۔2روز میں 3اموات، منگل کو101کیس مثبت

مہلوکین کی تعداد 24،تین روز میں200کی تعداد بڑھ گئی، کل متاثرین 1769

تاریخ    27 مئی 2020 (00 : 03 AM)   


پرویز احمد
سرینگر //جموں و کشمیر میں پیر اور منگل کو کورونا وائرس سے متاثر مزید 3افراد لقمہ اجل بن گئے ہیں اس طرح وائرس سے مرنے والے کی تعداد 24ہوگئی ہے۔مہلوکین میں 3جموں اور 21کا تعلق کشمیر صوبے سے ہے۔منگل کو بی ایس ایف انسپکٹر، 2سی آر پی ایف اہلکار ، ایک صحافی اور 4حاملہ خواتین کے علاوہ دبئی سے لوٹنے والے 3افراد، اور 8اہل خانہ سمیت 101 متاثرین میں اضافہ ہوا ہے۔مرکزی زیر انتظام جموں و کشمیر میں متاثرین کی تعداد 1769تک پہنچ گئی ہے جن میں سے348جموں جبکہ 1421کشمیر سے ہیں۔101مریضوں میں سے8سرینگر،ایک کولگام، 4کپوارہ، 4بانڈی پورہ، 10 بارہمولہ،12بڈگام،4گاندربل،2شوپیان، 2پلوامہ،10جموں،29رام بن، 4کٹھوعہ،2ادھمپور، 2سانبہ،4پونچھ اور 3کا تعلق ریاسی سے ہے۔ 

۔2 دن میں تین اموات

 کھل کولگام سے تعلق رکھنے والے 90سالہ شخص کی موت کے ساتھ ہی پچھلے دو دنوں کے دوران وائرس سے فوت ہونے والے مریضوں کی تعداد 3ہوگئی ہے ۔سکمزصورہ کے میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا’’90سالہ بزرگ کو عیدالفطر کے روز جی ایم سی اننت ناگ سے سکمز صورہ منتقل کیا گیا کیونکہ اس کے دونوں پھیپھڑے نمونیا سے متاثر ہوئے تھے ‘‘۔ انہوں نے کہا کہ نمونیا کی وجہ سے وہ بخار اور سانس لینے میں تکلیف کا شکار تھا‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ اتوار کی شام 6بجکر 30منٹ پر نمونے لئے گئے ، 9بجکر 8منٹ پر اسکی رپورٹ مثبت آئی‘‘۔ ڈاکٹر جان نے بتایا’’ رپورٹ مثبت آنے کے بعد مریض کو آئیسولیشن وارڈ میں داخل کیا گیا جہاں وہ منگل کی صبح 6بجکر 45منٹ پر فوت ہوگیا‘‘۔یہ امر قابل ذکر ہے کہ پیر کو بوگام کولگام کی 65سالہ خاتون اور ترکوٹا نگر جموں سے تعلق رکھنے والے 63سالہ ایڈوکیٹ کی موت واقع ہوئی تھی۔

 جے وی سی بمنہ

سکمز میڈیکل کالج بمنہ پرنسپل ڈاکٹر ریاض ایتو نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ پچھلے 24گھنٹوں کے دوران 471نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں سے19مثبت جبکہ 452کی رپورٹ منفی آئیں‘‘ ۔ انکا کہنا تھا کہ 19مریضوں میں سے 12بڈگام ضلع سے ہیں جن میں سے7ماگام، 4سوئیہ بگ اور ایک کا تعلق ناربل سے ہے‘‘۔ڈاکٹر ریاض نے بتایا ’’ 6مریضوں کا تعلق سرینگر ضلع سے ہے جن میں سے 3علمگری بازار اور 3کا تعلق حول سے ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ اس کے علاوہ کٹھوعہ سے تعلق رکھنے والے ایک اور مریض کی رپورٹ بھی مثبت قرار دی گئی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ دبئی سے آنے والی پرواز کے 155مسافروں میں سے3کی رپورٹ مثبت آئی ہے۔ 

