کورونا کا قہر،ایک اور خاتون کی جان گئی

مہلوکین کی تعداد 21تک پہنچ گئی، ڈپٹی چیف میڈیکل آفیسر اور حاملہ خاتون سمیت 80کا اضافہ

24 مئی 2020 (00 : 03 AM)   
(      )

پر ویز احمد
 سرینگر //وادی میں کورونا وائرس نے ایک اور خاتون کی جان لی ہے۔سنیچر کو فوت ہونے والی 55سالہ خاتون کا تعلق اننت ناگ سے تھا۔ ابتک 21افراد وائرس کا شکار ہوکرموت کی آغوش میں چلے گئے ہیں جن میں سے 2جموں جبکہ 19کشمیر سے ہیں۔ سنیچر کوڈپٹی سی ایم او بانڈی پورہ اور حاملہ خاتون سمیت مزید 80افراد کی رپورٹ مثبت آئی۔ جموں و کشمیر میں مریضوں کی تعداد 1569ہوگئی ہے جن میں سے 239جموں جبکہ 1330کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ مثبت قرار دئے گئے 80افراد میں سے 36 کپوارہ، 14 رام بن، 6اننت ناگ، 5 کولگام، 4 بارہمولہ، 4 پلوامہ، 4 جموں، 3 سرینگر، بانڈی پورہ، کٹھوعہ، کشتواڑ اور کولگام میں ایک ایک کی رپورٹ مثبت آئی ہے۔  

خاتون فوت

سنیچر کو سکمز صورہ میں اننت ناگ کے ورن ہال بو ٹینگوگائوں سے تعلق رکھنے والی 55سالہ خاتون فوت ہوگئی۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے بتایا ’’ فوت ہونے والی خاتون کو6مئی کو اسپتال میں چھاتی میں الرجی کی وجہ سے داخل کیا گیا تھا‘‘۔ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ الرجی کی وجہ سے وہ انفکیشن کا شکار ہوئی تھی اور ہائی بلڈ پریشر کی بیماری سے بھی جوج رہی تھی‘‘۔ انہوں نے کہا کہ مذکورہ خاتون مختلف بیماریوں میں مبتلا تھی اور بعد میںاسکی رپورٹ بھی مثبت آئی تھی‘‘۔ انہوں نے کہا کہ حالت نازک ہونے کی وجہ سے خاتون کووینٹی لیٹرپر رکھا گیا لیکن حرکت قلب بند ہونے کی وجہ سے وہ فوت ہوگئی۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ خاتون کی قوائد و ضوابط کے تحت تدفین کیلئے متعلقہ پولیس اسیٹیشن کو مطلع کیا گیا  اور لاش لواحقین کے  سپرد کردی گئی‘‘۔ 

سکمز

سکمزمیں 24گھنٹوں کے دوران3500نمونوں کی تشخیص کی گئی اور اُ ن میں سے39مثبت جبکہ3461منفی قرار دئے گئے۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے بتایا’’39 میں سے36کپوارہ، 2سرینگر، ایک پانپور اور ایک کا تعلق بارہمولہ سے ہے‘‘۔ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’کپوارہ کے 35میں سے 32افراد کا تعلق کپوارہ سے ہے جن میں9  ہماچل پردیش، 17  اترا کھنڈ،3 پنجاب اور 3  راجستھان کا سفر کرکے واپس لوٹے ہیں‘‘۔ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’  ایک مریض ڈار پورہ کپوارہ اورایک گلگام کپوارہ سے ہے۔ ڈاکٹر فاروق جان نے بتایا ’’ باقی 3مریضوں میں سے ایک کا تعلق رفیع آباد بارہمولہ اور دو کا تعلق سرینگر سے ہے۔ ڈاکٹر جان نے بتایا کہ متھرااترپردیس سے واپس لوٹنے والا قمرواری کا ایک نوجوان وائرس سے متاثر ہوا ہے جبکہ رام باغ سرینگرکے ایک 24سالہ نوجوان کی رپورٹ بھی مثبت قرار دی گئی۔ انسٹی ٹیوٹ کے شعبہ عوامی رابطہ کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر کی جانب سے جاری کئے گئے اعدادوشمار میںبتایا گیا ہے کہ ابتک کل470مشتبہ مریضوں کا داخلہ کیا گیا جن میں سے409مریضوں کو قرنطینہ کی مدت مکمل کرنے کے بعد گھر روانہ کردیا گیا جبکہ49مثبت قرار دئے گئے مریضوں کو گھر بھیجا گیا ہے۔ ابتک45392نمونوں کی تشخیص کی گئی ہے جن میں سے39287کو منفی قرار دیا گیا ہے جبکہ683مریضوں کی رپورٹیں مثبت آئیں ہیں۔  انہوں نے کہا کہ ابتک5422نمونوں کی تشخیص ہونا ابھی باقی ہے۔ 

