تبلیغی جماعت سے متعلق جعلی خبروں پرسپریم کورٹ برہم

حکومت اور پریس کونسل آف انڈیا کو نوٹس،براڈ کاسٹ ایسوسی ایشن کو بھی فریق بنانے کی ہدایت

تاریخ    28 مئی 2020 (00 : 03 AM)   


یو این آئی
 نئی دلی //تبلیغی جماعت اور کورونا وائرس کو لے کر بے بنیاد خبریں نشر کرنے اور نفرت انگیزی پھیلانے کے معاملے کو لیکر جمعتہ علماء  ہند کی جانب سے داخل کی گئی عرضی پر سپریم کورٹ نے حکومت اور پریس کونسل آف انڈیا کو نوٹس جاری کیا ہے۔  چیف جسٹس آف انڈیا اے ایس بوبڑے، جسٹس اے ایس بوپننا اور جسٹس رشی کیش رائے پر مشتمل تین رکنی بینچ کو سینئر ایڈوکیٹ دوشینت دوے (صدر سپریم کورٹ بارایسوسی ایشن) نے بتایا کہ تبلیغی مرکز کو بنیاد بناکر پچھلے دنوں میڈیا نے جس طرح اشتعال انگیز مہم شروع کی یہاں تک کہ اس کوشش میں صحافت کی اعلیٰ اخلاقی قدروں کو بھی پامال کردیا گیا۔ اس سے مسلمانوں کی نہ صرف یہ کہ سخت دل آزاری ہوئی ہے بلکہ ان کے خلاف پورے ملک میں منافرت میں اضافہ ہوا ہے۔ اس لئے اس معاملے میں واجب کارروائی ہونی چاہئے۔سپریم کورٹ نے اس معاملے میں پریس کونسل آف انڈیا اور اور حکومت سے جواب طلب کرتے ہوئے پوچھا ہے کہ ضابطے کے مطابق آخر اس پورے معاملے میں کیا کاروائی کی گئی ہے۔ عرضی پر کل سپریم کورٹ آف انڈیا میں سماعت عمل میں آئی، جس کے بعد عدالت نے مرکزی حکومت کے وکیل سے کہا کہ وہ عرضی گزار کو بتائے کہ اس تعلق سے حکومت نے کیبل ٹیلی ویژن نیٹ ورک قانون کی دفعات 19 اور 20 کے تحت اب تک ان چینلز پر کیا کارروائی کی ہے۔ اس کے ساتھ ہی عدالت نے جمعتہ علماء  ہند کو براڈ کاسٹ ایسوسی ایشن کو بھی فریق بنانے کا حکم دیا۔عدالت نے سالسٹرجنرل آف انڈیا تشارمہتا کو کہا کہ یہ بہت سنگین معاملہ ہے، جس سے لاء  اینڈآڈرکا مسئلہ ہوسکتا ہے، لہذا حکومت کو بھی اس جانب توجہ دینا ضروری ہے۔
 
 
 
 

۔34ممالک کے 376شہریوں کیخلاف چارج شیٹ داخل

نئی دلی // دلی پولیس نے نئی دلی میں تبلغی مرکز پر ہوئے اجتماع میں شرکت کرنے والے34ممالک کے  تبلیغی جماعت سے وابستہ376 اراکین کے خلاف عدالت میں چارچ شیٹ داخل کیا ۔پولیس نے20ممالک کے 82افراد کے خلاف 20چارج شیٹ منگل کو جبکہ 14ممالک کے 294افراد کے خلاف بدھ کو 15چارج شیٹ داخل کئے ۔چارج شیٹ میں پولیس نے کہا کہ مذکورہ غیر ملکی شہریوں نے ویزا قوانین کی خلاف ورزی کی اور کورونا وائرس وبا کے دوران بھارت میں سرکاری ہدایات کی خلاف ورزی کی ۔اس کے علاوہ ان اراکین نے دفعہ188کی خلاف ورزی کی ہے ۔مرکزی حکومت نے ان تمام غیر ملکی شہریوں کے ویزے معطل کئے ہیں تاہم ان اراکین کو ابھی تک گرفتار نہیں کیا گیا ہے ۔یہ افراد ملیشیا ،تھالی لینڈ ،بنگلہ دیش ،نیپال اور سری لنکا سے ہے جبکہ کچھ کا تعلق مختلف افریقی ممالک سے ہے ۔منگل کو جن 82غیر ملکیوں کے خلاف چارج شیٹ داخل کی گئی ان میں سے 4افغانستان ،7برازیل اور 7چین ،5امریکہ ،2آسٹریلیا جبکہ10سودی عرب ،14فجی اور 6سویڈین اور 6فلپاین سے ہیں ۔یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ نئی دلی میں تبلیغی جماعت کے مرکز میں 9ہزار تبلیغی اراکین نے شرکت کی تھی۔
 اور پولیس کا کہنا ہے کہ غیر ملکی اراکین بھارت ٹورسٹ ویزے پر آئے تھے اور پھر نظام الدین مرکز پر مذہبی اجتماع میں شرکت کی ۔
 

تازہ ترین