کورونا وائرس؛ امام مسجد جاں بحق،2000متاثرین کا ہندسہ عبور

ڈاکٹر،اسپتال کینٹین ملازم،3حاملہ خواتین سمیت 115کا اضافہ

تاریخ    29 مئی 2020 (00 : 03 AM)   


پرویز احمد
سرینگر //صدر اسپتال سرینگر میں ایک اور شخص کی موت کے بعد جموں و کشمیر میں کورونا سے فوت ہونے والے افراد کی تعداد 27ہوگئی ہے جن میں سے 3جموں جبکہ 24کا تعلق کشمیر سے ہے۔ جمعرات کو ایک ڈاکٹر، سی ڈی اسپتال کینٹین میں کام کرنے والا ملازم اور 3حاملہ خواتین سمیت مزید115افراد کی رپورٹیں مثبت آئی ہیں۔دوسری طرف کورونا متاثرین کی تعداددو ہزار کا ہندسہ پار کرکے 2036ہوگئی ہے جن میں 400جموں جبکہ 1636مریضوں کا تعلق کشمیر صوبے سے ہے۔ جمعرات کومثبت قرار دئے گئے 115افراد میں سے 22مقامی رابطے جبکہ 93افراد مختلف ممالک اورریاستوں سے سفر کرکے واپس لوٹے ہیں۔مقامی سطح پر رابطے میں آنے والے 22افراد میں سے 6شوپیاں، 4بارہمولہ،4اننت ناگ، 3سرینگر، 3جموں،  ایک کپوارہ اور ایک کا تعلق پونچھ ضلع سے ہے جبکہ بیرون ممالک اور ریاستوں سے آنے والے93مریضوں میں سے 44 کپوارہ،12بارہمولہ،11بڈگام، 8سرینگر،5جموں،3اننت ناگ، 3پلوامہ، 3کٹھوعہ، 2شوپیاں، ایک ادھمپور اور ایک ریاسی سے تعلق رکھتا ہے۔ 

بارہمولہ کا شہری فوت

 بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب خانپورہ بارہمولہ سے تعلق رکھنے والاامام مسجد صدر اسپتال میں فوت ہوگیا ۔ جی ایم سی سرینگر ترجمان ڈاکٹر محمد سلیم خان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’امام مسجد کو بدھ کی شام چھاتی میں تکلیف اور بخار کی وجہ سے جی ایم سی بارہمولہ سے صدر اسپتال سرینگر منتقل کیا گیا ‘‘۔ ڈاکٹر سلیم نے بتایا ’’صدراسپتال پہنچنے کے کئی گھنٹوں بعد مریض حرکت قلب بند ہونے کی وجہ سے فوت ہوگیا‘‘ ۔ انہوں نے کہا ’’ رپورٹ آنے تک لاش کو اپنی تحویل رکھا گیا اور جمعرات کی صبح اسکی رپورٹ مثبت آئی‘‘۔

