تازہ ترین

مزید 2اموات، 152متاثر

اموات کی کل تعداد 26 پہنچ گئی،2ڈاکٹر، اسپتال کاڈرائیور، 11طلباء اور 5حاملہ خواتین متاثرین میں شامل

تاریخ    28 مئی 2020 (00 : 03 AM)   


پرویز احمد
 سرینگر // بدھ کو بھی وادی میں کورونا کا قہر جاری رہا اور ہلاکتوں کی تعداد میں مزید 2افراد کا اضافہ ہوا۔بدھ کو55 اور 70 برس کے دومریضوں کی موت کے بعد جموں و کشمیر میں مہلوکین کی تعداد 26تک پہنچ گئی ہے جن میں سے 3جموں اور23کشمیر سے ہیں۔بدھ کو 2زیر تربیت ڈاکٹر، سی ڈی اسپتال کے ایمبولنس ڈرائیور، 5حاملہ خواتین اور 11طلبہ سمیت 152افراد کی رپورٹ مثبت آگئی۔اس طرح کل تعداد 1921ہوگئی ہے جن میں سے 386جموں جبکہ 1535کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ سرکاری طور پر 162کے نمونے مثبت آنے کے اعدادوشمار ظاہر کئے گئے ہیں تاہم کشمیر عظمیٰ نے منگل کی شام 10متاثرین کی تفصیلات پہلے ہی 101 متاثرین کی تعداد میں شامل کی تھی۔بدھ کومثبت قرار دئے گئے 152افراد میں سے 27کولگام، 23کپوارہ، 19سرینگر، بارہمولہ 6، اننت ناگ 4،2بانڈی پورہ، 10شوپیاں، 2بڈگام،21پلوامہ،4جموں،1رام بن، 3کٹھوعہ، 11ادھمپور، 3سانبہ، 11پونچھ،2راجوری اور 3ریاسی کے شامل ہیں۔

۔3دنوں میں 5اموات

کشمیر میں کورونا وائرس سے اموات کا سلسلہ بدھ کو بھی جاری رہا اور پچھلے تین دنوں کے دوران 5افراد وائرس کا شکار بن گئے ہیں۔ منگل اور بدھ کی درمیانی رات اننت ناگ کے سرنل علاقے سے تعلق رکھنے والا 70سالہ معمر شخص کورونا کی وجہ سے فوت ہوگیا ۔جی ایم سی اننت ناگ کے پرنسپل ڈاکٹر شوکت جیلانی نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’70سامہ معمر شخص بلڈ پریشر، امراض قلب اور دیگر بیماریوں میں پہلے سے ہی مبتلا تھا لیکن 25 مئی کو چھاتی میں تکلیف کی وجہ سے اس کو اسپتال میں داخل کیا گیا ‘‘۔ ڈاکٹر شوکت جیلانی نے بتایا ’’70سالہ شخص نمونیا کا شکار ہوگیا تھا اور ڈاکٹروں نے کورونا کی تشخیص کیلئے بھی نمونے حاصل کئے تھے‘‘۔ڈاکٹر شوکت نے بتایا’’معمر شخص منگل اور بدھ کی درمیانی رات  حرکت قلب بند ہونے سے فوت ہوگیا لیکن شک کی وجہ سے  اسکی لاش کو تشخیصی رپورٹ آنے تک اپنی تحویل میں لیا گیا‘‘۔ڈاکٹر شوکت  نے بتایا’’ بدھ  بعد دو پہر اسکی رپورٹ مثبت آئی ہے اور اب اس کے اہلخانہ بھی قرنطینہ میں منتقل کیا جارہا ہے اوررابطوں کی تلاش شروع کی گئی ہے‘‘۔ ادھربدھ کو سی ڈی اسپتال میں فوت ہونے والے 55سالہ شخص کو 18مئی کوصدر اسپتال سرینگر سے سی ڈی اسپتال منتقل کیا گیا تھا۔ جی ایم سی سرینگر ترجمان ڈاکٹر سلیم ٹاک نے بتایا ’’ 55سالہ شخص کوappendexکی جراحی کیلئے اسپتال میں داخل کیا گیا لیکن اسکی رپورٹ مثبت آئی‘‘۔ انہوں نے کہا ’’  appendexمیں شدید تکلیف کی وجہ سے ڈاکٹروں کو اسکی جراحی کرنا پڑی اور جراحی کے بعد 18مئی کو ہی اس کو صدر اسپتال سے سی ڈی اسپتال منتقل کیا گیا ‘‘۔ڈاکٹر سلیم نے بتایا کہ سی ڈی اسپتال کے انتہائی نگہداشت والے وارڈ میں مریض صحتیاب ہورہا تھا اور حالت میں بہتری کے بعد اسکو آکسیجن دینا بھی بند کیا گیا تھا‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ بدھ کو دن کے 4بجے اچانک حرکت قلب بند ہونے کی وجہ سے مذکورہ شخص فوت ہوگیا ‘‘۔

