امریکہ کا ڈبلیو ایچ او سے تعلقات ختم کرنے کا اعلان

تاریخ    30 مئی 2020 (48 : 05 PM)   


یو این آئی
واشنگٹن// کورونا وائرس پھیلنے پر پیدا تنازعے نے بالآخر سنگین شکل اختیار کر لی اور امریکہ نے عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کی امداد بند کر دی او ر اسکے ساتھ تمام تعلقات ختم کر دینے کا اعلان کر دیا۔
ڈبلیو ایچ او پر چین کی 'کٹھ پتلی' ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے صدر امریکہ ڈونیلڈ ٹرمپ نے کل کہا کہ عالمی ادارہ صحت کو امریکہ کی جانب سے جو رقم دی جاتی تھی وہ اب دوسری تنظیموں اور ضرورت مند ممالک کو دی جائے گی تاکہ وہاں کورونا کی وبا سے نمٹا جا سکے۔
اطلاعات کے مطابق ٹرمپ نے کل وائٹ ہاو¿س کے روز گارڈن میں اخباری نمائندوں سے بات چیت میں دعویٰ کیا کہ چینی حکام نے کورونا وائرس کی وبا حوالے سے عالمی ادارہ صحت کو اندھیرے میں رکھا۔ اس کے بعد عالمی تنظیم نے بھی بھی کووڈ 19 کی بابت دنیا کو گمراہ کن معلومات فراہم کیں۔
واضح رہے کہ عالمی ادارہ صحت کا قیام 1948 میں اقوام متحدہ نے ہی کیا تھا اور اسے یہ اختیار بھی حاصل ہے کہ وہ جب بھی چاہے ڈبلیو ایچ او کی رکنیت چھوڑ سکتا ہے۔ بہر حال ابھی یہ واضح نہیں امریکی اعلان کب نافذ العمل ہوگا۔
امریکہ اس عالمی ادارے کو امداد فراہم کرنے والا دنیا کا سب سے بڑا ملک ہے لیکن نئی صورتحال ایسے وقت میں پیدا ہوئی ہے جب حال ہی میں چین نے آئندہ دو برسوں تک عالمی ادارہ صحت کو دو ارب ڈالر کی رقم عطیہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔
 

تازہ ترین