سکمز

 میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے بتایا’’ 24گھنٹوں کے دوران1429نمونوں کی تشخیص کی گئی اور اُ ن میں سے15مثبت جبکہ1414منفی قرار دئے گئے۔’’انہوں نے کہا ’’15میں سے ایک کولگام اور2کا تعلق سرینگر ضلع سے ہے۔ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ سرینگر ایئر پورٹ سے حاصل کئے گئے نمونوں میں سے 7افراد مثبت آئے جن میں سے 3نملہ بل پانپور،2 اننت ناگ اور 2کا تعلق ٹنگہ پورہ شوپیاں سے ہے۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’کیمونٹی ہیلتھ سینٹر کپوارہ کی جانب سے بھیجے گئے نمونوں میں سے 4مریضوں کی رپورٹیں مثبت آئیں ،ان میں سے 1کپوارہ،1 دردوسن ، ایک گلگام اور ایک کا تعلق منزگام کپوارہ سے ہے‘‘۔ ان کا کہنا تھا کہ سی ایم او سرینگر کے نمونوں میں سے نوہٹہ سرینگر سے تعلق رکھنے والے 2افراد کی رپورٹیں مثبت آئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ضلع اسپتال کولگام سے موصول ہونے والے نمونوں میں سے لمرکولگام کے 35سالہ شخص کی رپورٹ بھی مثبت قرار دی گئی۔ ڈاکٹر جان نے بتایا کہ ضلع اسپتال سوپور کے 28سالہ خاتون کی رپورٹ بھی مثبت قرار دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مثبت قرار دئے گئے 15افراد میں سے 14نے مختلف ریاستوں اور ممالک کا سفر کیا ہے جبکہ ایک مقامی رابطے میں آنے کی وجہ سے وائرس کا شکار ہوا ہے۔ انسٹی ٹیوٹ کے شعبہ عوامی رابطہ کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر کی جانب سے جاری کئے گئے اعدادوشمار میںبتایا گیا ہے کہ ابتک کل482مشتبہ مریضوں کا داخلہ کیا گیا جن میں سے417مریضوں کو قرنطینہ کی مدت مکمل کرنے کے بعد گھر روانہ کردیا گیا جبکہ51مثبت قرار دئے گئے مریضوں کو گھر بھیجا گیا ہے۔ ابتک49679نمونوں کی تشخیص کی گئی ہے جن میں سے48894کو منفی قرار دیا گیا ہے جبکہ785مریضوں کی رپورٹیں مثبت آئیں ہیں۔ 

سی ڈی اسپتال

 میڈیکل کالج ترجمان ڈاکٹر محمد سلیم خان نے بتایا’’سی ڈی اسپتال میں450نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں11 مثبت قرار دئے گئے جبکہ439کی رپورٹیں منفی آئیں‘‘ ۔انہوں نے کہا ’’11میں 3بارہمولہ،4اننت ناگ،3سرینگر اور ایک بڈگام سے تعلق رکھتا ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ بارہمولہ کے تین مریضوں میں سے 2ونکارا بارہمولہ اور  فوت ہونے والے70 شخص کا تعلق خانپورہ بارہمولہ سے ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اننت ناگ میں مثبت قرار دئے گئے 4خواتین میں سے 3حاملہ خواتین اور ایک غیر شادی شدہ لڑکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دو حاملہ خواتین کا تعلق اننت ناگ جبکہ ایک کا تعلق  پہلگام اننت ناگ سے ہے۔ ڈاکٹر سلیم نے بتایا ’’ سرینگر میں مثبت قرار دئے گئے 3افراد میں سے 2رعناواری اسپتال میں زیر علاج ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ان دو میں سے ایک لال بازار اور دوسرا نرورہ عید گاہ سے تعلق رکھتا ہے۔ انہوں نے کہا’’ سی ڈی اسپتال کے کینٹین میں56  سالہ شخص کی رپورٹ بھی مثبت آئی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ ضلع اسپتال شوپیاں میں تعینات ایک ڈاکٹر کی رپورٹ بھی مثبت آئی ہے جو چاڑورہ بڈگام سے تعلق رکھتا ہے۔ 

جے وی سی بمنہ

پرنسپل سکمز میڈیکل کالج بمنہ ڈاکٹر ریاض ایتو نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ جمعرات کو 259نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں سے 5مشتبہ افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں ہیں جبکہ 254منفی قرار دیںگئیں‘‘۔ڈاکٹر ریاض نے بتایا ’’ ضلع اسپتال بڈگام سے 171نمونوں کو تشخیص کیلئے بھیجا گیا لیکن ان سب کی رپورٹیں منفی آئیں‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ ضلع اسپتال شوپیاں سے 51نمونے موصول ہوئے اور ان میں سے 5کی رپورٹیں مثبت آئیں جن میں سے 4وہیل شوپیاں اور ایک کا تعلق میمندر شوپیاں سے ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ سی ایم او سرینگر کی جانب سے 13رپورٹیں موصول ہوئیں جن میں سے لال بازار سرینگر سے تعلق رکھنے والے ایک شخص کی رپورٹ مثبت قرار دی گئی‘‘۔ڈاکٹر ریاض نے بتایا ’’ جڈی بل سرینگر سے 24 نمونے موصول ہوئے لیکن وہ سبھی منفی قرار دئے گئے‘‘۔