سی ڈی اسپتال

 میڈیکل کالج ترجمان ڈاکٹر محمد سلیم خان نے بتایا’’سی ڈی اسپتال میں637نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں89 مثبت قرار دئے گئے جبکہ548کی رپورٹیں منفی آئیں‘‘ ۔انہوں نے کہا ’’89میں سے  20پلوامہ،20 کپوارہ، 16بارہمولہ، 10شوپیاں، 9کولگام ، 7سرینگر ،3اننت ناگ، 2بانڈی پورہ اور ایک کا تعلق بڈگام سے ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ 89افراد میں جی ایم سی سرینگر کے دو طلبہ، سی ڈی اسپتال سرینگر کا ڈرائیور بھی شامل ہے۔ڈاکٹر سلیم خان نے بتایا کہ اس کے علاوہ 11طلبہ اور 5حاملہ خواتین بھی شامل ہیں۔

 ادھمپور، جموں،لال پتھ، ماڈرن

کمانڈ اسپتال ادھمپور میں انتظامی قرنطینہ میں رکھے گئے افراد میں سے مزید 18افراد مثبت قرار دئے گئے ۔ادھرگورنمنٹ میڈیکل کالج جموں اسپتال میں زیر علاج مشتبہ مریضوں میں مزید 5کی رپورٹ مثبت قرار دی گئی ۔دریں اثناء لال پتھ اور مارڈرن لیبارٹریوں میں سے مزید 9افراد کی رپورٹیں مثبت آئی ہیں۔

سکمز

 میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے بتایا’’ 24گھنٹوں کے دوران1440نمونوں کی تشخیص کی گئی اور اُ ن میں سے 29مثبت جبکہ1411منفی قرار دئے گئے۔’’انہوں نے کہا ’’29میں سے18کولگام اور11کا تعلق سرینگر ضلع سے ہے۔ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ سرینگر ایئر پورٹ سے حاصل کئے گئے نمونوں میں سے سرینگر کے7افراد مثبت آئے جن میں سے 4باغات برزلہ، اونتہ بھون صورہ اور فتح کدل سرینگر سے ایک ایک شخص کی رپورٹ مثبت آئی‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’سی ایم او سرینگر کے نمونوں میں سے 4مثبت قرار دئے گئے جن میں 2چھتہ بل سرینگر، ایک بمنہ اور ایک کا تعلق فتح کدل سرینگر سے ہے ‘‘۔ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ضلع اسپتال کولگام کی طرف سے بھیجے گئے نمونوں میں سے  18کی رپوٹیں مثبت آئیں ہیں جن میںبگام کولگام کے 2افراد بھی شامل ہیں‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ ضلع اسپتال پلوامہ کے نمونوں میں سے 17کی رپورٹیں مثبت قرار دی گئیں جن میں سے ایک 16سالہ لڑکی کا تعلق نرسنگ پورہ کولگام سے ہے جبکہ دیگر16مریضوں کا تعلق چھتہ بل کولگام سے ہے۔ ڈاکٹر جان نے بتایا’’ بدھ کو مثبت قرار دئے گئے افراد نے بیرون ریاستوں کا سفر کیا ہے اور وہ پچھلے چند دنوں کے دوران ہی وادی واپس لوٹے ہیں‘‘۔ انسٹی ٹیوٹ کے شعبہ عوامی رابطہ کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر کی جانب سے جاری کئے گئے اعدادوشمار میںبتایا گیا ہے کہ ابتک کل480مشتبہ مریضوں کا داخلہ کیا گیا جن میں سے410مریضوں کو قرنطینہ کی مدت مکمل کرنے کے بعد گھر روانہ کردیا گیا جبکہ51مثبت قرار دئے گئے مریضوں کو گھر بھیجا گیا ہے۔ ابتک48250نمونوں کی تشخیص کی گئی ہے جن میں سے47480کو منفی قرار دیا گیا ہے جبکہ770مریضوں کی رپورٹیں مثبت آئیں ہیں۔ 