سی ڈی اسپتال

سی ڈی اسپتال میں قائم لیبارٹری میں620نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں14 مثبت قرار دئے گئے جبکہ606کی رپورٹیں منفی آئیں ۔ میڈیکل کالج ترجمان ڈاکٹر محمد سلیم خان نے بتایا’’14میں سے3کا تعلق ریشی پورہ پلوامہ،6کا اننت ناگ،4کولگام اور ایک کا تعلق حبک سرینگر سے ہے ۔ ڈاکٹر سلیم خان نے بتایا ’’اننت ناگ میں 6سے 5کا تعلق امولہ اننت ناگ جبکہ ایک کا تعلق زلنگام ککر ناگ سے ہے‘‘۔ ڈاکٹر سلیم خان نے بتایا ’’کریوا کولگام سے تعلق رکھنے والی ایک 20حاملہ خاتون کی رپورٹ بھی مثبت آئی ہے جبکہ 2کا تعلق کھلورہ کولگام سے ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ بانڈی پورہ ضلع میں تعینات 50سالہ خاتون ڈاکٹر کی رپورٹ بھی مثبت آئی ہے‘‘۔ 

حکومتی بیان

حکومت نے کہا ہے کہ پچھلے چوبیس گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے80نئے مثبت معاملات سامنے آئے ہیںجن میں سے59کا تعلق کشمیر صوبے سے اور21 کا تعلق جموں صوبے سے ہیں اور اس طرح مثبت معاملات کی کل تعداد1569تک پہنچ گئی ہے۔صحت بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے1569 مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں سے774سرگرم معاملات ہیں ۔ اب تک774اَفراد شفایاب ہوئے ہیںاور21اَفراد کی موت واقع ہوئی ہے ۔اِس دوران جمعرات کو مزید54مزید مریض صحتیاب ہوئے۔ اب تک124074ٹیسٹوں کے نتائج دستیاب ہوئے ہیں جن میں سے23؍مئی 2020ء کی شام تک 122505نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے ۔علاوہ ازیں اب تک130197افراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے۔ ان میں32056 اَفراد کو ہوم قرنطین میں رکھا گیا ہے ۔ اس کے علاوہ74 اَفراد کو ہسپتال قرنطین میں رکھا گیا ہے۔774کو ہسپتال آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ26686اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اسی طرح70586اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔ ضلع بانڈی پورہ میں اب تک139 مثبت معاملات سامنے آئے ہیںجن میں سے9سرگرم معاملات ہیں ، 129مریض صحتیاب ہوئے ہیںجبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔ سری نگر میں اب تک کورونا وائرس کے179 معاملات کی تصدیق ہوئی ہے جن میں سے54 سرگرم معاملات ہیں ۔119 مریض صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ06 کی موت واقع ہوئی ہے۔اننت ناگ میں272 مثبت معاملے سامنے آئے ہیںاور159 سرگرم ہیں۔109 شفایاب ہوئے ہیں اور4 کی موت واقع ہوئی ہے۔ضلع بارہمولہ میں اب تک کورونامریضوں کی تعداد136ہوئی ہیں جن میں سے34سرگرم معاملات ہیں اور4مریضوں کی موت واقع ہوئی ہیںاور98صحتیاب ہوئے ہیں۔ضلع شوپیان میں 127 مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں21 سرگرم ہیں اور106صحتیا ب ہوئے ہیںجبکہ کپواڑہ میں164مثبت معاملات درج کئے گئے ہیں اور94 سرگرم معاملات ہیں اور70صحتیاب ہوئے ہیں۔ضلع بڈگام میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی کُل تعداد اب تک63ہوئی ہیںجن میں سے 26سرگرم ہیں اور35اَفراد صحتیاب ہوئے ہیںجبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے ۔گاندربل میں کل 27مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں12 سرگرم معاملات ہیں اور 15 اَفراد شفایاب ہوئے ہیں۔اِدھرکولگام میں198مثبت معاملات پائے گئے ہیںجن میں184سرگرم معاملات ہیںاور12صحتیاب ہوئے ہیںاور 2کی موت واقع ہوئی ہے۔پلوامہ ضلع میں25 معاملات کی تصدیق ہوئی ہے جن میں16 سرگرم معاملات ہیں اور9 صحتیاب ہوئے ہیں۔ اسی طرح  جموں میں وائر س کے72مثبت معاملات پائے گئے ہیں جن میں40سرگرم معاملات ہیں اور31  صحت یاب ہوئے ہیںاور ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔ اودھمپور ضلع میں اب تک کورونا مریضوں کی کُل تعداد33 ہوئی ہیں جن میں سے11معاملات سرگرم ہیں۔21صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔ٔ ضلع سانبہ میں20مثبت معاملے کی تصدیق ہوئی ہے جن میں13سرگرم معاملات ہیں اور 7اَفراد شفایاب ہوئے ہیںاورراجوری ضلع میں کورونا کے اب تک10مریض پائے گئے ہیںجن میں 6 معاملے سرگرم ہیں اور 4مریض شفایاب ہوئے ہیں جبکہ کٹھوعہ میں41مثبت معاملہ سامنے آئے ہیںجن میں35 سرگرم معاملات ہیںاور ایک صحتیاب ہوا ہے۔ کشتواڑ میں 8 مثبت معاملے سامنے آئے ہیں جن میں7 معاملہ سرگرام ہے اورایک پوری طرح سے صحتیاب ہوا ہے جبکہ رام بن میں44 معاملات سامنے آئے ہیںجن میں43 سرگرم معاملات ہیں اورایک شفایاب ہواہے اورریاسی میں بھی4 معاملات سامنے آئے ہیں جن میں3 سرگرم ہیں اور ایک شفایاب ہوا ہے۔
 