کمانڈ اسپتال ادھمپور

کمانڈ اسپتال ادھمپورانتظامی قرنطینہ میں رکھے گئے افراد میں سے74افراد کی رپورٹ مثبت آئی ہے۔ محکمہ صحت کے ذرائع نے بتایا کہ کمانڈ اسپتال میں مثبت آنے والے مریضوں میں سے40کپوارہ،6سرینگر،11بڈگام،1اننت ناگ،5جموں،،3پلوامہ،3کٹھوعہ ، ایک ادھمپور اور ایک کا تعلق ریاسی سے ہے۔

 حکومتی بیان

حکومت نے کہا ہے کہ پچھلے چوبیس گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے115نئے مثبت معاملات سامنے آئے ہیںجن میں سے101کا تعلق کشمیر صوبے سے اور 14 کا تعلق جموں صوبے سے ہیں اور اس طرح مثبت معاملات کی تعداد2,036تک پہنچ گئی ہے۔ میڈیا بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے2,036 مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں سے 1,150سرگرم معاملات ہیں ۔ اب تک 859اَفراد شفایاب ہوئے ہیںاور27اَفراد کی موت واقع ہوئی ہے ۔اِس دوران جمعرات کو مزید05مزید مریض صحتیاب ہوئے ہیںجس میںجموں صوبے کے01 اور کشمیر صوبے کے 04 اَفراد شامل ہیں جن کو جموں و کشمیر کے مختلف ہسپتالوں سے رخصت کیا گیا۔بلیٹن میں مزید کہا گیا ہے کہ اب تک 1,53,522ٹیسٹوں کے نتائج دستیاب ہوئے ہیں جن میں سے  28؍مئی 2020ء کی شام تک 1,51,486نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے ۔علاوہ ازیں اب تک1,55,736افراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا سفر ی پس منظر ہے اور جو مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں۔ ان میں 37,009 اَفراد کو ہوم قرنطین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے قرنطین مراکز بھی شامل ہیں ۔ اس کے علاوہ55 اَفراد کو ہسپتال قرنطین میں رکھا گیا ہے۔1150کو ہسپتال آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ 38,021 اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اسی طرح بلیٹن کے مطابق79,474اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔بلیٹن کے مطابق ضلع اننت ناگ میں 289 مثبت معاملے سامنے آئے ہیںجن میں 164 سرگرم ہیں۔ 120 شفایاب ہوئے ہیں اور05 کی موت واقع ہوئی ہے۔کولگام میں255 مثبت معاملات پائے گئے ہیںجن میں228سرگرم معاملات ہیںاور 31صحتیاب ہوئے ہیںاور04 کی موت واقع ہوئی ہے۔اُدھر سری نگر میں اب تک کورونا وائرس کے 220 معاملات کی تصدیق ہوئی ہے جن میں سے 87 سرگرم معاملات ہیں ۔