حکومتی بیان

جموں//حکومت نے کہا ہے کہ پچھلے چوبیس گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے162نئے مثبت معاملات سامنے آئے ہیںجن میں سے124کا تعلق کشمیر صوبے سے اور 38 کا تعلق جموں صوبے سے ہیں اور اس طرح مثبت معاملات کی کل تعداد1921تک پہنچ گئی ہے۔حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے روزانہ میڈیا بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے1921 مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں سے 1041سرگرم معاملات ہیں ۔ اب تک 854اَفراد شفایاب ہوئے ہیںاور26اَفراد کی موت واقع ہوئی ہے ۔اِس دوران بدھ کو مزید21مزید مریض صحتیاب ہوئے ہیںجس میںجموں صوبے کے05 اور کشمیر صوبے کے 16 اَفراد شامل ہیں ، جن کو جموں و کشمیر کے مختلف ہسپتالوں سے رخصت کیا گیا۔بلیٹن میں مزید کہا گیا ہے کہ اب تک 1,45,162ٹیسٹوں کے نتائج دستیاب ہوئے ہیں جن میں سے  27؍مئی 2020ء کی شام تک 1,43,241نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے ۔علاوہ ازیں اب تک1,46,152افراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا سفر ی پس منظر ہے اور جو مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں۔ ان میں 31,919 اَفراد کو ہوم قرنطین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے قرنطین مراکز بھی شامل ہیں ۔ اس کے علاوہ57 اَفراد کو ہسپتال قرنطین میں رکھا گیا ہے۔1041کو ہسپتال آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ 35,843 اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اسی طرح بلیٹن کے مطابق77,266اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔بلیٹن کے مطابق ضلع بانڈی پورہ میں اب تک 145 مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں سے12 سرگرم معاملات ہیں ، 132مریض صحتیاب ہوئے ہیںجبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔اُدھر سری نگر میں اب تک کورونا وائرس کے 209 معاملات کی تصدیق ہوئی ہے جن میں سے 76 سرگرم معاملات ہیں ۔126 مریض صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ07 کی موت واقع ہوئی ہے۔اننت ناگ میں 282 مثبت معاملے سامنے آئے ہیںجن میں 159 سرگرم ہیں۔ 118 شفایاب ہوئے ہیں اور05 کی موت واقع ہوئی ہے۔ضلع بارہمولہ میں اب تک کورونامریضوں کی تعداد 153ہوئی ہیںجن میں سے 51سرگرم معاملات ہیں اور04مریضوں کی موت واقع ہوئی ہیںاور 98صحتیاب ہوئے ہیں۔ضلع شوپیان میں 141 مثبت معاملات سامنے آئے ہیںجن میں 34 سرگرم ہیں اور 107صحتیا ب ہوئے ہیں جبکہ کپواڑہ میں 192مثبت معاملات درج کئے گئے ہیں اور 122 سرگرم معاملات ہیں اور70صحتیاب ہوئے ہیں۔ضلع بڈگام میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی کُل تعداد اب تک78ہوئی ہیںجن میں سے 25سرگرم ہیں اور51اَفراد صحتیاب ہوئے ہیںجبکہ02 کی موت واقع ہوئی ہے ۔گاندربل میں کل 31مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں07 سرگرم معاملات ہیں اور 24 اَفراد شفایاب ہوئے ہیں۔اِدھرکولگام میں255  مثبت معاملات پائے گئے ہیںجن میں230سرگرم معاملات ہیںاور 21صحتیاب ہوئے ہیںاور04 کی موت واقع ہوئی ہے۔پلوامہ ضلع میں کووِڈ ۔19کے 49 معاملات کی تصدیق ہوئی ہے جن میں 37 سرگرم معاملات ہیں اور 12 صحتیاب ہوئے ہیں۔ اسی طرح  جموں میں وائر س کے 113مثبت معاملات پائے گئے ہیں جن میں75سرگرم معاملات ہیں اور36  صحت یاب ہوئے ہیںاور02 کی موت واقع ہوئی ہے۔ اودھمپور ضلع میں اب تک کورونا مریضوں کی کُل تعداد 50 ہوئی ہیں جن میں سے 27معاملات سرگرم ہیں۔ 22صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔دریں اثنأ ضلع سانبہ میں 32 مثبت معاملے کی تصدیق ہوئی ہے جن میں 22 سرگرم معاملات ہیں اور 10اَفراد شفایاب ہوئے ہیںاورراجوری ضلع میں کورونا کے اب تک15 مریض پائے گئے ہیںجن میں 11 معاملے سرگرم ہیں اور 04مریض شفایاب ہوئے ہیں جبکہ کٹھوعہ میں56مثبت معاملہ سامنے آئے ہیںجن میں 40 سرگرم معاملات ہیںاور 16اَفراد صحتیاب ہوئے ہیں۔ کشتواڑ میں08 مثبت معاملے سامنے آئے ہیں جن میں07 معاملے سرگرم ہیں اورایک پوری طرح سے صحتیاب ہوا ہے جبکہ رام بن میں75معاملات سامنے آئے ہیںجن میں 72سرگرم معاملات ہیں اور03 شفایاب ہوئے ہیںاورریاسی میں بھی12 معاملات سامنے آئے ہیں جن میں09 سرگرم ہیں اور03 اَفراد شفایاب ہوئے ہیں۔اس طرح پونچھ میں23 معاملے سامنے آئے ہیںجو سبھی معاملات سرگرم ہیں جبکہ ڈوڈہ میں 02 معاملات سامنے آئے ہیں اور دونوں معاملات سر گرم ہیں۔
 

