئے گئے پولیس اہلکار کو بچا لیا گیا ۔ اس موقعے پر طرفین کے مابین گولیوں کا مختصر تبادل ہوا۔ بتایا جاتا ہے کہ مشتبہ بندوق برداروں نے تھیارن شوپیان میں پولیس کانسٹیبل شکیل احمد بٹ ولد غلام محمد کو اپنی رہائش گاہ سے اغوا کیا جس کے فوراً بعد پولیس اور 44آر آر نے علاقے کو محاصرے میں لیا اور کئی جگہوں پر ناکے لگائے۔ اس دوران چترا گام کے نزدیک بندوق برداروں کے ساتھ گولیوں کا تبادلہ ہوا اور پولیس اہلکار کو برآمد کیا گیا۔ 
 
 
 

 شوپیان،کولگام اور پلوامہ میں تلاشیاں

شاہد ٹاک

شوپیان // فورسز نے شوپیان، کولگام، کمرازی پورہ اور پلوامہ کے کئی دیہات کا محاصرہ کیا اور گھر گھر تلاشیاں لیں۔ 62آر آر ، 14بٹالین سی آر پی ایف اور پولیس کے سپیشل آپریشن گروپ نے اتوار کی صبح برستی بارش میں رام نگری شوپیان گائوں کا  محاصرہ کیا اور کئی گھنٹوں تک گھر گھر تلاشی کاروائی کی تاہم کوئی نا خوشگوار واقعہ رونما نہیں ہوا۔ 55آر آر نے کریم آباد  پلوامہ میں رات بارہ بجے محاصرہ اور تلاشی کارروائی شروع کی جو صبح ساڑھے گیارہ بجے تک جاری رہی اور اس دوران لوگوں کو سخت سردی میں پوری رات گھروں سے باہر رکھا گیا۔مقامی لوگوں کے مطابق فورسز نے دوران محاصرہ مکانوں کی تلاشی کیلئے اپنے ساتھ لئے جانے والے نوجوانوں کی ہڈی پسلی ایک کرکے رکھ دی،جنہیں بعد میں ضلع ہسپتال پلوامہ علاج و معالجہ کیلئے داخل کرایا گیا۔اس دوران کمرازی پورہ پکھر پورہ کا صبح سویرے محاصرہ کر کے تلاشیاں لیں گئیں لیکن دو گھنٹے تک کارروائی  جاری رہنے کے بعد ختم کی گئی۔ادھرفسٹ آر آر نے بگبل دمحال ہانجی پورہ،اکہال کوچھن دیوسر اور گجر بستی کو بیک وقت محاصرے میں لیکر تلاشی کارروائی شروع کی۔ اس دوران فوج اور پولیس نے لوگوں کی نگرانی کیلئے ہوا میں جاسوسی ڈرون کیمرے بھی استعمال  کئے تاکہ جنگجوں کے فرار ہونے کی عسکس بندی کی جاسکے۔پولیس کے مطابق گھرگھر تلاشی کے دوران جب فوج کا جنگجوں کے ساتھ آمنا سامنا نہ ہوا تو ان علاقوں کا محاصرہ ختم کردیا گیا۔اکہال میں ایک ہائیڈ اوٹ کا پتہ لگایا گیا جہاں برتن اور راشن کی کچھ مقدار بر آمد کی گئی۔
 

تازہ ترین