126 مریض صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ07 کی موت واقع ہوئی ہے جبکہ کپواڑہ میں 237مثبت معاملات درج کئے گئے ہیں اور 167 سرگرم معاملات ہیں اور70صحتیاب ہوئے ہیں۔ضلع بارہمولہ میں اب تک کورونامریضوں کی تعداد 169ہوئی ہیںجن میں سے 66سرگرم معاملات ہیں اور05مریضوں کی موت واقع ہوئی ہیںاور 98صحتیاب ہوئے ہیں۔بانڈی پورہ میں اب تک 145 مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں سے12 سرگرم معاملات ہیں ، 132مریض صحتیاب ہوئے ہیںجبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔اِدھرضلع شوپیان میں 149 مثبت معاملات سامنے آئے ہیںجن میں 42 سرگرم ہیں اور 107صحتیا ب ہوئے ہیں۔ضلع بڈگام میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی کُل تعداد اب تک 89ہوئی ہیںجن میں سے 36سرگرم ہیں اور51اَفراد صحتیاب ہوئے ہیںجبکہ02 کی موت واقع ہوئی ہے ۔گاندربل میں کل 31مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں07 سرگرم معاملات ہیں اور 24 اَفراد شفایاب ہوئے ہیں۔پلوامہ ضلع میں کووِڈ ۔19کے 52 معاملات کی تصدیق ہوئی ہے جن میں 40 سرگرم معاملات ہیں اور 12 صحتیاب ہوئے ہیں۔ اسی طرح  جموں میں وائر س کے 121مثبت معاملات پائے گئے ہیں جن میں83سرگرم معاملات ہیں اور36  صحت یاب ہوئے ہیںاور02 کی موت واقع ہوئی ہیجبکہ رام بن میں75معاملات سامنے آئے ہیںجن میں 72سرگرم معاملات ہیں اور03 شفایاب ہوئے ہیںجبکہ کٹھوعہ میں59مثبت معاملہ سامنے آئے ہیںجن میں 43 سرگرم معاملات ہیںاور 16اَفراد صحتیاب ہوئے ہیں۔ دریں اثنأاودھمپور ضلع میں اب تک کورونا مریضوں کی کُل تعداد 51 ہوئی ہیں جن میں سے 28معاملات سرگرم ہیں۔ 22صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔ ضلع سانبہ میں 32 مثبت معاملے کی تصدیق ہوئی ہے جن میں 22 سرگرم معاملات ہیں اور 10اَفراد شفایاب ہوئے ہیں۔اس طرح پونچھ میں24 معاملے سامنے آئے ہیںجو سبھی معاملات سرگرم ہیں ۔راجوری ضلع میں کورونا کے اب تک15 مریض پائے گئے ہیںجن میں 11 معاملے سرگرم ہیں اور 04مریض شفایاب ہوئے ہیں اورریاسی میں بھی13 معاملات سامنے آئے ہیں جن میں10سرگرم ہیں اور03 اَفراد شفایاب ہوئے ہیں۔ کشتواڑ میں08 مثبت معاملے سامنے آئے ہیں جن میں07 معاملے سرگرم ہیں اورایک پوری طرح سے صحتیاب ہوا ہے جبکہ ڈوڈہ میں 02 معاملات سامنے آئے ہیںجن میں سے ایک معاملہ سرگرم ہے اور ایک معاملہ صحتیاب ہوا ہے ۔
 