سی ڈی اسپتال

 میڈیکل کالج ترجمان ڈاکٹر محمد سلیم خان نے بتایا’’سی ڈی اسپتال میں590نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں25 مثبت قرار دئے گئے جبکہ565کی رپورٹیں منفی آئیں‘‘ ۔انہوں نے کہا کہ25میں 3حاملہ خواتین سمیت 14افراد کا تعلق بارہمولہ ضلع سے ہے‘‘۔ ان میں سے 8کا ہرد اچلو نامی گائوں کے ایک ہی کنبے سے تعلق ہے جو پہلے ہی مثبت قرار دئے گئے ہیں‘‘۔ ڈاکٹر سلیم نے بتایا کہ5کا تعلق بانڈی پورہ سے ہے ۔ ڈاکٹر سلیم خان نے بتایا کہ وسطی کشمیر کے گاندربل ضلع سے تعلق رکھنے والے 4افراد کی رپورٹ مثبت آئی ہے جن میں ایک حاملہ خاتون بھی شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ گاندربل کے 4مریضوں میں سے 2کا تعلق کنگن، ایک کا تعلق واکورہ اور ایک مریض کا تعلق سالورہ سے ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ دو مریضوں کا تعلق جنوبی کشمیر کے پلوامہ ضلع سے ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان میں سے ایک کا تعلق تلنگام پلوامہ اور ایک ارمولہ پلوامہ سے تعلق رکھتا ہے۔

کمانڈ اسپتال جموں

 کمانڈ اسپتال ادہمپور جموں میں زیر نگرانی افراد میں سے 32کی رپورٹ مثبت قرار دی گئی ہے جن میں بی ایس ایف انسپکٹر، 2سی آر پی ایف اہلکار اور ایک صحافی بھی شامل ہے۔ذرائع نے بتایا کہ جموں سے تعلق رکھنے والا 30 سالہ صحافی دلی میں پی ٹی آئی کیلئے کام کررہا ہے۔ادھرگورنمنٹ میڈیکل کالج جموں میں تشخیص کیلئے بھیجے گئے نمونوں میں سے14کی رپورٹیں مثبت آئیں ہیں۔ محکمہ صحت نے بتایا کہ ان میں سے بیشتر کا تعلق رام بن کے مختلف دیہات سے ہے۔

لال پتھ اور ماڈرن لیبارٹری 

جموںو کشمیر سرکار کے ساتھ آپسی مفاہمت کے بعد کورونا وائرس ٹیسٹوں کی سہولیات شروع کرنے والے دو نجی لیبارٹریوں میں سے منگل کو 10افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں۔  لال پتھ لیبارٹری میں 6اورمارڈرن لیبارٹری میں سے 4افراد کی رپورٹ مثبت آئی ہے۔ 
سکمزسکمزمیں 24گھنٹوں کے دوران1325نمونوں کی تشخیص کی گئی اور اُ ن میں سے10مثبت جبکہ1315منفی قرار دئے گئے۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے بتایا’’10 میں سے4بارہمولہ،3کپوارہ، 2شوپیاں اور ایک کھوس پورہ سرینگر سے ہے۔ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ سرینگر ایئر پورٹ سے حاصل کئے گئے نمونوں میں سے کھوس پورہ سرینگر کے رہنے والے 26سالہ نوجوان کی رپورٹ مثبت آئی ‘‘۔ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ضلع اسپتال شوپیاں سے بھیجے گئے نمونوں میں سے وہیل شوپیاں کے رہنے والے 2مریضوں کی رپورٹ مثبت آئی‘‘۔بارہمولہ کے 4مریضوں میں سے 3ہانجی وارہ بارہمولہ جبکہ ایک کا تعلق پنزی پورہ بارہمولہ سے ہے لیکن ان سبھی نے حالیہ دنوں میں دلی کا سفر کیا تھا۔سکمز صورہ میں منگل کو دیر شام گئے 1325نمونوںمیں سے مثبت قرار دئے گئے 10مریضوں کی رپورٹ اسپتال کی جانب سے جاری ہیلتھ بلٹن میں شامل کیا گیا ہے۔

