ایس آر او 202کو واپس لیا جائے : رانا

23 مئی 2020 (00 : 03 AM)   
(      )

جموں//نیشنل کانفرنس کے صوبائی صد رجموں دیویندر سنگھ رانانے جموں و کشمیر کے ملازمین میں برابری لانے کیلئے ایس آر او 202کو فوری طور سے واپس لینے کا مطالبہ کیا۔ ایک بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ ایس آر او 202انصاف اور یکساں کام کیلئے یکساں تنخواہ کے صول کے خلاف ہے اور نئی بھرتی سے قبل اسے واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ2015میں اس قانون کو لاگو کیا گیا تھا ،جس سے اس رول کے تحت تعینات ملازموں میں مایوسی پھیلی ہے۔انہوںنے کہا کہ 2سال کے بجائے5سال کی عمر کا پروبیشن اور انکریمنٹ سے انکار سے ان ملازمین اور بیروز گار نوجوانوں میں بے چینی ہوئی ہے۔رانا نے لاء کمیشن کی جانب سے واضع سفارش کے باوجود انتظامیہ کی جانب سے ایس آر او202کے متاثرین میںانصاف کرنے میں ہچکچاہٹ پر حیرانگی کا اظہار کیا ہے۔بیان میں انہوں نے امید ظاہر کی کہ انتظامیہ ایس آر او 202 کے تحت ملازمین کے جائز مطالبے اور سماج کے وسیع تر مفاد میں پر غور کرے گی ۔ انہوں نے کہا کہ ایس آر او 202 کو واپس لینے سے ملازموں کے مفاد کا تحفظ ہوگا اور عوامی انتظامیہ میں ایک صحت مند ماحول پیدا ہوگا۔صوبائی صدر نے ا یس آر او 202 کے ملازمین کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا ہے۔ 
 

تازہ ترین