چکمہ دینے والے 4شہری 

 ایک کا ٹیسٹ مثبت آیا

اشرف چراغ 
 
کپوارہ //شمالی ضلع کپوارہ کے آورہ سے تعلق رکھنے والے4شہری بیرون ریاست سے واپس آکر انتظامیہ کی آنکھوں میں دھول جھونک کر گھر پہنچ گئے ہیں۔تاہم ضلع انتظامیہ کو مقامی لوگوں نے اطلاع دیکر چاروں افراد کو قرنطین مین داخل کیا گیا ہے۔ان میں سے ایک کا ٹیسٹ مثبت آیا ہے۔ ترہگام کے مضافاتی دیہات آوورہ کے 4 شہری اتر پردیش کے الہ آ باد شہر میں درماندہ تھے اور17مئی کو گھر واپس لو ٹے ۔انتظامیہ کے مطابق یہ شہری الہ آ باد سے ایک نجی گا ڑی میں گھر واپس لو ٹے اور انہوں نے جموں سے کپوارہ تک سبھی جگہوں پر انتظامیہ کی آنکھوں میں دھول جھونکی۔کپوارہ پہنچنے کے بعد یہ چاروں گھر میں ہی رہے ۔ لیکن ہمسائیوں نے ان کے بارے میں انتظامیہ کو مطلع کیا جس کے بعد چاروں کو 21مئی کو قرنطین منتقل کیا گیا جن میں سے بعد میں ایک کا ٹیسٹ مثبت قرار دیا گیا۔اس دوران جمعرات کو  پولیس نے علاقہ کے تمام راستوں پر خار دار تار لگا کر لوگو ں کی نقل و حمل پر مکمل پابندی عائد کر دی اور لوگو ں کو اپنے ہی گھرو ں میں قیام کر نے کے لئے کہا گیا ۔محکمہ صحت کی ایک ٹیم کو علاقہ میں روانہ کیا گیا جہا ں انہو ں نے دوائی چھڑ کی اور لوگو ں کو جانکاری فراہم کی ۔
 

جموں وکشمیر یوٹی کی جانب سے پی ایم فنڈ میں 10 کروڑ کا عطیہ 

نیوز ڈیسک
 
 جموں//جموںوکشمیر یوٹی نے پرائم منسٹرس سٹیزن اسسٹنس اینڈ ریلیف اِن ایمرجنسی سچیوویشنز فنڈ ( پی ایم   سی اے آر ای ایس فنڈ )،جوکہ حکومت کی جانب سے ملک بھر میں کووِڈ۔19وَبا کی روکتھام کے لئے اُٹھائے گئے اِقدامات کے لئے قائم کیا گیا ہے ، 10کروڑ روپے کا عطیہ پیش کیا ہے ۔لیفٹیننٹ گورنر گریش چندر مرمو نے جموںوکشمیر ریلیف فنڈ میں سے یہ رقم جے کے یوٹی کی جانب سے پی ایم   کیئریس فنڈ کے لئے بطور عطیہ واگزار کی ہے۔
 
 
 
 

کورونا لہر کچھلو قاضی آ باد پہنچ گئی 

ایک ہی کنبہ کے 10افراد مبتلا

اشرف چراغ 
 
کپوارہ //سرحدی ضلع کپوارہ میں کورونا وائرس کی لہرگونی پورہ ہندوارہ کے بعد کچھلو قاضی آ باد پہنچ گئی جہاں ایک ہی کنبہ کے6خواتین سمیت 10افراد کو وائرس میں مبتلا پایا گیا ۔کرالہ گنڈ سے 3کلو میٹر دو ر کچھلو قاضی آ باد کے ایک کنبے کا نوجوان وتر گام میں ایک بیکر ی دکان میں بطورسیلز مین کام کرتا ہے۔ ایک ہفتہ قبل وتر گام رفیع آباد میں دو بیکری مالکان کا ٹیسٹ مثبت آیا تھا جس کے بعد یہاں بیکری مصوعات بھی ضایع کی گئیں تھیں۔کچھلو قاضی آ باد کا نوجوان جب گھر پہنچ گیا تو اس کے نمو نے حاصل کئے گئے جو بعد میں مثبت آئے ۔مزکورہ متا ثرہ نوجوان کو فوری طور آیئسو لیشن منتقل کیا گیا تاہم ان کے افراد خانہ کے بھی نمونے حاصل کئے گئے جو جمعرات کو مثبت آئے اور اس طرح ایک ہی کنبہ کے 10افراد کورنا میں مبتلا پائے گئے ہیں۔متاثرین میں 6خواتین اور 6مرد شامل ہیں۔ مردوں میں دو کی عمر 80اور 60سال ہے جبکہ خواتین میں 2کی عمر 58برس ہے۔ کنبہ کے10افراد کے ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد پورے علاقہ میں تشویش کی لہر دو ڑ گئی ہے اور انتظامیہ نے جمعرات کی شام کو کچھلو کو ریڈ زون قرار دیا ہے ۔علاقہ میں طبی ٹیمو ں کو روانہ کیا گیا اور جمعرات کو مزید 70افراد کے نمونے حاصل کئے گئے ہیں ۔
 