حکومتی بیان

حکومت نے کہا ہے کہ پچھلے چوبیس گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے91نئے مثبت معاملات سامنے آئے ہیںجن میں سے37کا تعلق کشمیر صوبے سے اور 54 کا تعلق جموں صوبے سے ہیں اور اس طرح مثبت معاملات کی کل تعداد1759تک پہنچ گئی ہے۔حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے روزانہ میڈیا بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے1759 مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں سے 902سرگرم معاملات ہیں ۔ اب تک 833اَفراد شفایاب ہوئے ہیںاور24اَفراد کی موت واقع ہوئی ہے ۔اِس دوران منگل کومزید24مزید مریض صحتیاب ہوئے ہیںجس میںجموں صوبے کے15 اور کشمیر صوبے کے 09 اَفراد شامل ہیں ، جن کو جموں و کشمیر کے مختلف ہسپتالوں سے رخصت کیا گیا۔بلیٹن میں مزید کہا گیا ہے کہ اب تک 1,40,962ٹیسٹوں کے نتائج دستیاب ہوئے ہیں جن میں سے  26؍مئی 2020ء کی شام تک 1,39,203نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے ۔علاوہ ازیں اب تک1,42,901افراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا سفر ی پس منظر ہے اور جو مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں۔ ان میں 32,714 اَفراد کو ہوم قرنطین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے قرنطین مراکز بھی شامل ہیں ۔ اس کے علاوہ62 اَفراد کو ہسپتال قرنطین میں رکھا گیا ہے۔902کو ہسپتال آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ 33,573 اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اسی طرح بلیٹن کے مطابق75,626اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔بلیٹن کے مطابق ضلع بانڈی پورہ میں اب تک 143 مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں سے11 سرگرم معاملات ہیں ، 131مریض صحتیاب ہوئے ہیںجبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔اُدھر سری نگر میں اب تک کورونا وائرس کے 189 معاملات کی تصدیق ہوئی ہے جن میں سے 57 سرگرم معاملات ہیں ۔126 مریض صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ06 کی موت واقع ہوئی ہے۔اننت ناگ میں 278 مثبت معاملے سامنے آئے ہیںجن میں 161 سرگرم ہیں۔ 113 شفایاب ہوئے ہیں اور04 کی موت واقع ہوئی ہے۔ضلع بارہمولہ میں اب تک کورونامریضوں کی تعداد 143ہوئی ہیںجن میں سے 41سرگرم معاملات ہیں اور04مریضوں کی موت واقع ہوئی ہیںاور 98صحتیاب ہوئے ہیں۔ضلع شوپیان میں 129 مثبت معاملات سامنے آئے ہیںجن میں 22 سرگرم ہیں اور 107صحتیا ب ہوئے ہیں جبکہ کپواڑہ میں 166مثبت معاملات درج کئے گئے ہیں اور 96 سرگرم معاملات ہیں اور70صحتیاب ہوئے ہیں۔ضلع بڈگام میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی کُل تعداد اب تک76ہوئی ہیںجن میں سے 27سرگرم ہیں اور47اَفراد صحتیاب ہوئے ہیںجبکہ02 کی موت واقع ہوئی ہے ۔گاندربل میں کل 31مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں07 سرگرم معاملات ہیں اور 24 اَفراد شفایاب ہوئے ہیں۔اِدھرکولگام میں228  مثبت معاملات پائے گئے ہیںجن میں207سرگرم معاملات ہیںاور 17صحتیاب ہوئے ہیںاور04 کی موت واقع ہوئی ہے۔پلوامہ ضلع میں کووِڈ ۔19کے 28 معاملات کی تصدیق ہوئی ہے جن میں 18 سرگرم معاملات ہیں اور 10 صحتیاب ہوئے ہیں۔ اسی طرح  جموں میں وائر س کے 109مثبت معاملات پائے گئے ہیں جن میں73سرگرم معاملات ہیں اور34  صحت یاب ہوئے ہیںاور02 کی موت واقع ہوئی ہے۔ اودھمپور ضلع میں اب تک کورونا مریضوں کی کُل تعداد 39 ہوئی ہیں جن میں سے 17معاملات سرگرم ہیں۔ 21صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔دریں اثنأ ضلع سانبہ میں 29 مثبت معاملے کی تصدیق ہوئی ہے جن میں 19 سرگرم معاملات ہیں اور 10اَفراد شفایاب ہوئے ہیںاورراجوری ضلع میں کورونا کے اب تک13 مریض پائے گئے ہیںجن میں 09 معاملے سرگرم ہیں اور 04مریض شفایاب ہوئے ہیں جبکہ کٹھوعہ میں53مثبت معاملہ سامنے آئے ہیںجن میں 38 سرگرم معاملات ہیںاور 15اَفراد صحتیاب ہوئے ہیں۔ کشتواڑ میں08 مثبت معاملے سامنے آئے ہیں جن میں07 معاملے سرگرم ہیں اورایک پوری طرح سے صحتیاب ہوا ہے جبکہ رام بن میں74معاملات سامنے آئے ہیںجن میں 72سرگرم معاملات ہیں اور02 شفایاب ہوئے ہیںاورریاسی میں بھی04 معاملات سامنے آئے ہیں جن میں03 سرگرم ہیں اور ایک شفایاب ہوا ہے۔اس طرح پونچھ میں12 معاملے سامنے آئے ہیںجو سبھی معاملات سرگرم ہیں جبکہ ڈوڈہ میں ایک سرگرم معاملہ سامنے آیا ہے۔
 