متاثرین میں65افراد سفر سے لوٹے ہیں

پر ویز احمد
 
سرینگر //جموں و کشمیر میں بدھ کو مثبت قرار دئے گئے 152افراد میں سے 65افراد نے بیرون ممالک یا بھارت کی مختلف ریاستوں کا سفر کیا ہے۔بیرون ریاستوں اور ممالک کا سفر کرنے والے 65افراد میں سے سرینگر سے تعلق رکھنے والے 11افراد نے دلی کا سفر کیا ہے جبکہ سکمز صورہ میں مثبت قرار دئے گئے کولگام ضلع سے تعلق رکھنے والے 18مریض احمد آباد گجرات سے واپس لوٹ کر آئے ہیں۔ بارہمولہ سے تعلق رکھنے والے 15افراد میں سے 6نے بنگلہ دیش اور 7مریض دلی کا سفر کرکے واپس لوٹے ہیں جبکہ دیگر مریض بھی بھارت کی مختلف ریاستوں سے واپس لوٹے ہیں جن میں زیادہ تر مختلف ریاستوں میں زیر تعلیم طلبہ ہیں۔ 
 

سب سے متاثرہ گائوں وائرس سے پاک 

ہیر پورہ شوپیان کے سبھی 72شفایاب

شاہد ٹاک
 
 شوپیان//جنوبی کشمیر کے شوپیان ضلع میں سب سے بری طرح متاثر ہونے والا گائوں ہیر پورہ کورونا سے آزاد قرار دیا گیا ہے۔یہاں غالباً وادی کے کسی بھی گائوں میں سب سے زیادہ لوگ وائرس سے متاثر ہوئے تھے جن کی تعداد 72تھی۔ تاریخی مغل روڑ پر واقع خوبصورت گائوں ہیر پورہ 400کنبوں پر مشتمل ہے۔ہیر پورہ گائوں میں 8اپریل کو بیک وقت 4افراد دہلی سے واپسی کے بعد کورونا مثبت قرار دیئے گئے تھے۔اسکے بعد حکام نے مذکورہ گائوں میں رابطوں کی نشاندہی کرنے کا عمل شروع کردیا اور متعدد میڈیکل ٹیموں نے تقریباً گائوں میں موجود سبھی لوگوں کے نمونے حاصل کئے جن میں سے کورونا کیس سامنے آتے گئے اور تعداد بھی 72تک بڑھتی گئی۔ 8 اپریل کو جونہی 4افراد کے ٹیسٹ مثبت آئے تو انکے رابطے میں آئے  8افراد  14اپریل کو ضلع ہسپتال شوپیان میں رضاکارانہ طور آئے ۔۔ ڈاکٹروں نے فوراً ہی اْن کے نمونے حاصل کئے اور 8افراد سے کہا گیا کہ وہ گھروں میں علیحدہ رہیں۔ اسکے بعد ہیر پورہ میں ہر گذرتے دن کیساتھ مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوا۔ انتظامیہ نے فوری طور پر ہیرپورہ علاقے کو ریڈ زون قرار دیتے ہوئے گائوں کے اندر اور یہاں سے باہر جانے کے راستے سیل کئے اور گاؤں کی ناکہ بندی کر کے رکھی۔گائوں میں کورونا پر پانے کیلئے چیف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر رمیش نے کلید ی رول ادا کیا جنہوں نے خود کو عوام کیلئے وقف کیا اور انکے ساتھ ڈاکٹروں کی ایک مجبوظ ٹیم اور دیگر طبی عملے نے انتھک محنت کی۔دو روز قبل یہاں سبھی 72متاثرین کو  صحتیاب ہونے کے بعد گھروں کو بھیج دیا گیا۔
 

