ملک اور بیرونی ممالک میں درماندہ کشمیریوں کو واپس لایا جائے:تاریگامی

10 اپریل 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

سرینگر//حکومتملک اور بیرون ممالک میں کورونا وائرس کی  وباء کی بناء پر جاری لاک ڈائون کے نتیجے میں درماندہ تمام کشمیریوںکو اپنے  گھرپہنچانے کے لئے اقدام کریںکیونکہ ان لوگوں کوملک اور ملک سے باہر مشکلات کا سامنا ہے۔ ان باتوں کا اظہار سی پی آئی یم کے یوسف تاریگامی نے ایک بیان میں کیا  ۔انہوں نے کہا کہ کشمیری وادی سے تعلق رکھنے والے مختلف طبقہ ہائے فکر کی ایک بڑی تعداد جن میں ہینڈی کرافٹس سے وابستہ لوگ،مزدور پیشہ افرادکے علاوہ طلبہ اور کچھ چھوٹے ملازمین کی ایک اچھی خاصی تعدادشامل ہے،ملک کے مختلف حصوں جن میں دہلی،ہماچل پردیش،پنجاب،ہریانہ وغیرہ شامل ہیں، میںلاکڈائون ہونے کے نتیجے میں شدید مشکلات سے دوچار ہیں۔تاریگامی نے کہا اب مذکورہ لوگوں کا کاروبار بھی متاثر ہوا ہے اورجو پیسہ ان کے پاس تھا، وہ بھی ختم ہوا ،جس کے نتیجے میں بیشتر افراد کے پاس کھانے ، پینے کے لئے بھی کوئی پیسہ نہیں ہے جس کے نتیجے میں وہ سخت مشکلات کا سامنا کر رہے ہیں۔انہوں نے بتایا ان کی تمام چیزیں ختم ہونے کے بعد کشمیر سے تعلق رکھنے والے مزدوروںکا ایک گروپ  ہماچل پردیش میںایک جگہ پرٹینٹ لگا کرمصیبت کے دن گزار رہاہیں تاہم اطلاعات کے مطابق اس دوران پولیس نے انہیں وہاں سے ٹینٹ ہٹانے کے لئے کہا ہے ۔تاریگامی نے بتایا کہ اس وقت جب مزدوروں کے پاس کچھ بھی بچا نہیں ہے، وہ کرایہ کا کمرہ کس طرح سے حاصل کر سکتے ہیں۔ تاریگامی نے کہا مجھے بتایا گیا ہے کہ کار وباری افراداورطلباء کے علاوہ مزدوروں کی ایک اچھی تعداد اب سخت مشکلات کے باوجود کشمیر آرہے تھے جس دوران انہیں لکھن پور کے مقام پر روک دیا گیا ہے جس کے نتیجے میں وہ یہاں بھی مشکلات کا سامنا کر رہے ہیں۔سی پی آئی ایم لیڈر نے بتایا کہ  اس ساری صورت حال کے نتیجے میں کشمیر سے باہر لوگوں کے والدین ،رشتہ دار سخت ذہنی پریشانیوں میں مبتلا ہوئے ہیں ۔تاریگامی نے حکومت سے اپیل کی کہ درماندہ تمام کشمیریوں کو فوری طور گھر پہنچانے کے لئے اقدامات کئے جائیں تاکہ ملک اوربیرون ملک درماندہ لوگ راحت کی سانس لے سکیں۔

تازہ ترین