عید کے روز 52کیس سامنے آئے

پرویز احمد
 
سرینگر //اتوارکو عیدالفطر کے پہلے دن جموں و کشمیر میں کورنا وائرس مریضوں کی تعداد میں اضافہ کا سلسلہ جاری رہا اور مزید 52افراد کی رپورٹیں مثبت قرار پائی تھیں۔اتوار کو جموں و کشمیر میں کورونا وائرس مریضوں کی تعداد1621تک پہنچ گئی تھی جن میں سے261جموں جبکہ 1360کا تعلق کشمیر سے ہے۔ 52افراد میں سے 26کولگام، 7سانبہ، 6جموں، 4کٹھوعہ،راجوری،2ادھمپور، ایک کپوارہ،ایک اننت ناگ، ایک شوپیاں اور ایک کا تعلق بارہمولہ ضلع سے ہے۔ سنیچر کی شام 5بجے سے لیکر عید کے روز اتوار دوپہر 2بجے تک 5500نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں سے 47مثبت قرار دئے گئے جبکہ 5ہزار453مشتبہ مریضوں کی رپورٹیں منفی قرار دی گئیں‘‘۔میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’47میں سے 25کولگام سے تھے، جن میں سے8کاروکولگام،12چھتہ بل کولگام،3ڈونی پورہ کولگام جبکہ 2کا تعلق آول کولگام سے ہے‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’جموں سے تشخیصی کیلئے بھیجے گئے نمونوں میں سے 20مثبت قرار دئے گئے ہیں اور یہ مریض بھی حالیہ دنوں بھارت کی مختلف ریاستوں سے واپس لوٹے ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا کہ جی ایم سی بارہمولہ سے بھیجے گئے نمونوں میں سے 2کی رپورٹ مثبت قرار دی گئی ہے جن میں ایک24سالہ نوجوان رفیع آبادسے تعلق رکھتا ہے اور دلی سے واپس لوٹ کر آیا ہے جبکہ ایک اور 26سالہ نوجوان  وہیل شوپیان سے تعلق رکھتا ہے لیکن اسکا کوئی سفری پس منظر نہیں ہے۔ اتوار کو عیدالفطرکے پیش نظر سی ڈی اسپتال میں قائم لیبارٹری بند تھی۔ محکمہ صحت ذرائع نے بتایا کہ5افراد کی رپورٹ جی ایم سی جموں سے مثبت قرار دی گئی تھی۔
 