لداخ میں کورونا کے5 نئے مثبت کیس

یو این آئی
 
لیہہ// کرگل سے تعلق رکھنے والے پانچ افراد کا گذشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس ٹیسٹ مثبت آنے سے لداخ یونین ٹریٹری میں کووڈ 19 کے سرگرم کیسز کی تعداد پانچ ہوگئی ہے۔لداخ یونین ٹریٹری انتظامیہ کے ترجمان ریگزن سیمفل کے مطابق کرگل میں جن پانچ افراد کے کورونا وائرس ٹیسٹ مثبت آئے ہیں ان میں ایران سے واپس لوٹنے والے چار زائرین اور ایک طالب علم شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ لداخ میں رواں ماہ کی 19 تاریخ کو کورونا کا کوئی ایکٹو کیس نہیں تھا کیونکہ اس تاریخ تک جن 43 مریضوں کے ٹیست مثبت آئے تھے ان سب کو صحت یاب ہونے کے بعد ہسپتالوں سے رخصت کیا گیا تھا۔ رگزن سمفل نے بتایا کہ ہفتہ کے روز دلی سے واپس لوٹنے والے ایک طالب علم کا ٹیسٹ مثبت آیا اور اس کو علاحدہ وارڈ میں رکھا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ متاثرہ طالب علم نے وطن واپسی کے دوران جموں میں بھی قیام کیا تھا۔ کرگل کے ہی رہنے والے چار افراد جو ایران سے واپس لوٹے تھے، کا بھی کورونا ٹیسٹ مثبت آیا ہے۔ انہوں نے کہا یہ چاروں پہلے ہی انتظامی قرنطینہ میں تھے اور انہیں بھی علاحدہ وارڈ میں منتقل کیا گیا ہے۔ 
 