۔115 افراد میں سے 93کا سفری پس منظر

۔80روز میں 896 متاثرین بیرونی ریاستوں سے لوٹے 

پرویز احمد
 
سرینگر //جمعرات کو مثبت قرار دئے گئے 115افراد میں سے 93متاثرین ایسے ہیں، جو مختلف ممالک یا بیرون ریاستوں سے لوٹے ہیں۔پچھلے 80روز میں کورنا وائرس سے متاثر ہونے والے 2036افراد میں سے 44فیصد یعنی896 مریضوں نے کورونا وائرس سے متاثرہ ممالک مثلاً چین، کوریا ، امریکہ، افریقہ ، ملیشیاء ، انڈونیشا ، سعودی عرب اور جنوبی مشرقی ممالک کے علاوہ بھارت کی مختلف ریاستوں کا سفر کیا ہے۔سرکاری اعدادوشمار کے مطابق جموں و کشمیر میں 56فیصد مریض مقامی سطح پر رابطے میں آنے کی وجہ سے وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔ ضلع اننت ناگ کے289متاثرین میں سے 22افراد ایسے ہیں۔ کولگام ضلع میں متاثرہ 255افراد میں سے 187افرادکا سفری پس منظر ہے۔ضلع سرینگر کے 220مریضوں میں سے 95متاثرین مختلف ممالک اور ریاستوں کا سفر کرکے واپس لوٹے ہیں۔ضلع کپوارہ کے 237متاثرین میں سے 141افرا نے مختلف ممالک اور ریاستوں کا سفر کیا ہے۔ شمالی کشمیر کے بارہولہ ضلع میں169افراد میں سے 39بیرون ریاستوں سے سفر کرکے واپس لوٹے ہیں جبکہ بانڈی پورہ کے 145میں سے 17افراد نے مختلف ریاستوں اور ممالک کا سفر کیا ہے۔ شوپیاں ضلع میں متاثر ہونے والے 149افراد میں سے 132مقامی سطح جبکہ 17کا سفری پس منظر ہے۔ بڈگام ضلع کے 89مریضوں میں سے 61افراد مقامی سطح پر جبکہ 28افراد بیرون ریاستوںسے آنے کی وجہ سے متاثر ہوئے۔ گاندر بل ضلع کے 31افراد میں سے 26مقامی سطح جبکہ 5مریضوں نے کورونا سے متاثرہ علاقوں اور ممالک کا سفر کیا ہے۔  پلوامہ ضلع کے 52مریضوں میں سے 20مقامی سطح جبکہ 32نے مختلف ریاستوں کا سفر کیا ہے۔ جموں صوبے کے جموں ضلع میں 121افراد میں سے 47مقامی سطح پر متاثر ہوئے جبکہ 74افراد نے مختلف ممالک اور ریاستوں کا سفر کیا ہے۔ رام بن ضلع کے 75افراد میں سے 4مقامی طور پر متاثر ہوئے جبکہ 71افراد بیرون ممالک اور ریاستوں میں متاثر ہوئے ہیں۔ کٹھوعہ ضلع میں59میں سے 3مقامی سطح پر رابطے میں آنے کی وجہ سے متاثر ہوئے جبکہ56افراد نے مختلف ممالک اور ریاستوں کا سفر کیا ہے۔ ادھمپور ضلع میں51افراد وائرس سے متاثر ہوئے جن میں20مقامی رابطے کی وجہ سے اور31سفر کرنے کی وجہ سے متاثر ہوئے ہیں۔ سانبہ ضلع میں 32میں سے 6 مقامی رابطے کی وجہ سے اور26مختلف ریاستوں کا سفر کرنے کی وجہ سے متاثر ہوئے ہیں۔  پونچھ کے 24مریضوں میں سے 2مقامی رابطے جبکہ 22افراد نے مختلف ریاستوں اور ممالک کا سفر کیا ہے۔ راجوری ضلع کے 15کورونا وائرس مریضوں میں سے14افراد نے مختلف متاثرہ ممالک اور ریاستوں کا سفر کیا ہے جبکہ ایک شخص رابطے میں آنے کی وجہ سے متاثر ہواہے۔ ریاسی ضلع میں 13افراد وائرس سے متاثر ہوئے ہیں جن میں سے 9نے مختلف ممالک اور ریاستوں کا سفر کیا ہے جبکہ 4افراد ان کے ساتھ رابطے میں آنے کی وجہ سے متاثر ہوئے ہیں۔ کشتواڑ ضلع میں صرف 8افراد متاثر ہیں اور ان سبھی افراد نے کورونا وائرس سے متاثر ہ ممالک اور ریاستوں کا سفر کیا ہے۔ جموں کے ڈوڈہ ضلع میں 2افراد وائرس سے متاثر ہوئے ہیں اور ان دنوں کے مختلف ممالک کا سفر کیا ہے۔ 
 