پیر کو 47 نئے معاملات کا اضافہ ہوا

پرویز احمد
 
 سرینگر //عیدالفطر کے دوسرے دن سوموار کو بھی کورونا وائرس سے ہونے والے اموات کا سلسلہ اور کیسوں میں اضافہ بھی جاری رہا۔ سوموار کو جموں میں ایک اور کشمیر میں ایک کورونا وائرس مریض کی موت واقع ہوئی  ۔ اسطرح وائرس سے فوت ہونے والے افراد کی تعداد 23تک پہنچ گئی جن میں سے 3جموں اور20کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ ادھر پیر کوگورنر کے ایک مشیر کی اہلیہ اور اسکے بیٹے سمیت مزید 47مشتبہ مریضوں کی رپورٹ مثبت آئی۔ اس طرح جموں و کشمیر میں متاثرین کی تعداد 1668تک پہنچ گئی جن میں سے294جموں جبکہ1374کشمیر صوبے سے تعلق رکھتے ہیں۔ 47مریضوں5اننت ناگ،3کولگام،3سرینگر،ایک شوپیان، ایک کپوارہ،ایک پلوامہ،21جموں،4کٹھوعہ،2ادھمپور،2پونچھ، 2ریاسی، ایک رام بن اور ایک کا تعلق ڈوڈہ سے ہے۔میڈیکل کالج سرینگر ترجمان ڈاکٹر سلیم خان نے بتایا ’’ بوگام کولگام کی 65سالہ خاتون 22مئی کو دونوں پھپھڑوں میں نمونیا ہونے کی وجہ سے داخل کیا گیااور 23مئی کو اسکی رپورٹ مثبت آئی لیکن وہ 25کی صبح ہی فوت ہوگئی‘‘۔سوموار کو سی ڈی اسپتال ڈلگیٹ میں کل 770نمونوں کی تشخیص کی گئی، جن میں سے 10مثبت قرار دئے گئے جبکہ 760کی رپورٹ منفی قرار دی گئی۔ ترجمان ڈاکٹر سلیم نے بتایا ’’ 10مثبت قرار دئے گئے افراد میں سے3کا تعلق بمنہ سرینگر،5اننت ناگ، ایک شوپیان اور ایک کا تعلق پلوامہ ضلع سے ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ160نمونے ابھی زیر تشخیص ہیں جبکہ 200مزید نمونے موصول ہوئے ہیں۔ محکمہ صحت کے ذرائع نے بتایا کہ ترکوٹہ نگر جموں سے تعلق رکھنے والے ایک 63سالہ وکیل، جو محکمہ انکم ٹیکس میں کام کررہے تھے، وائرس کا شکار ہوئے۔ سدرا جموں میں ایسکامس اسپتال کے میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر رویندر رتہ پال نے بتایا کہ مذکورہ وکیل کو چند دن قبل داخل کیا گیا تھا لیکن سوموار کو فوت ہونے کے بعد اسکی رپورٹ مثبت قرار دی گئی‘‘۔
 

 

کٹھوعہ کی 2خواتین میں کورونا کیسے آیا؟

رابطے میں آئے سبھی افراد کی رپورٹیں منفی

سید امجد شاہ 
جموں //کٹھوعہ میں 2خواتین کے کورونا میں مبتلا پائے جانے کے بعد اس بات پر سراسیمگی پھیل گئی ہے کہ کسی سے رابطے میں آئے بغیر ان خواتین تک کورونا کیسے پہنچا۔ان خواتین میں سے ایک کا حال ہی میں ہسپتال میں آپریشن ہواہے۔ ڈپٹی کمشنر کٹھوعہ اوپی بھگت نے بتایا’’ہم نے رابطے میں آئے تمام افراد کی شناخت کرلی ہے لیکن ہم اس نتیجہ پر نہیں پہنچ سکے کہ ان خواتین میں کورونا کیسے پھیلا ‘‘۔تاہم انہوں نے کورونا کے کمیونٹی سطح پر پھیلنے کی افواہوں کو مسترد کردیا۔ ضلع میں ان خواتین کے رابطے میں آنے والے 45افراد کا ٹیسٹ کیاگیاہے تاہم ان سبھی کی رپورٹیں منفی آئی ہیں جس کے بعد یہ سوال پیدا ہوناشروع ہوگیاہے آخر کار ان خواتین کو کہاں سے کورونا وائرس لگ گیا۔ ڈپٹی کمشنر نے بتایاکہ ایک خاتون ہسپتال میں زیر علاج تھی جس نے بچے کو جنم دیا اورٹیسٹ کئے جانے پرا س میں کورونا کی تصدیق ہوئی ہے جس کے بعداس کے رابطے میں آئے افراد کی جانچ ہوئی تاہم سبھی کی رپورٹیں منفی آئی ہیں۔انہوں نے بتایاکہ اسی طرح سے ایک دوسری خاتون جو پٹھانکوٹ میں آرمی میں ملازمت کررہے اپنے خاوند سے سے واپس آئی ،تواس میں کورونا کی تصدیق ہوئی تاہم اس کے تمام پرائمری رابطہ میں آئے افراد کے نمونے بھی منفی آئے ہیں ۔
 

تازہ ترین