۔100 فرضی و جعلی اجازت نامے ضبط | آج سے کڑی کارروائی ہوگی: پولیس

تاریخ    3 مئی 2020 (41 : 01 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر //سرینگر میں پولیس نے انتظامیہ کی طرف سے لازمی خدمات کیلئے اجرا کئے گئے خصوصی پروانوں(پاس) کی جانچ کرنے کا سلسلہ شروع کردیا گیا ہے۔ضلع ترقیاتی کمشنر نے چند روز قبل سرینگر میں ایک ناکے کے دوران انتظامیہ کی جانب سے اجرا کئے گئے خصوصی پاس چیک کئے ، جس کے دوران خصوصی اجازت ناموں میں قلم زنی، سکین کر کے پاس اور اجازت ناموں کی فوٹو سٹیٹ کاپیاں کر کے پرائیویٹ گاڑی مالکان کو پکڑا گیا۔ ڈپٹی کمشنر نے ٹویٹر پر  پیغام دیا تھا کہ 90فیصد لوگ غیر ضروری طور نجی گاڑیوں کا استعمال کر کے گھروں سے باہر نکلتے ہیں جسے ٹالا جاسکتا ہے۔چنانچہ سنیچر سے پولیس نے شہر میں خصوصی اجازت ناموں کاغلط استعمال کرنے، ان میں قلم زنی کرنے نیز فوٹو سٹیٹ ساتھ رکھنے کیخلاف کارروائی کا آغاز کیا۔پولیس نے ایسے 100فراڈ اجازت ناموں کو ضبط کیا اور گاڑی مالکان کو وارننگ دی کہ دوبارہ پکڑا گیا تو گاڑیاں ضبط ہونگی۔پولیس بیان کے مطابق نجی گاڑیوں کی چیکنگ کے دوران لازمی سروس کیلئے اجراء کئے گئے اجازت ناموں میں قلم زنی کی گئی تھی،یا ان کے فوٹو اسٹیٹ اور اسکین کاپیوں کا استعمال کیا جا رہا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ان فراڈ اجازت ناموں کا بے جا استعمال کیا جا رہاتھا جس کے بعد انہیں ضبط کیا گیا۔پولیس حکام نے ایک بار پھر متنبہ کیا ہے کہ آئندہ اس طرح کے جعلی اور فرضی اجازت ناموں پر گاڑیوں کو ضبط کیا جائے گا اور قانون کے تحت سخت جرمانہ بھی عائد کیا جائے گا۔ 
 

تازہ ترین