جموں کشمیر میں اب تک 
 9خواتین لقمہ اجل
پرویز احمد
 
 سرینگر // کورونا وائرس سے فوت ہونے والے 21افراد میں 48فیصد خواتین ہیں۔ 21افراد میں 10خواتین شامل ہیں جن میں 9کشمیر جبکہ جموں میں ایک خاتون فوت ہوئی ہے۔کشمیر میںپہلی خاتون کی موت25اپریل کو ضلع اننت ناگ کے مدر اینڈ چیلڈ کیئر اسپتال میں ہوئی۔ دوسری خاتون کا تعلق ضلع سرینگر سے ہے۔ مذکورہ80سالہ خاتون کو 27 اپریل کو سی ڈی اسپتال میں داخل کیا گیا تھا۔ کورونا وائرس سے مرنے والی تیسری خاتون کا تعلق بھی سرینگر شہر سے تھا۔ 29سالہ خاتون کو 2مئی کوصدر اسپتال سرینگر میں داخل کیا گیا تھا۔ وائرس سے فوت ہونے والی چوتھی خاتون کا تعلق کولگام ضلع سے تھا۔ خاتون کو یکم مئی کو سی ڈی اسپتال میں داخل کیا گیا ۔جنوبی کشمیر کے اننت ناگ ضلع سے تعلق رکھنے والی75سالہ خاتون سی ڈی اسپتال میں کورونا وائرس کی پانچویں شکار بنی۔ کورونا وائرس سے مرنے والی چھٹی خاتون کا تعلق بھی ضلع اننت ناگ سے ہے۔ 40سالہ خاتون کو 12مئی کو سکمز صورہ میں داخل کیا گیا  ۔وائرس سے مرنے والی 7ویں خاتون کا تعلق وسطی کشمیر کے بڈگام ضلع سے ہے۔70سالہ خاتون کو 18مئی کو داخل کیا گیا تھا۔ وائرس سے متاثرہ 8ویں خاتون کی موت صدر اسپتال میں ہوئی۔ 80سالہ خاتون کا تعلق ضلع سرینگر سے ہے ۔۔ سنیچر کو کشمیر میں 9ویں متاثرہ خاتون کی موت سکمز صورہ میں ہوئی۔ مذکورہ خاتون کو 6مئی کو سکمز صورہ میں داخل کیا گیا تھا ۔اس کے علاوہ جموںصوبے کے ادھمپورضلع میں ایک 72سالہ خاتون کی فوت ہوئی ہیں۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ وائرس سے فوت ہونے والے 9خواتین میں سے 5نے نہ تو کسی بیرون ملک یا ریاست کا سفر کیا تھا اور نہ ہی یہ خواتین کسی کے رابطے میں آئی ہیں جبکہ دیگر 5خواتین کورونا وائرس مریضوں کے رابطے میں آئیں تھیں۔
 
جموں کشمیر کے 20اضلاع میں سے صرف
کشمیر کے 7اضلاع میں متاثرین 100سے متجاوز
سرینگر //پرویز احمد// جموں و کشمیر کے 20اضلاع میں سے صرف کشمیر کے 7اضلاع میں کورونا وائرس متاثرین کی تعداد 100سے تجاوز کر گئی ہے ۔جبکہ جموں صوبے کے دس اضلاع میں کسی ایک ضلع میں بھی مریضوں کی تعداد 100تک نہیں پہنچی ہے۔وادی کے 3اضلاع میں وائرس میں مبتلا مریضوں کی تعداد کم ہے۔ ان 7اضلاع میں متاثرین کی تعداد 1160تک پہنچ گئی ہے ۔غور طلب ہے کہ جموں کشمیر میں متاثرین کی کل تعداد1569 ہے۔ ان 7 اضلاع میںہی 16افراد بھی فوت ہوئے ہیں۔ جنوبی کشمیر کا اننت ناگ ضلع متاثرہ اضلاع میں سر فہرست ہے۔ یہاں متاثرین کی تعداد 272 ہے ۔یہاں 109صحتیاب ہوئے ہیں اور 4کی موت ہوگئی ہے۔ دوسرے نمبر پرکولگام ضلع آتا ہے جہاں مریضوں کی تعداد198ہے جن میں 180زیر علاج ہیں اور 12صحتیاب ہوئے ہیں۔ یہاں ایک مریض کی موت واقع ہوئی ہے۔ ضلع سرینگر تیسرے نمبر پر ہے، جہاں179افراد کورونا سے متاثر ہوئے ہیں جن میں سے 71زیر علاج ہیں جبکہ 99افرادصحتیاب ہوئے ہیں۔یہاں16مارچ سے لیکر ابتک 6افراد کی موت ہوئی ہے۔ بانڈی پورہ میں 139افراد وائرس سے متاثر ہوئے ہیں جن میں سے 129افراد صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔ شمالی کشمیر کے بارہمولہ ضلع میں 136افراد وائرس سے متاثر ہوئے ہیں اور یہاں 91افراد صحتیاب اور 4کی موت واقع ہوئی ہے۔شوپیاں ضلع میں مریضوں کی کل تعداد 127ہے۔ ان میں سے 102صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ 25افراد ابھی بھی زیر علاج ہیں۔ سرحدی ضلع کپوارہ میں164مریضوں کی رپورٹ مثبت آئی ہے اور ان میں سے 79زیر علاج ہیں اور49صحتیاب ہوئے ہیں۔  
 