 

اوڑی اور کنگن میں2کیس مثبت

۔ 6کنبوں کے34اہل خانہ قرنطین منتقل

ظفر اقبال+غلام نبی رینہ
 
 اوڑی+کنگن//لمبر بونیار اوڑی میں گزشتہ روز 80 سالہ شہری کا کووڈ۔19 ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد گائوں کو ضلع انتظامیہ نے ریڈ زون قرار دیا ہے۔بلاک میڈیکل آفیسر بونیار ڈاکٹر پرویز مسعودی نے بتایا کہ لمبر بونیار کے بزرگ شہری جس کا ٹیسٹ مثبت پایا گیا ہے جسکی نہ کوئی سفری تفصیل ہے نہ ہی کسی کوڈ مریض کے رابطے میں ہونے کی اطلاع ہے۔ایس ڈی ایم اوڑی ریاض احمد ملک نے بتایا کہ یہ بزرگ شہری دمہ(COPD) بیماری میں مبتلا ہے جو 23 مئی کو جی ایم سی بارہمولہ علاج کے لئے گیا تھا جہاں سے اسے SMHS منتقل کیا گیا تھا اور 25 مئی کو وہ ایک نجی سومومیں سرینگر اسپتال گیا جہاں پراْسکے نمونے ٹیسٹ کیلئے لئے گئے۔ ایس ڈی ایم نے مزید بتایا کہ انتظامیہ نے لمبر بونیار میں 2 کنبوںکے علاوہ سومو ڈرائیور سمیت 18 افراد کو شاہکوٹ قرنطین مرکز منتقل کردیا ہے۔اُس سومو ڈرائیور کی بھی تلاش ہے جس کیساتھ وہ بارہمولہ سے سرینگر گیا تھا۔ادھرتین روز قبل فراؤ گنڈ میں حاملہ خاتون کا کورونا وائرس ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد جمعرات کو ضلع انتظامیہ نے اپاری پورہ فراؤ کو ریڈ زون قرار دیا ۔مذکورہ خاتون کے رابطے میں آئے 4کنبوں کے 16اہل خانہ کو مانسبل قرنطین مرکز منتقل کردیا گیا ہے۔ نائب تحصیلدار گنڈ محمد مقبول کو ایڈمسٹریٹر تعینات کیا گیا ہے اور انکو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ ریڈ زون اور بفر زون والے بستی کے لوگوں کو طبی سہولیات اور کھانے پینے کا سامان فراہم کرے تاکہ ان کو کسی طرح کے مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔
 

تازہ ترین