۔95420 درماندہ شہریوں کی واپسی

نیوز ڈیسک
 
جموں// 95420 جموں کشمیر کے لوگوں کو حکومت نے براستہ لکھن پور اور خصوصی ٹرینوں کے ذریعے اب تک واپس یو ٹی کووڈ 19 سے متعلق تمام لازمی رہنما خطوط اور قواعد و ضوابط پر سختی سے عمل پیرا رہ کر لائے گئے ۔متعلقہ ضلع انتظامیہ واپس آنے والوں کی طبی جانچ اور 14 دن کے کورنٹین کو یقینی بنانے کیلئے تمام تر اقدامات اٹھا رہی ہیں ۔ سرکاری عداد و شمار کے مطابق اب تک مختلف ریاستوں اور یو ٹیز سے درماندہ مسافروں کو لیکر آئی34 کووڈ خصوصی ریل گاڑیاں جموں اور اودھمپور ریلوے سٹیشنوں تک پہنچی ہیں ۔دریں اثنا قریبا652 مسافر بشمول طلبا پہلے ہی وندے بھارت مشن کے تحت 4 کووڈ خصوصی پروازوں کے ذریعے سرینگر بین الاقوامی ہوائی اڈے پر پہنچے ہیں ۔ اس طرح 34 کووڈ خصوصی ریل گاڑیوں ، پروازوں اور درجنوں گاڑیوں میں قریباً95420 درماندہ یو ٹی کے لوگوں کو اب تک واپس لایا گیا ۔  
 

ماگام پولیس کے 7اہلکار مثبت قرار

وادی میں متاثرہ اہلکاروں کی تعداد 88

پرویز احمد
 
سرینگر //ماگام پولیس اسٹیشن کے 7پولیس اہلکار مثبت قرار دیئے گئے ہیں، جنہیں فوری طور پر قرنطین منتقل کردیا گیا ہے۔معلوم ہوا ہے کہ  ماگام پولیس سٹیشن سے وابستہ 12اہلکاروں کے نمونے حاصل کئے گئے تھے جن میں سے منگل کی شام 7اہلکاروں کے ٹیسٹ مثبت قرار پائے۔واضح رہے کہ اس سے قبل وادی میں 81پولیس اہلکار کورونا وائرس میں مبتلا پائے گئے تھے۔اب وائرس سے متاثرہ پولیس عملے کی تعداد 88ہوگئی ہے۔ 13مئی کو ضلع پولیس لائنز اننت ناگ کے 20نمونوں میں سے 8پولیس اہلکاروں کی رپورٹ مثبت آئی تھی۔ 17مئی کوپولیس لائنز اننت ناگ میں تعینات 14پولیس اہلکاروں کی رپورٹ مثبت آئی جبکہ 18مئی کو ضلع پولیس لائنز اننت ناگ میں تعینات مزید  55پولیس اہلکاروں کی رپورٹ مثبت آئی تھی ‘‘۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ اس سے قبل بارہمولہ ضلع میں 4پولیس اہلکار وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔اب ماگام پولیس کے 7اہلکار بھی مثبت پائے گئے ہیں۔ 

تازہ ترین