سینئر خاتون معالج کورونا مثبت
ابتک 8ڈاکٹر وائرس میں مبتلا
 سرینگر //پرویز احمد//بانڈی پورہ ضلع کی ڈپٹی چیف میڈیکل آفیسر کی رپورٹ مثبت آنے کے ساتھ ہی خاتون ڈاکٹر کے عملہ کے 6افراد کے نمونے حاصل کرکے انہیں قرنطین بھیج دیا گیا ہے۔ چیف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر تجمل حسین نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ وہ علیل تھی اور اسلئے 13مئی سے ڈیوٹی پر بھی نہیں آئی ‘‘۔ڈاکٹر تجمل نے بتایا ’’ ڈیٹی سی ایم او کے 2بچوں سمیت اہلخانہ4افراد کو قرنطینہ میں رکھا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈپٹی سی ایم او کے دفتر میں کام کرنے والے 6ملازمین کو قرنطینہ میں رہنے کی ہدایت دی گئی ہے جن کے نمونے حاصل کئے جارہے ہیں۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ ابھی تک وادی میں 8ڈاکٹر وائرس میں مبتلا ہوچکے ہیں۔ ان میں سے 3صدر اسپتال،2سپر سپیشلٹی اسپتال ، ایک ڈینٹل کالج اور ایک سائیکٹرک اسپتال میں کورونا مثبت پایا گیا ہے۔
 
 
قرنطین میں داخل دو حاملہ خواتین
نے صحت مند بچوں کو جنم دیا
منڈی+ڈودہ// منڈی پونچھ اور گندوہ ڈوڈہ میں قرنطین مراکز میں دو حاملہ خواتین نے دو بچوں کو جنم دیا۔ چھمبر دتیگلہ منڈی قرنطینہ مرکز میں 14 روزہ انتظامی قرنطینہ گزار رہی ایک حاملہ خاتون نے سنیچر کو ایک بچی کو جنم دیا۔ خاتون کا تعلق منڈی تحصیل کے کھیت ساوجیاں علاقہ سے ہے جو گزشتہ 6 روز سے مڈل سکول دتیگلہ چھمبر میں قرنطینہ گزار رہی تھی ۔وہ اور اس کے گھر والے کچھ ہی روز قبل ممبئی سے اپنے گھر لوٹے تھے اور ان کو قرنطینہ میں رکھا گیا تھا۔ حاملہ خاتون کے کرونا نمونے پہلے سے ہی جانچ کیلئے حاصل کئے گئے ہیں جس کی رپورٹ آنا ابھی باقی ہے۔ادھرڈوڈہ کے گندوہ  علاقے میں قرنطینہ سینٹر میں رکھی گئی ایک خاتون نے بچی کو جنم دیا جو کہ صحت مند و تندرست ہے۔ شازیہ بیگم حاملہ تھی اور کٹھوعہ سے آکر اسے قرنطینہ مرکز چنگا ڈاک بنگلہ میں رکھا گیا تھا ،تین روز قبل درد زہ میں مبتلا ہوئی جسے انتظامیہ نے ایمبولینس کے ذریعہ گورنمنٹ میڈیکل کالج ڈوڈہ روانہ کیا ۔ جی ایم سی پہنچنے سے پہلے ہی اس نے بچی کو جنم دیا۔اس کے بعداسکا ٹیسٹ بھی منفی آیا۔

تازہ ترین