مرکزکا عوام کے نام پیغام

کوروناکیلئے کوئی فرقہ یاعلاقہ ذمہ دارنہیں

9 اپریل 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
سرینگر//مرکزنے ایڈوائزری جاری کرکے  ملک بھر کے لوگوں سے کہا ہے کہ وہ کوروناوائرس کے پھیلائوکیلئے کسی فرقے یاعلاقے کو ذمہ دار قرار نہ دیں اور نہ ہی اس سے متاثرہ یاقرنطین میں رکھے گئے افرادکی شناخت اور نہ ہی ان کے رہائشی علاقے کانام سماجی رابطے کی سائٹوں پرظاہر کریں۔ایڈوائزری میں کہا گیا ہے کہ سماج میں پھیلی متعدی بیماریوں کے دوران خوف اور پریشانی پھیل جاتی ہے لیکن اس دوران لوگوں یا فرقوں کوذمہ دارقراردینے سے سماج میں تعصب،تنائو ،دشمنی اورغیرضروری سماجی انتشار پیداہوتا ہے۔ایڈوائزری میں بتایاگیا ہے کہ خوف اور غلط اطلاعات کی وجہ سے کوروناوائرس کاشکار افراد،اوراس وبائی بیماری کاتدارک کرنے میں صف اول پرکام کررہے طبی عملے کے ساتھ بھی امتیازی سلوک کیاجاتا ہے ،حتی کہ کورونا کی بیماری سے روبہ صحت ہوئے افراد کے ساتھ بھی ایسا ہی سلوک کیاجاتا ہے ۔اس کے علاوہ سماجی رابطے کی سائٹوں پرغلط اطلاعات کی وجہ سے مخصوص فرقوں اور علاقوں کو اس بیماری کے پھیل جانے کاقصوروار گردانا جاتا ہے۔ایڈوائزری میں بتایاگیا ہے کہ اس تعصب کا مقابلہ کرناضروری ہے اور سماج کو صحت خواندگی سے بااختیار بناکراس مصیبت سے لڑنا ہے۔ایڈوائزری میں مزیدبتایاگیا ہے کہ ذمہ دار شہری ہونے کے ناطے ہمیں یہ سمجھنا ہوگا کہ کووِڈ-19-ایک متعدی بیماری ہے جوتیزی سے پھیلتی ہے اور ہم میں سے کسی کوبھی لگ سکتی ہے ۔ہم اپنے آپ کو سماجی دوریوں،بار بار ہاتھ دھونے اور کھانسنے اور چھینکنے کے طریقوں پر عمل کرنے کے ذریعے بچاسکتے ہیں ۔احتیاط کے باوجود اگر کسی کوبھی یہ بیماری لگ جاتی ہے تو اس میں اس کا کوئی قصور نہیں ہے ۔پریشانی کے عالم میں مریض اور اس کے کنبے والوں کو دلاسہ اور تعاون کی ضرورت ہے۔یہ جان لینا چاہیے کہ اس بیماری سے ٹھیک ہوتے ہیں اوراکثر لوگ اس سے روبہ صحت ہوئے ہیں۔ڈاکٹر،نرسیں اور اُن سے منسلک دیگر افراد ان حالات میں ان تھک کام کررہے ہیں ،ہمیں ان کا حوصلہ بڑھاناچاہیے ۔صفائی ستھرائی پر مامور اہلکاراور پولیس بھی اِن حالات میں نازک کام انجام دے رہے ہیں ۔انہیں ہمارے شاباشی،تعاون اور سراہنا کی ضرورت ہے۔ کوروناوائرس کی بیماری کامقابلہ کرنے کیلئے براہ راست  کام کرنے والے حفاظتی کٹس سے لیس ہوتے ہیں ۔ضروری خدمات بہم پہنچانے والوں کو نشانہ بنانا سے کوروناوائرس کیخلاف ہماری جنگ کمزور ہوگی اور اس کاخمیازہ ملک کوبھگتناپڑسکتا ہے۔
 
 
 

تازہ ترین